مجاہدنےکمانڈرسمیت9جنگجوما� �ڈالے
ذبیح اللہ مجاہد

Friday, 07 Jamadil Awal 1433
جمعہ, 30 مارچ 2012 08:29

کابل کٹھ پتلی انتظامیہ کے صفوف میں موجودامارت اسلامیہ کے مجاہدنے صوبہ پکتیکاضلع یحی خیل میں 9 مقامی جنگجوؤں کوکمانڈرسمیت موت کے گھاٹ اتاردیا۔



آمدہ رپورٹ کےمطابق جمعہ کےروز2012-03-30 مقامی وقت صبح پانچ بجے ضلعی مرکزکےقریب ایک قلعہ میں موجود مقامی جنگجوؤں کےمرکزمیں امارت اسلامیہ کےمجاہدثناءاللہ ولداحسان اللہ نے جنگجوؤں پرہیوی مشین گن سےحملہ کیا،جس کےنتیجے میں 9 جنگجو کمانڈررمضان سمیت موقع پرہلاک ہوئيں۔

رپورٹ میں مزیدکہاگیاہےکہ فدائی مجاہدنے مرکزمیں موجوداسلحہ،گولہ بارود اوردیگرفوجی سازوسامان رینجرگاڑی میں ڈال کرمجاہدین تک بحفاظت پہنچنے میں کامیاب ہوا۔

ذرائع کےمطابق مقامی مجاہدین نے ثناءاللہ کی اس دلیرانہ عمل کااحترام کیااورانہیں انعامات سےنوازاگیا۔

واضح رہےکہ ثناءاللہ کوچندماہ قبل امریکی حمایت یافتہ مقامی جنگجوؤں کی صفوف میں اسی مقصدکےلیےامارت اسلامیہ کے پالیسی کے مطابق بھرتی کیاگیا،جنہوں نے جارح فوجوں کی حامیوں کےلیے عبرتناک عمل انجام دیااورسرخروئی وکامیابی کامظاہرہ کرتےہوئے اپنے مجاہدین بھائیوں سے مشن مکمل کرنےکےبعد یکجاہوا۔

یادرہےکہ حالیہ دنوں میں جارح فوجوں اوران کےحامیوں کےخلاف ملک بھرمیں نفرتوں کاسلسلہ پروان چڑھاہواہے،دوروزقبل ہلمند اور پکتیکاصوبوں میں دشمن کےصفوف میں موجودمجاہدین نے جارح فوجوں پراندھادھندفائرنگ کی،جس میں غاصبوں کوبھاری جانی نقصان کاسامناہوا،لیکن ثناءاللہ کےشجاعانہ حملےنےثابت کردی،کہ اب بھی جارح فوجوں کی طرح کٹھ پتلی انتظامیہ کےصفوف میں بھی مجاہدین شامل ہیں،جودشمن کےلیے نفسیاتی مسئلہ بن چکاہے۔