Page 1 of 3 123 LastLast
Results 1 to 10 of 22

Thread: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

  1. #1
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    candel دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    دجال قوم یہود کا ایک مرد ہے جو اس وقت بحکم الٰہی دریائے طبرستان کے جزائر میں قید ہے۔ یہ آزاد ہو کر ایک پہاڑ پر آئے گا وہاں بیٹھ کر آواز لگائے گا۔ دوسری آواز پر وہ لوگ جنہیں بدبخت ہونا ہے اس کے پاس جمع ہو جائیں گے اور یہ ایک عظیم لشکر کے ساتھ ملک خدا میں فتور پیدا کرنے کو شام و عراق کے درمیان سے نکلے گا۔ اس کی ایک آنکھ اور ایک ابرو بالکل نہ ہوگی۔ اسی وجہ سے اسے مسیح کہتے ہیں۔ اس کے ساتھ یہود کی فوجیں ہوں گی۔ وہ ایک بڑے گدھے پر سوار ہوگا اور اس کی پیشانی پر لکھاہوگا ک ف ر (یعنی کافر) جس کو ہر مسلمان پڑھے گا اور کافر کو نظر نہ آئے گا، اس کا فتنہ بہت شدید ہوگا، چالیس دن رہے گا، پہلا دن ایک سال کا ہوگا، دوسرا ایک مہینہ کا ، تیسرا ایک ہفتہ کا اور باقی دن جیسے ہوتے ہیں۔ وہ بہت تیزی کے ساتھ ایک شہر سے دوسرے شہر میں پہنچے گا۔ جیسے بادل جسے ہوا اڑاتی ہو، وہ خدائی کا دعویٰ کرے گا۔ اس کے ساتھ ایک باغ اور ایک آگ ہوگی جن کا نام جنت و دوزخ رکھے گا۔ مگر وہ جودیکھنے میں جنت معلوم ہوگی، وہ حقیقتاً آگ ہوگی اور جو جہنم دکھائی دے گا وہ مقام راحت ہوگا جس اسے مانیںگے ان کے لیے بادل کو حکم دے گا، برسنے لگے گا ، زمین کو حکم دے گا کھیتی جم اٹھے گی جو نہ مانیں گے ان کے پاس سے چلا جائے گا، ان پر قحط ہو جائے گا۔ تہی دست رہ جائیں گے۔ ویرانے میںجائے گا تو وہاں کے دفینے شہد کی مکھیوں کی طرح اس کے پیچھے ہو لیںگے۔ اسی قسم کے بہت سے شعبدے دکھائے گا اور حقیقت میں یہ سب جادو کے کرشمے ہوں گے جن کو واقفیت سے کچھ تعلق نہیں اس لیے اس کے وہاں سے جاتے ہی لوگوں کے پاس کچھ نہ رہے گا۔ اس وقت میں مسلمانوں کی روٹی پانی کا کام ان کی تسبیح و تہلیل دے گی یعنی وہ ذکرِ خدا کریں گے اور بھوک پیاس ان سے رفع ہوگی۔ چالیس دن میں حرمین طیبین (مکہ معظمہ و مدینہ منورہ) کے سوا تمام روئے زمین کا گشت کرے گا۔ حرمین شریفین میں جب جانا چاہیے گا۔ فرشتے اس کا منہ پھیر دیں گے۔ جب وہ ساری دنیا میں پھر پھر اکر ملکِ شام کو جائے گا اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام نزول فرمائیں گے۔

    جب دجال کا فتنہ انتہا کو پہنچ چکے گا اور وہ ملعون تمام دنیا میں پھر کر ملک شام میں جائے گا جہاں تمام اہل عرب سمٹ کر پہلے ہی جمع ہو چکے ہوں گے، یہ خبیث ان سب کا محاصر ہ کر لے گا۔ ان میں بائیس ہزار مرد جنگی اور ایک لاکھ عورتیں ہوں گی، ناگاہ اسی حالت میں قلعہ بند مسلمانوں کو غیب سے آواز آئے گی کہ گھبراؤ نہیں فریاد درس آپہنچا۔ اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام آسمان سے دو فرشتوں کے پروں پر ہاتھ رکھے زرد رنگ کا جوڑا زیب تن کئے ہوئے نہایت نورانی شکل میں دمشق کی جامع مسجد کے شرقی منارہ پر دین محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حاکم اور امام عادل و مجد دملت ہو کر نزول فرمائیں گے۔ صبح کا وقت ہو گا نماز فجر کے لیے اقامت ہو چکی ہو گی۔ حضرت امام مہدی جو اس جماعت میں موجود ہونگے۔ آپ سے امامت کی درخواست کریں گے۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام حضرت امام مہدی کی پشت پر ہاتھ رکھ کر کہیں گے آگے بڑھو، نماز پڑھاؤ کہ تکبیر تمہارے ہی لیے ہوئی تھی۔ رسو ل اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں ’’تمھارا حال کیسا ہو گا جب تم میں ابنِ مریم نزول کریں گے ۔ اور تمہارا امام تمھیں میں سے ہوگا‘‘۔ یعنی اس وقت کی تمہاری خوشی اور تمہارا فخر بیان سے باہر ہے کہ روح اللہ باوصف نبوت و رسالت تم پر اتریں، تم میں رہیں ، تمہارے معین و یاروبنیں اور تمہارے امام کے پیچھے نماز پڑھیں۔

    غرض عیسیٰ علیہ السلام سلام پھیر کر دروازہ کھلوائیں گے، اسی طرف دجال ہوگا جس کے ساتھ ستر ہزار یہودی ہتھیار بند ہوں گے۔ لشکر اسلام اس لشکرِ دجال پر حملہ کرے گا۔ گھمسان کا معرکہ ہوگا۔ جب دجال کی نظر حضرت عیسیٰ علیہ السلام پر پڑے گی، پانی میں نمک کی طرح پگھلنا شروع ہوگا اور بھاگے گا۔ یہ تعاقب فرمائیں گے اور دجال لعین کو تلاش کرکے بیت المقدس کے قریب موضع ’’ ُلد‘‘ کے دروازے پر جالیں گے اور اس کی پشت میں نیزہ ماریں گے، وہ جہنم واصل ہوگا۔ آپ مسلمانوں کو اس کا خون اپنے نیزے پر دکھائیں گے دجال کا فتنہ فرد ہونے کے بعد حضرت عیسیٰ علیہ السلام اصلاحات میں مشغول ہوں گے، اسلام پر کافروں سے جہاد فرمائیں گے اور جزیہ کو موقوف کر دیں گے۔ یعنی کافر سے سوا اسلام کے کچھ قبول نہ فرمائیں گے۔ صلیب توڑیں گے اور خنزیر کو نیست و نابود کر دیں گے۔ تمام اہل کتاب جو قتل سے بچیں گے سب ان پرایمان لے آئیں گے۔ ان کے زمانہ میں اللہ عزوجل اسلام کے سوا سب دینوں اور مذہبوں کو فنا کر دے گا۔ تمام جہاں میں ایک دین اسلام ہوگا اور مذہب ، ایک مذہب اہلسنت، آپ کے زمانہ میں مال کی کثرت ہوگی اور برکت میں افراط ، اور ساری زمین عادل سے بھر جائے گی، یہاں تک کہ بھڑےئے کے پہلو میں بکری بیٹھے گی اور وہ آنکھ اٹھا کر نہ دیکھے گا اور بچے سانپ سے کھیلیں گے
    Last edited by T@nHA.D!L; 27-02-2012 at 04:29 PM.

  2. #2
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    Muhabbat ki shaon mein
    Posts
    721
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    Allah maaf karey

  3. #3
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    Ameen.......

  4. #4
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    ALLAH hum ko tamam fitnon se mehfoz rakhay ameen

    achi info hai ji

  5. #5
    Hidden words's Avatar
    Hidden words is offline "-•(-• sтαү мιηε •-)•-"
    Join Date
    Nov 2011
    Location
    Kisi ki Ankhon Aur Dil Mein .......:P
    Posts
    56,915
    Mentioned
    322 Post(s)
    Tagged
    10949 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474899

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    ALLAH hum sab ko apni amaan main rakhay aur dajal k shar se mehfooz rakhay..Ameen

  6. #6
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    .Ameen

  7. #7
    Join Date
    Jul 2008
    Location
    ..........
    Age
    35
    Posts
    6,754
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    923 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474852

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    thx for sharing

  8. #8
    Join Date
    Apr 2008
    Location
    City Of Lights ....
    Posts
    36,361
    Mentioned
    7 Post(s)
    Tagged
    2098 Thread(s)
    Thanked
    3
    Rep Power
    21474882

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    Allah Pak hamain Tamam Fiton say baja k apni Amaan main rakhay

  9. #9
    Join Date
    Dec 2010
    Location
    Pindi
    Age
    31
    Posts
    24,015
    Mentioned
    246 Post(s)
    Tagged
    6079 Thread(s)
    Thanked
    15
    Rep Power
    21474868

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    Allah hamari madad keray aur hum sab ko hidayat k rastay per hi rakhay.

  10. #10
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Jadoo Nagri
    Posts
    19,713
    Mentioned
    198 Post(s)
    Tagged
    8340 Thread(s)
    Thanked
    10
    Rep Power
    21474862

    Default Re: دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    Quote Originally Posted by T@nHA.D!L View Post
    دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

    دجال قوم یہود کا ایک مرد ہے جو اس وقت بحکم الٰہی دریائے طبرستان کے جزائر میں قید ہے۔ یہ آزاد ہو کر ایک پہاڑ پر آئے گا وہاں بیٹھ کر آواز لگائے گا۔ دوسری آواز پر وہ لوگ جنہیں بدبخت ہونا ہے اس کے پاس جمع ہو جائیں گے اور یہ ایک عظیم لشکر کے ساتھ ملک خدا میں فتور پیدا کرنے کو شام و عراق کے درمیان سے نکلے گا۔ اس کی ایک آنکھ اور ایک ابرو بالکل نہ ہوگی۔ اسی وجہ سے اسے مسیح کہتے ہیں۔ اس کے ساتھ یہود کی فوجیں ہوں گی۔ وہ ایک بڑے گدھے پر سوار ہوگا اور اس کی پیشانی پر لکھاہوگا ک ف ر (یعنی کافر) جس کو ہر مسلمان پڑھے گا اور کافر کو نظر نہ آئے گا، اس کا فتنہ بہت شدید ہوگا، چالیس دن رہے گا، پہلا دن ایک سال کا ہوگا، دوسرا ایک مہینہ کا ، تیسرا ایک ہفتہ کا اور باقی دن جیسے ہوتے ہیں۔ وہ بہت تیزی کے ساتھ ایک شہر سے دوسرے شہر میں پہنچے گا۔ جیسے بادل جسے ہوا اڑاتی ہو، وہ خدائی کا دعویٰ کرے گا۔ اس کے ساتھ ایک باغ اور ایک آگ ہوگی جن کا نام جنت و دوزخ رکھے گا۔ مگر وہ جودیکھنے میں جنت معلوم ہوگی، وہ حقیقتاً آگ ہوگی اور جو جہنم دکھائی دے گا وہ مقام راحت ہوگا جس اسے مانیںگے ان کے لیے بادل کو حکم دے گا، برسنے لگے گا ، زمین کو حکم دے گا کھیتی جم اٹھے گی جو نہ مانیں گے ان کے پاس سے چلا جائے گا، ان پر قحط ہو جائے گا۔ تہی دست رہ جائیں گے۔ ویرانے میںجائے گا تو وہاں کے دفینے شہد کی مکھیوں کی طرح اس کے پیچھے ہو لیںگے۔ اسی قسم کے بہت سے شعبدے دکھائے گا اور حقیقت میں یہ سب جادو کے کرشمے ہوں گے جن کو واقفیت سے کچھ تعلق نہیں اس لیے اس کے وہاں سے جاتے ہی لوگوں کے پاس کچھ نہ رہے گا۔ اس وقت میں مسلمانوں کی روٹی پانی کا کام ان کی تسبیح و تہلیل دے گی یعنی وہ ذکرِ خدا کریں گے اور بھوک پیاس ان سے رفع ہوگی۔ چالیس دن میں حرمین طیبین (مکہ معظمہ و مدینہ منورہ) کے سوا تمام روئے زمین کا گشت کرے گا۔ حرمین شریفین میں جب جانا چاہیے گا۔ فرشتے اس کا منہ پھیر دیں گے۔ جب وہ ساری دنیا میں پھر پھر اکر ملکِ شام کو جائے گا اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام نزول فرمائیں گے۔

    جب دجال کا فتنہ انتہا کو پہنچ چکے گا اور وہ ملعون تمام دنیا میں پھر کر ملک شام میں جائے گا جہاں تمام اہل عرب سمٹ کر پہلے ہی جمع ہو چکے ہوں گے، یہ خبیث ان سب کا محاصر ہ کر لے گا۔ ان میں بائیس ہزار مرد جنگی اور ایک لاکھ عورتیں ہوں گی، ناگاہ اسی حالت میں قلعہ بند مسلمانوں کو غیب سے آواز آئے گی کہ گھبراؤ نہیں فریاد درس آپہنچا۔ اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام آسمان سے دو فرشتوں کے پروں پر ہاتھ رکھے زرد رنگ کا جوڑا زیب تن کئے ہوئے نہایت نورانی شکل میں دمشق کی جامع مسجد کے شرقی منارہ پر دین محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حاکم اور امام عادل و مجد دملت ہو کر نزول فرمائیں گے۔ صبح کا وقت ہو گا نماز فجر کے لیے اقامت ہو چکی ہو گی۔ حضرت امام مہدی جو اس جماعت میں موجود ہونگے۔ آپ سے امامت کی درخواست کریں گے۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام حضرت امام مہدی کی پشت پر ہاتھ رکھ کر کہیں گے آگے بڑھو، نماز پڑھاؤ کہ تکبیر تمہارے ہی لیے ہوئی تھی۔ رسو ل اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں ’’تمھارا حال کیسا ہو گا جب تم میں ابنِ مریم نزول کریں گے ۔ اور تمہارا امام تمھیں میں سے ہوگا‘‘۔ یعنی اس وقت کی تمہاری خوشی اور تمہارا فخر بیان سے باہر ہے کہ روح اللہ باوصف نبوت و رسالت تم پر اتریں، تم میں رہیں ، تمہارے معین و یاروبنیں اور تمہارے امام کے پیچھے نماز پڑھیں۔

    غرض عیسیٰ علیہ السلام سلام پھیر کر دروازہ کھلوائیں گے، اسی طرف دجال ہوگا جس کے ساتھ ستر ہزار یہودی ہتھیار بند ہوں گے۔ لشکر اسلام اس لشکرِ دجال پر حملہ کرے گا۔ گھمسان کا معرکہ ہوگا۔ جب دجال کی نظر حضرت عیسیٰ علیہ السلام پر پڑے گی، پانی میں نمک کی طرح پگھلنا شروع ہوگا اور بھاگے گا۔ یہ تعاقب فرمائیں گے اور دجال لعین کو تلاش کرکے بیت المقدس کے قریب موضع ’’ ُلد‘‘ کے دروازے پر جالیں گے اور اس کی پشت میں نیزہ ماریں گے، وہ جہنم واصل ہوگا۔ آپ مسلمانوں کو اس کا خون اپنے نیزے پر دکھائیں گے دجال کا فتنہ فرد ہونے کے بعد حضرت عیسیٰ علیہ السلام اصلاحات میں مشغول ہوں گے، اسلام پر کافروں سے جہاد فرمائیں گے اور جزیہ کو موقوف کر دیں گے۔ یعنی کافر سے سوا اسلام کے کچھ قبول نہ فرمائیں گے۔ صلیب توڑیں گے اور خنزیر کو نیست و نابود کر دیں گے۔ تمام اہل کتاب جو قتل سے بچیں گے سب ان پرایمان لے آئیں گے۔ ان کے زمانہ میں اللہ عزوجل اسلام کے سوا سب دینوں اور مذہبوں کو فنا کر دے گا۔ تمام جہاں میں ایک دین اسلام ہوگا اور مذہب ، ایک مذہب اہلسنت، آپ کے زمانہ میں مال کی کثرت ہوگی اور برکت میں افراط ، اور ساری زمین عادل سے بھر جائے گی، یہاں تک کہ بھڑےئے کے پہلو میں بکری بیٹھے گی اور وہ آنکھ اٹھا کر نہ دیکھے گا اور بچے سانپ سے کھیلیں گے
    likha tou bht acha hai bas itni maloomat de dejeay kay yeh saray waqiyat kis say riwayat hain shukria

Page 1 of 3 123 LastLast

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •