ٹوکيو ... طاقتور زلزلے اور سونامي کے بعد جاپان نے اپنا آخري ايٹمي ري ايکٹر بھي بند کرديا. تمام ايٹمي ري ايکٹروں کے بند ہونے کے بعد ملک ميں بجلي کے شديد بحران کا خدشہ ظاہر کيا جارہا ہے. جاپان ايٹمي بجلي گھروں سے توانائي حاصل کرنے والا دينا کا تيسرا بڑا ملک تھا. تاہم سونامي سے فوکو شيما بجلي گھر کے جوہري ري ايکٹروں کو نقصان کے بعد جاپاني حکومت نے تمام جوہري بجلي گھروں کے حفاظتي انتظامات کا جائزہ لينے کا حکم ديا تھا. 42 برسوں ميں يہ پہلا موقع ہے کہ ہفتے کو جاپان ميں بجلي کي پيداوار ميں جوہري بجلي گھروں کا حصہ صفر ہوگيا. حکومت نے شمالي جاپان کے علاقے ہوکائيڈو ميں واقع توماري جوہري بجلي گھر سے بھي پيداوار بند کردي گئي. بند کيا جانے والا پلانٹ جاپان کے 50 جوہري بجلي گھروں ميں آخري تھا