Results 1 to 10 of 10

Thread: Wo Bazi Le Gaya

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default Wo Bazi Le Gaya


    ایک دفعہ کسی بزرگ نے دیکھا کہ بغداد کی دانہ منڈی کے باہر ایک پتھر کے اوپر شیطان بیٹھا رو رہا تھا۔ بزرگ بڑے حیران ہوئے، وہ اس کے قریب گئے اور کہنے لگے کے ابلیس کیا ہے۔۔ تو رو رہا ہے؟
    اس نے کہا، جی میرا بہت برا حال ہے ۔ تو انھوں نے کہا نہ بھائی، تو نہ رو، تمھیں تو اتنے کام بگاڑنے ہیں لوگوں کے، اگر تو ہی رونے لگ گیا تو کیا ہو گا؟
    اس نے کہا کہ، جی میرا کچھ دکھ ہے۔ بابا جی نے کہا کہ کیا دکھ ہے؟
    کہنے لگا، جی میرا دکھ یہ ہے کہ میں اچھا ہونا چاہتا ہوں، وہ مجھ سے ہوا نہیں جاتا۔
    تو یہ دکھ تو ہم سب کا ہے، ہم زور تو لگاتے ہیں بڑے کمال کی بات یہ ہے کہ ہم کس لیے اچھے ہونا چاہتے ہیں، ہوا نہیں جاتا؟
    چاہیے یہ کہ ہم ہونے کی کوشش تو کریں، خواہش تو کریں کہ ہم اچھے ہو جائیں تو اس سے بڑا فرق پڑ جاتا ہے۔
    ہماری بات تو ہوتی رہتی ہے، گفتگو بھی ہوتی رہتی ہے لیکن ہم روئے کبھی بھی نہیں۔ ابلیس ہم سے بہتر تھا کہ سچ مچ رو دیا، وہ بازی لے گیا۔ —
    Last edited by Hidden words; 05-08-2012 at 02:18 AM.





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  2. #2
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default تین چیزیں



    تین چیزیں محبت بڑھانے کا ذریعہ ہیں ا ول سلام کرنا ، دوم دوسروں کے لیے مجلس میں جگہ خالی کرنا، سوم مخاطب کو بہترین نام سے پکارنا۔

    ( حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ)





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  3. #3
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default مانوس اجنبی


    مانوس اجنبی

    مجھے بہت آہستگی سے اپنی بات کہنا ہو گی اور تمہیں بھی چاہیے کہ اپنے چہرے پر کوئی تاثر نہ آنے دو۔ کچھ یوں لگے جیسے ہم کوئی بیکار بات کر رہے ہیں۔۔۔۔جیسے اساطیری ادب میں یونانی دیو مالا کا حصہ۔۔۔۔۔جیسے اردو نظم کے ارتقا میں غزل کی لایعنیت کا کردار۔

    یوں سمجھو جیسے ہم پاک ٹی ہاؤس میں بیٹھے ہیں۔۔۔۔دھوئیں کے مرغولوں اور چائے کی تمازت پہنچاتی خوشبوؤں کے بیچ ہم دو نقاد۔۔۔۔تم یقیناًسوچتے ہو گے بھلا خوشبو کہاں تمازت پہنچا سکتی ہے۔۔۔۔پر ایسا ہوتا ہے۔ جب جیب چائے خریدنے کی اجازت نہ دے اور انا اس تلخ حقیقت کو ماننے پر تیار نہ ہو۔ ایسے میں خوشبو سورج بن جاتی ہے اور ہر ذی روح کوئی سایہ، کوئی اوٹ،کوئی فرار ڈھونڈنے لگتا ہے۔ لوگ بڑی بڑی باتیں کرنے لگتے ہیں۔ ایسی بلندیوں کی طرف پرواز کرتے ہیں جہاں سے چائے کا کپ بڑی معمولی چیز دکھائی دینے لگے، ان رفعتوں کی طرف جہاں بدیسی سیگرٹوں کی سحر انگیز خوشبوئیں نہ پہنچ سکیں۔

    تو سمجھو جیسے ہم پاک ٹی ہاؤس میں بیٹھے ہیں۔۔۔۔۔مگر میری بات ایسے نہ سننا جیسے ہم کہیں پاک ٹی ہاؤس میں بیٹھے ہوں۔ یہ بہت اہم بات ہے۔ وہ اب بھی یہیں موجود ہیں۔وہ جو مجھے تنہا نہیں چھوڑتے۔ وہ تو سڑک پر بھی میرے ساتھ ساتھ چلتے ہیں۔ بس میں جڑے اجنبیوں کی طرح بہت قریب۔ اتنا کہ میں ان کی سرگوشیاں بھی سن سکتی ہوں۔ اتنا کہ میں ان کے ماتھے پہ پڑی لکیریں گن سکتی ہوں۔پر وہ سرگوشیاں کہاں کرتے ہیں؟ انہیں تو کسی چیز کا خوف نہیں ہے۔وہ تو کتابیں بھی باآوازِ بلند پڑھتے ہیں۔میرے پیچھے کھڑے ہو کر ،شانوں پر ذرا جھک کر۔۔۔۔۔کند طالب علموں کی طرح لہک لہک کر پڑھتے ہیں۔اس بات سے بے نیاز کہ پھر میں نہیں پڑھ سکتی اور کتاب بند بھی نہیں کر سکتی کہ وہ جو پڑھ رہے ہوتے ہیں۔

    تم تو سمجھتے ہو اس کیفیت کو جب ہم بڑے مبہم اور بیکار طریقے سے کسی اہم کام کا حصہ بن جائیں۔۔۔۔جیسے پورے خاندان کے ساتھ کسی کی عیادت کو جانا۔ اب اتنے تیمارداروں کو دیکھ کر میزبانوں کے ہاتھ پاؤں تو پھولیں گے ہی پر کمرے میں بڑھتی گھٹن سے بیمار کی طبیعت بھی متلانے لگتی ہے اور پھر اتنے شور میں ایک باریک سی آواز بھلا کیا مزاج پرسی کر پائے گی مگر۔۔۔۔۔آپ جائے بغیر رہ بھی نہیں سکتے۔ کمرے میں داخل ہوتے ہی میزبان آپ کی غیر موجودگی بھانپ جائیں گے۔ پھر مہینوں آپ کو اسی ندامت میں چہرہ چھپانا ہو گا اور وہ ہزاروں وضاحتیں ایک طرف جو آپ کا دل پیش کرتا رہے گا۔کتنی عجیب بات ہے نہ کہ کوئی آپ کی موجودگی محسوس نہیں کرتا پر غیر موجودگی پر سب ٹھٹھک جاتے ہیں۔جیسے ایک بیکار سا کیل نکل آنے پر کوئی فانوس دھم سے آ گرے۔۔۔۔۔کیل جو ہمیشہ سے یہیں تھا(فانوس سے بھی پہلے سے)،کیل جو سارا وزن سہارے کھڑا تھا اور کیل جسے کبھی کوئی دیکھ نہ پایا۔

    تو آپ اس بیکار اور غیر مفید کام کا حصہ بننے پر مجبور ہوتے ہو۔ ایسے ہی میں کتاب کو بند نہیں کر پاتی اور خود کو کوستی رہتی ہوں۔ اور انہیں تو کچھ کہ بھی نہیں سکتی کہ وہ مجھ سے مخاطب ہی کہاں ہوتے ہیں۔۔۔۔۔۔وہ تو بس میرے شانوں پر جھکے گویا کتاب کے سحر میں کھوئے ہوئے ہوتے ہیں۔بس میں جڑے اجنبیوں کی طرح اور کوئی اجنبیوں کو فرمانِ زباںِبندی نہیں سناتا۔

    سید اسد علی کی کتاب‘‘شہرِ حقیقت میں کہانی لکھنا’’ سے ایک اقتباس





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  4. #4
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default ممتاز مفتی؛الکھ نگری ہ:


    جوں جوں اسکی پریکٹس چلی توں توں اسکی صحت گرنے لگی' خواہ مخواہ ایک نا ایک بیماری لگ جاتی۔
    لوگوں کو دوا دیتا تو انہیں شفا ہو جاتی خود دوا کھاتا تو کوئی اثر نہ ہوتا۔ اسکا مزاج چڑ چڑا ہو گیا۔مریضوں سے چڑ چڑ کرنے لگا۔
    شہاب نے کہا یہ تو ہو گا۔ اللہ جس کے ہاتھ میں شفا بخشے گا' وہ خود تو بیمار رہے گا لازما"۔۔
    وجہ میں نے پوچھا
    بولا ' تاکہ اسے شعور ہو کہ شفا بخشنے والا وہ خود نہیں کوئی اور ہے۔
    میں نے کہا۔ شہاب جی اگر اشفاق حسین سے کہیں کہ تیرے ہاتھ میں اللہ نے شفا بخشی ہے تو اسے غصہ آتا ہے۔
    کہتا ہے میں محنت کرتا ہوں۔ جان کھپاتا ہوں اور تم کہتے ہو اللہ نے شفا بخشی ہے
    وہ ہنسا بولا' اگر ریزیسٹ کرے گا تو بیماری اور بھی شدت اختیار کرے گی۔ اس سے بچنے کا آسان طریقہ یہ ہے کہ ہتھیار ڈال دو۔
    میں نے کہا کہ ہتھیار ڈال دینا تو ہار تسلیم کرلینا ہے۔
    بالکل' قدرت بولا' عام باتوں میں ہتھیار ڈال دینا شکست ہوتی ہے' لیکن اللہ کے معاملے میں ہتھیار ڈالنا فتح ہوتی ہے۔ ہتھیار ڈال دو اور جیت جاؤ سکھی ہو جاؤ۔
    قدرت اللہ کا یہی فلسفہ تھا جس پر وہ زندگی بھر عامل رہا کہ ہتھیار ڈال دہو۔ سچے دل سے ہتھیار ڈال دو۔ ہار جاؤ سچے دل سے ہار جاؤ۔ کوئی بحث کرے تو جوابا" بحث نہ کرو' بات نہ بڑھاؤ۔ اس کی بات مان لو۔ کوئی الزام دھرے تو اسے تسلیم کر لو اپنی پوزیشن صاف نہ کرو۔ مان جانے میں بڑا سکھ ہے اور سکھ جیت کا دوسرا نام ہے قدرت اللہ کہتا تھا' دوسروں کو سکھ پہنچاؤ گے' تو آپ خود بخود سکھی ہو جاؤ۔ مفت میں۔

    ممتاز مفتی؛الکھ نگری:صفحہ:
    744





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  5. #5
    Hidden words's Avatar
    Hidden words is offline "-•(-• sтαү мιηε •-)•-"
    Join Date
    Nov 2011
    Location
    Kisi ki Ankhon Aur Dil Mein .......:P
    Posts
    56,915
    Mentioned
    322 Post(s)
    Tagged
    10949 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474899

    Default re: Wo Bazi Le Gaya

    hmmm umda iqtibas
    suno hworiginal - Wo Bazi Le Gaya
    575280tvjrzkx7ho zps19409030 - Wo Bazi Le Gayaღ∞ ι ωιll αlωαуѕ ¢нσσѕє уσυ ∞ღ 575280tvjrzkx7ho zps19409030 - Wo Bazi Le Gaya

  6. #6
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Canada
    Posts
    25,300
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    442 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    11381699

    Default re: Wo Bazi Le Gaya

    han, kuch khush kismat aise bhi hote hein


  7. #7
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default رونا



    رونے میں کوئی برائی نہیں ھے۔ نم آنکھیں‘ نرم دل ہونے کی نشانی ہیں اور دلوں کو نرم ہی رہنا چاہیے۔ اگر دل سخت ہو جائیں تو پھر ان میں پیار و محبت کا بیچ نہیں بویا جا سکتا اور اگر دلوں میں محبت ناپید ہو جائے تو پھر انسان کی سمت بدلنے لگتی ھے۔ محبت وہ واحد طاقت ہے جو انسان کے قدم مضبوتی سے جما دیتی ھے اور وہ گمراہ نہیں ہوتا.
    بس ان آنسوؤں کے پیچھے ناامیدی اور مایوسی نہیں ہونی چاہیے۔ کیونکہ ناامیدی ایمان کی کمزوری کی علامت ہوتی ھے۔ اللہ سے ہمیشہ بھلائی اور اچھے وقت کی آس رکھنی چاہیے۔ وہ اپنے بندوں کو اسی چیز سے نوازتا ھے جو وہ اپنے اللہ سے توقع کرتے ہیں۔

    اقتباس: فاطمہ عنبریں کے ناول "رستہ بھول نہ جانا" سے





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  8. #8
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default re: Wo Bazi Le Gaya

    zabardast thread hai

    eq2hdk - Wo Bazi Le Gaya

  9. #9
    Join Date
    Jul 2010
    Location
    Karachi....
    Posts
    31,280
    Mentioned
    41 Post(s)
    Tagged
    6917 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474875

    Default re: Wo Bazi Le Gaya

    bht Zabardastttttttt


    Ik Muhabbat ko amar karna tha.....

    to ye socha k ..... ab bichar jaye..!!!!


  10. #10
    Join Date
    May 2010
    Location
    Karachi
    Age
    22
    Posts
    25,472
    Mentioned
    11 Post(s)
    Tagged
    6815 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474869

    Default re: Wo Bazi Le Gaya

    ala..........
    tumblr na75iuW2tl1rkm3u0o1 500 - Wo Bazi Le Gaya

    Hum kya hain

    Hmari Muhabatayn kya hain
    kya chahtay hain
    kya patay hain..

    -Umera Ahmad (Peer-e-Kamil)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •