Results 1 to 3 of 3

Thread: لبھ لیٹر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاھین کاظمی

  1. #1
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    cute لبھ لیٹر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاھین کاظمی

    لبھ لیٹر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاھین کاظمی
    ۔۔۔شاھین کے ھاتھ تیزی سے چل رھے تھے ، "یا اللہ آج تو لگتا ھے خیر نہیں دوپہر کے کھانے میں بہت دیر ھو گئ ھے سارا وقت توغزل سے باتوں میں مصروف رھی،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اچانک دروازے پر بہت زور دار دستک ھوئ' "غزل پلیز آپ دیکھ لو نا ذرا میں سالن کا کچھ کر لوں" شاھین نے کچن ھی سے ھانک لگائ،۔۔۔۔۔۔۔۔" یا اللہ " غزل کی عجیب سی بوکھ...لائ ھوئ آواز آئ ' "کیا ھوا کوئ بھوت تو نہین دیکھ لیا" شاھین نے وھیں سے پوچھا،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ "خود اگر دیکھ کیوں نہیں لیتیں "غزل پکاری، "آچھا آتي ھوں شاھیں نے جلدی سے ھاتھ صاف کۓ اور کچن سے باھر آگئ سامنے نصیبن بواء کھڑی تھی،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نصیبن بواء محلے کا چلتا پھرتا دفتر رشتہ ناطہ تھی عمر یہی کوئ پچاس پچپن سال ھو گي مگر آج تو اس کی ڈھب ھی نرالی تھی ، چنی چنی آنکھوں میں کیا ڈوئیاں بھر بھر کر سرمہ انڈیلا گيا تھا آنکھیں یہ ظلم برداشت نہین کرسکیں تھیں انھوں نے احتجاجا" سرمے کو قبول کرنے سے انکار کر دیا تھا، گہرے سانولے چہرے پرتھوک کے بھاؤ لگا ھوا سفید پاؤڈر، لپ اسٹک تو کچھ زيادہ ھی آوارہ گرد ثابت ھوئ تھی ھونٹوں کو چھوڑکر ھر جگہ چہل قدمی کی تھی ، اسی لپ اسٹک سے اندرد ھنسے ھوۓ گالوں پر اتنی خوبصورتی سے گولے بناۓ گۓ تھے کہ "روج" تو بچارہ اپنا سا منہ لے کر رہ گيا تھا اس پر گوٹا لگا سرخ دوپٹہ جیسے اماں بار بار انگلی پر لپیٹ اور کھول رھی تھی ،۔۔۔۔۔۔"اماں خیریت ھے آج کسی شادی میں جانے کا پروگرام ھے کيا" شاھین نے ایک نظر غزل کو دیکھا جو بمشکل ھنسی روکے ھوۓ تھی ؛۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔" آۓ ھاۓ اماں کس کو کہا "نصیبن بواء چمک کر بولی تمہارے جتنی ھی ھوں گي بس آج سے مجھے نصیبن بلا یا کرنا " اماں اس کی طرف دیکھ کر بولی "آچھا یہ بتاؤ معراج گھر پر ھے" اماں نے اچانک موضوع بدل دیا۔" ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نہیں اماں بھائ تو کام پر گۓ ھیں آتے ھی ھوں گے کوئ کام تھا کیا" غزل نے جلدی سے جواب دیا؛" کیا ھوا؟ اس نے شاھین سے پوچھا جو ابھی تک بواء کی بات پر ساکت کھڑی تھی" کیا کام تھا بھائ سے شاھیں بمشکل صدمے سے باھر نکلی،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ "وہ نا۔۔۔ اماں کچھ شرما سی گئیں "صبح مجھے معراج گلی میں ملا تھا کہ رھا تھا میں اسے بہت اچھی لگتی ھوں"اماں کی آنکھوں میں ھزار واٹ کے بلب کی چمک تھی شاھین اور غزل کی نگاھیں ملیں اور غزل اپنا قہقہہ نہ روک سکی؛۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ "آماں یہ بھائ نے کہا تھا " مارے ھنسی کے غزل کی آنکھوں میں پانی آگیا "اے لو اب کیا میں جھوٹ بولوں گي" آماں برا مان گئ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔"مجھے لگتا ھے معراج مجھے پسند کرتا ھے"اماں کی انکھون میں پھر بلب روشن ھوگياتھا"پر وہ ھے کہاں " اماں سخت بے چین تھی،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اما ں کیا آپ بھی بھائ کو پسند کرتی ھیں " غزل کو شرارت سوجھ رھی تھی ھاۓ اب میں اپنے منہ سے کیسے کہوں"اماں بری طرح لجا گئ؛۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔" ویسے ایک بات ھے اماں " شاھین اماں کے پاس آکر بیٹھ گئ 'آپ بھائ کو بتا دیں ناں کہ آپ اپ بھی انھیں پسند کرتی ھیں" پر کیسے بتاؤں " اماں جلدی سے بولی ؛۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اماں آپ ایسے کریں بھائ کو خط لکھ دیں" یہ غزل تھی ھاۓ تمہارا مطلب ھے وہ لبھ لیٹر" اماں شرما سی گئ" جی جی وھی" شاھیں اماں کہتے کہتے رک گئ؛۔پر مجھے لکھ کر کون دے گآ "اماں نے پوچھا "یہ غزل کس مرض کی دوا ھے"شاھین نے غزل کی طرف اشارہ کیا " بس مجھے پھنسا دیا کرو"غزل نے برا ماننے کی ایکٹنگ کی "میں نہیں لکھنے والی" ؛

    ""توبہ کتنی ظالم ھو نصیبن کے جذبات کا ذرا احساس نہیں ھے تمہیں " شاھیں نے اسے ٹھوکا دیا "نصیبن آپ فکر نہ کریں غزل ضرور لکھے گئ"۔ اچھا میں جا کر کاغذ لے کر آتی ھوں؛۔۔۔۔۔۔۔ "اماں اٹھ کھڑی ھوئ اماں کاغذ تو میرے پاس ھے" شاھین نے کہا۔اچھا چلو شروع ھو جاؤ "لبھ لیٹر" لکھنا، شاھیں اس کے ھاتھ میں قلم اور کاغذ پکڑآتے ھوۓبولی؛۔ " کیا لکھنا ھے"غزل نے اماں سے پوچھا" لکھو؛۔میرے خوابوں کے راجکمار!آھم آھم" شاھین کھنکھاری'۔جی اماں آگے کیا لکھوں "غزل نے پھر پوچھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    میرے خوابوں کے راجکمار!


    جب صبح تم نے مجھے دیکھا توڈگ کیوں گۓ تھےمیرے کلیجے میں ٹھاہ جاکےلگا تھا تمہارا ڈگنا موٹر سائیکل سنبھال کے چلایاکرو میں بھری جوانی میں تمہیں کھونا نہیں چاھتی تمہیں یاد کر کرکے میں ادھ موئ ھو گئ ھوں ، اؤ کمبخت پینو جب تمیں پیار بھری نظروں سے تکتی ھے تو میرا دل کرتا ھے ان کی ٹچ بٹن ورگياں آکھیاں کھڈ کے زپ لا دیاں ، تم بھی مجھے بہت اچھے لگتے ھو پر یہ ظالم دنیا ھمیں اک نہین ھونے دے گي چلو کہیں نس جاتے ھیں میرے اس خط کا جواب نہ دیآ تو میں کچلا کھا کر مر جاؤں گی اور تمہارے متھے لگوں گي۔

    نیلی نیلی روشنی کمرے میں بند ھے

    میں کیا کروں مجھے معراج پسند ھے


    نصیبن+معراج=نصیبن معراج

    تمہاری دیواںی
    Last edited by T@nHA.D!L; 25-02-2012 at 08:48 AM.

  2. #2
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    836 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default Re: لبھ لیٹر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاھین کاظمی

    yeh tu mazak he hogaya
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  3. #3
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    Default Re: لبھ لیٹر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاھین کاظمی

    Apka Tah-E-Dil se shukriya

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •