Results 1 to 5 of 5

Thread: قلوب کی دنیا

  1. #1
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    candel قلوب کی دنیا


    ظاہری حسن پر جانا، ایک عام انسانی رویہ ہے۔ ایک کثیر تعداد مظاہر سے ہی وابستہ ہوتی ہے، متاثر ہونے کے معاملہ میں بھی، اور متاثر کرنے کے معاملہ میں بھی۔ تھوڑے ہیں جو ظاہر سے آگے گزر جانا لازم رکھیں۔ ابھی یہ دنیوی معاملات میں ہے۔ عجیب یہ ہے کہ دین میں بھی ایک بڑی تعداد کی توجہ مظاہر پر رہتی ہے!

    دین میں مظاہر یقینا مطلوب ہیں اور دین کا باقاعدہ حصہ ہیں، اور ان کی اہمیت کا انکار کرنے والا ایک گمراہ اور زندیق ہی ہوسکتا ہے.... پھر بھی دین میں اصل چیز مظاہر نہیں۔ جس طرح درخت سطحِ زمین پر چپکائے نہیں جاتے؛ ان کے لئے زمین کے اندر، بہت نیچے تک، بڑی ہی مضبوط تناور جڑیں رکھنا ضروری ہوتا ہے.... عین اسی طرح اعمال بھی قلوب کی سرزمین میں جڑیں گاڑے ہوتے ہیں اور اپنے وجود، اپنی غذا، اپنی بقاءاور اپنی نمو کیلئے وہیں پر سہارا کرتے ہیں۔ مگر بہت کم ہیں جن کا زور ظاہری اعمال سے بڑھ کر قلوب کی تعمیر پر ہو۔

    جس قدر کوئی کام انسان کے حق میں زیادہ فائدہ مند اور خدا کو زیادہ پسند ہوگا، اسی قدر شیطان اس میں رکاوٹ بن کر آئے گا۔ آدمی کا مطلوب جس قدر عظیم ہو، اتنی ہی دشواریاں اس کی راہ میں لائی جائیں گی۔ یہی وجہ ہے کہ سب سے مشکل اور سب سے نادر، یہاں جنت کی مانگ ہے؛ جس کی راہ مشکلات سے سجا دی گئی ہے، کہ ہزار میں سے کوئی ایک ہو جو اِنہیں پار کر کے اپنی اُس منزلِ مراد پہ جا پہنچے

    اللہ نے بھی تخلیقِ کائنات اور پھر اس کے اندر موت وحیات کا یہ سلسلہ قائم کر رکھا ہے تو وہ کچھ اسی مقصد سے کہ انسان سے یہ جوہر برآمد ہو:

    الَّذِي خَلَقَ الْمَوْتَ وَالْحَيَۃ لِيَبْلُوَكُمْ أَيُّكُمْ أَحْسَنُ عَمَلًا وَهُوَ الْعَزِيزُ الْغَفُورُ(الملک: 2)

    اسی نے موت اور زندگی کو پیدا کیا تاکہ تمہاری آزمائش کرے کہ تم میں کون حسنِ عمل میں سب سے بہتر رہتا ہے اور وہ زبردست (اور) بخشنے والا ہے

    اللہ کی نگاہ پڑنے کی اصل جگہ قلوب ہی ہیں:

    ابو ہریرہؓ روایت کرتے ہیں، کہا: فرمایا رسول اللہ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے:

    اللہ تعالیٰ نہ تمہاری صورتوں کو دیکھتا ہے اور نہ تمہارے مالوں کو؛ وہ دیکھتا ہے تو تمہارے دلوں کو اور تمہارے عملوں کوصحیح مسلم

    انسان کے پاس جو سب سے برگزیدہ چیز ہے وہ اس کا دل ہے۔ یہ انسان کے اندر وہ مقام ہے جو اللہ کی نگاہ پڑنے کا خاص محل ہے۔ ایمان کو پڑاؤ کرنے کی اِس کے یہاں کوئی جگہ ملتی ہے تو وہ عین یہی ہے۔ یہیں پر ایمان اپنا عمل کرتا ہے اور یہیں سے اپنے نتائج برآمد کراتا ہے۔ ایمان ہوتا ہے تو یہاں ہوتا ہے، نہیں ہوتا تو یہاں نہیں ہوتا!!! کہ اس کا گھر یہی ہے!!! کسی کو یہ احساس نصیب ہو کہ اللہ اس کو دیکھے تو وہ اللہ کی نگاہ میں خوب جچے.. کسی کو اللہ کو پسند آنے کی فکر دامن گیر ہو، تو اس کو اپنا آپ سب سے زیادہ یہیں سنوارنا ہوگا۔ جس طرح کسی آئے گئے کا سامنا کرنے سے پہلے انسان اپنا آپ درست کرتا ہے، ویسے ہی اللہ کی نظر پانے کیلئے آدمی کو یہیں پر سب سے زیادہ صفائی ستھرائی کر کے رکھنا ہوتی ہے۔ حسن، جمال، زینت، خوشبو.... سب کا بندوبست یہیں پر سب سے بڑھ کر ضروری ہے!اِس کو توبہ سے دھوئے۔ استغفار سے مانجھے۔ انابت کی ردا پہنائے۔ توحید سے آراستہ کرے۔ جہاد و عزم الامور کی عبا، خشیت کا سنگار اور محبت کا عطر .... غرض وہ ڈھونڈنے بیٹھے، اور اس جانب اس کی توجہ ہوجائے، تو زینت اور جمال کے ایسے ایسے اسباب اس کے ہاتھ آئیں گے کہ یہ رشکِ خلائق ہو جائے اور عرش پر المل اَ ال اَعلی کے مابین اس کا ذکر ہو۔ یہ کام کچھ بھی مشکل نہیں اگر اللہ کی توفیق حاصل ہو

    قلوب کے طبیب نادر ہی کہیں ملتے ہیں


    سب سے پوشیدہ مرض وہ ہیں جو قلوب کو لاحق ہوسکتے ہوں۔ دوسرے تو دوسرے، خود مریض کو بیشتر اوقات ان کا ادراک نہیں ہوتا۔ اللہ سے غفلت، نا امیدی، بے خوفی، خود پسندی، تکبر، شہرت پسندی، جاہ پرستی، غضب، بغض، کدورت، حسد، غرور، بے حیائی، گناہوں کا رسیا پن، حبِ بدعت، صورت پرستی، غیر اللہ کے آگے ذلت اور عاجزی .. غرض ایسے ایسے مرض ہیں جو اندر ہی اندر پلتے ہوں اور کسی کو ان کی خبر نہ ہو، حتیٰ کہ مریض کو بھی نہیں



    انبیاءدراصل تو قلوب ہی کے طبیب تھے


    اللہ نے مومنوں پر درحقیقت یہ احسان کیا کہ اُن میں انہیں میں سے ایک رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم بھیجا جو اُن کو اللہ کی آیتیں پڑھ پڑھ کر سناتا ہے، ان کا تزکیہ کرتا ہے اور ان کو کتاب اور دانائی سکھاتا ہے، جبکہ اس سے پہلے یہ لوگ صریح حالتِ گمراہی میں تھے



    قرآن ہی وہ نسخہ ہے جس میں قلوب کی تمام بیماریوں کا علاج پوشیدہ ہے



    جس پر عمل کرنے سے عروج کی بلندیاں نصیب ہوتی ہیں۔ جب تک مسلمان قرآن پاک پر عمل پیرا رہے ان کو دنیا پر حکم رانی عطا ہوئی اور جب انہوں نے اس کتاب ہدایت سے استفادہ کرنا چھوڑ دیا تو ذلیل و خوار ہو گئے۔



    اس بات کو اچھی طرح سمجھ لیجئے کہ اگر اللہ تعالیٰ نے ہم پر اتنا بڑا احسان کیاہے، کہ قرآن جیسی دولت ہمیں عطا فرمائی ہے تو ہمارا بھی یہ فرض بنتاہے کہ ہم اس احسان پر اللہ تعالیٰ کا بھر پور انداز میں شکر اداکریں یعنی ہمارا فرض ہے کہ ہم


    ۱۔قرآن مجید پر ایمان لائیں۔


    ۲۔اس کی تلاوت کریں


    ۳۔ اس کو سمجھیں اور اس پر غوروفکر کریں۔


    ۴۔ اس پر عمل کریں۔


    ۵۔ اور اسے دوسروں تک پہنچائیں۔



    اگر ہم قرآن مجید کے ان حقوق کو ادا کریں گے تو دنیا وآخرت میں ہمارے لئے کامیابی ہیں لیکن اگر ہم قرآن سے منہ موڑیں گے اور اس پر تدبر نہیں کریں گے تو یہی قرآن اللہ رب العزت کی عدالت میں ہمارے خلاف بطور دلیل پیش ہوگا لہذا قرآن کریم کے حقوق وفرائض کو پورا کیجئے





  2. #2
    Join Date
    Apr 2008
    Location
    City Of Lights ....
    Posts
    36,361
    Mentioned
    7 Post(s)
    Tagged
    2098 Thread(s)
    Thanked
    3
    Rep Power
    21474882

    Default Re: قلوب کی دنیا

    JazakAllah ... buhat hi khoobsorat batain ki hain .. Allah hum sab ko Samajhnay ki aur Amal karnay ki Toufeeq ata farmaye

  3. #3
    Join Date
    Jul 2010
    Location
    karachi
    Posts
    2,366
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    9 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474846

    Default Re: قلوب کی دنیا

    JazakALLAH Khair...

  4. #4
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Canada
    Posts
    25,300
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    442 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    11381699

    Default Re: قلوب کی دنیا



    bht he best sharing

  5. #5
    Join Date
    Oct 2009
    Location
    Failed State
    Posts
    50,102
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    34 Thread(s)
    Thanked
    25
    Rep Power
    21474895

    Default Re: قلوب کی دنیا



    Allah sabko amal ki tafeeq ata farmae..aamen

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •