Results 1 to 3 of 3

Thread: یہ دل کا چور کہ اس کی ضرورتیں تھیں بہت

  1. #1
    Join Date
    May 2011
    Location
    saudi arab
    Posts
    11
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default یہ دل کا چور کہ اس کی ضرورتیں تھیں بہت

    یہ دل کا چور کہ اس کی ضرورتیں تھیں بہت
    وگرنہ ترک تعلق کی صورتیں تھیں بہت

    ملے تو ٹوٹ کے روئے ، نہ کھل کے باتیں کیں
    کہ جیسے اب کے دلوں میں کدورتیں تھیں بہت

    بھلا دیے ہیں ترے غم نے دکھ زمانے کے
    خدا نہیں تھا تو پتھر کی مورتیں تھیں بہت

    دریدہ پیرہنوں کا خیال کیا آتا
    امیر شہر کی اپنی ضرورتیں تھیں بہت

    فراز دل کو نگاہوں سے اختلاف رہا
    وگرنہ شہر میں ہم شکل صورتیں تھیں بہت

  2. #2
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default Re: یہ دل کا چور کہ اس کی ضرورتیں تھیں بہت

    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

  3. #3
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Lahore
    Posts
    56
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    8 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default Re: یہ دل کا چور کہ اس کی ضرورتیں تھیں بہت

    very nice

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •