Results 1 to 1 of 1

Thread: Janab Meer Ka Mashwara

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default Janab Meer Ka Mashwara


    جناب میر کا مشورہ

    کہا جاتا ہے کہ خدائے سخن میر تقی میر کے عہد میں ایک صاحب نہایت بکواس قسم کی شاعری کرتے تھے لیکن بڑی دیدہ دلیری کے ساتھ میر کی محفل میں شریک ہوکر کہتے میرصاحب سنئے یہ میرا تازہ کلام ، میر صاحب کو ان کی جرات رندانہ پر بڑا طیش آجاتا لیکن اخلاق و مروت کی بنا پر چپ ہوجاتے۔ یہ صاحب ایک لمبے عرصے تک غائب رہے ار ایک دن پھر میر صاحب کی محفل میں آدھمکے اور کہا کہ میر صاحب ! شائد آپ کو پتہ نہیں میں حج بیت اللہ کے لئے حجاز گیا تھا اور جاتے ہوئے اپنی بیاض بھی ساتھ لے گیا تھا ۔ بعد طواف میں نے اس کو حجر اسود سے رگڑا تاکہ میرے کلام میں تاثیر ہو ۔ یہ سنتے ہی میر صاحب کو طیش آگیا اور پھر ان کو مخاطب کر کے کہا " دیکھئیے آپ نے خواہ مخواہ زحمت کی کہ اپنے بیاض کو تین مرتبہ حجر اسود سے رگڑا ۔ اگر ایک ہی دفعہ آب زم زم سے دھو لیتے تو آپ کا اور آپ کے کلام کا قصہ پاک ہو جاتا ۔"
    Last edited by Arslan; 05-08-2012 at 12:20 AM.





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •