Results 1 to 1 of 1

Thread: تیری زلفوں کے بکھرنے کا سبب ہے کوئی : ناصر کاظمی

  1. #1
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    تیری زلفوں کے بکھرنے کا سبب ہے کوئی : ناصر کاظمی

    تیری زلفوں کے بکھرنے کا سبب ہے کوئی : ناصر کاظمی


    تیری زلفوں کے بکھرنے کا سبب ہے کوئی
    آنکھ کہتی ہے ترے دل میں طلب ہے کوئی
    ...
    آنچ آتی ہے ترے جسم کی عریانی سے
    پیرہن ہے کہ سلگتی ہوئی شب ہے کوئی

    ہوش اُڑانے لگیں پھر چاند کی ٹھنڈی کرنیں
    تیری بستی میں ہوں یا خوابِ طرب ہے کوئی

    گیت بُنتی ہے ترے شہر کی بھرپور ہوا
    اجنبی میں ہی نہیں تو بھی عجب ہے کوئی

    لیے جاتی ہیں کسی دھیان کی لہریں ناصر
    دور تک سلسلۂ تاکِ طرب ہے کوئی
    Last edited by T@nHA.D!L; 25-02-2012 at 08:59 AM.

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •