Results 1 to 1 of 1

Thread: khushi Or Gham

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default khushi Or Gham

    خوشی اور غم


    جس دن سے یہ کائنات وجود میں آئی ہے اس دن سے اب تک خوشی اور غم انسان کے ساتھ ساتھ چلے آرہے ہے یہ دونوں ایک ایسا عمل ہے جسے ہم صرف اور صرف محسوس کر سکتے ہیں۔ خوشی اور غم کی تعریف میں کچھ اس طرح کر سکتا ہوں جیسے تم میری زندگی میں آئیں! خوشی۔ مجھ سے بچھڑ گئیں! غم۔

    میر ے اور تمھارے درمیان تعلق کو خوشی اور ترک تعلق کو غم کہتے ہیں۔ ہم اپنے ذہنوں میں زرا سوچیں تو ہم کسی کی خوشی اور غم کوکچھ اسطرح محسوس کر سکتے ہیں۔ خوشی ایسی ہے جیسے مدت سے بہار کی امید میں سوکھا ہوا درخت اچانک ہرا بھرا ہو جائے۔ جیسے تپتے صحرا میں پانی مل جائے۔ جیسے روتے بسورتے معصوم بچے کو ماں کی گود مل جائے۔ جیسے جون کی جھلسا دینے والی دھوپ میں اک گھنا درخت مل جائے۔ جیسے دسمبر کی یخ بستہ ہوائوں میں ٹھٹرتے نگ دھڑنگ یتیم بچے کو کمبل مل جائے۔ جیسے دکھی اور کرب میں مبتل لوگوں کو قرار آجائے۔ جیسے راہ سے بھٹکے ہوئے مسافر کو منزل مل جائے۔ جیسے ہیر کو رانجھا، شیریں کو فرہاد، لیلی کو مجنوں، سسی کو پنو، جولیٹ کو رومیو، اور مجھ کو تم مل جائو۔ اور ان سب سے بچھڑنے کا نام ہی تو غم ہے جو خوشی سے زیادہ محسوس کیا جاتا ہے خوشی کو ہم بہت جلد بھول جاتے ہیں لیکن غم کو نہیں۔ غم آہستہ آہستہ انسان کی زندگی کو کھا جاتا ہے۔ اسطرح خوشی اور غم کا کھیل انسان کے ساتھ ہی دفن ہو جاتا ہے
    Last edited by Arslan; 09-08-2012 at 01:42 AM.





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •