اردومزاح نگاری کوبام عروج بخشنےوالےشوکت تھانوی کوبچھڑے49برس بیت گئے

لاہور : اردو مزاح نگاری ميں منفرد مقام رکھنے والے شوکت تھانوی کو ہم سے بچھڑے 49 برس بیت گئے۔

شائستہ انداز ميں مزاح تخليق کرنے والے شوکت تھانوی کی اردو مزاح نگاری میں فنی خدمات لاتعداد ہیں۔

شوکت تھانوی کا اصل نام محمد عمر شوکت تھا۔ تھانوی صاحب 1904 میں بھارت کے صوبے اتر پردیش میں پیدا ہوئے۔

انہوں نے اپنے کيرئير کا آغاز بطور صحافی کيا اور تقسیم کے بعد ریڈیو پاکستان سے منسلک ہوگئے۔ شوکت تھانوی نے شاعری اور نثر دونوں اصناف سخن ميں مزاح تخليق کيا۔

آٹا اور فیملی پلاننگ جیسی مایہ ناز نظموں اور شاہین بچے جیسے مضامین کے خالق شوکت تھانوی مزاح نگاروں کے اس گروہ سے تعلق رکھتے ہیں جو طنزو مزاح کا اثر بھی برقرار رکھتے ہیں اور شائستگی کا دامن بھی ہاتھ سے نہیں چھوڑتے۔ ان کے لکھے ڈرامے تھیٹر اور ٹی وی اسکرین کی زینت بھی بنے۔

شوکت تھانوی کی ادبی خدمات کے اعتراف میں انہیں تمغہ امتیاز سے نوازا گیا۔ اردو ادب کو بطورمزاح نگار شوکت تھانوی پر ہميشہ ناز رہے گا