کراچي…متحدہ قومي موومنٹ کي رابطہ کميٹي کے ڈپٹي کنوينرڈاکٹرمحمدفاروق ستارنے کہاہے کہ ايم کيوايم نئے صوبوں کے قيام کے حق ميں ہے اورقومي اسمبلي ميں جنوبي پنجاب و ديگر صوبوں کے قيام کابل ايم کيوايم نے ہي پيش کيا.ان خيالات کااظہارانہوں نے گزشتہ روزخورشيدبيگم سيکريٹريٹ عزيزآبادميں پنجابي سرائيکي آرگنائزنگ کميٹي کے مختلف يونٹوں کے ذمہ داران کے اجلاس سے گفتگوکرتے ہوئے کيا.اس موقع پررابطہ کميٹي کے ارکان سيف يارخان ،سليم تاجک،پنجابي سرائيکي آرگنائزنگ کے انچارج و اراکين بھي موجودتھے.اجلاس سے خطاب ميں ڈاکٹرفاروق ستارنے کہاکہ اگرجنوبي پنجاب صوبے کي قراردادپنجاب اسمبلي منظورنہيں کرتي اوراس قرار داد کو صرف ايشوبناکراستعمال کرناچاہتي ہے توايم کيوايم اس کي بھرپورمذمت کريگي . انہوں نے کہاکہ اب جنوبي پنجاب سميت پورے پاکستان کے عوام جاگ چکے ہيں جو قائد تحريک الطاف حسين کي قيادت ميں متحدومنظم ہوکرعملي جدوجہدکررہے ہيں.انہوں نے تمام پنجابي اور سرائيکي ذمہ داران کومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ اس تحريکي جدوجہدميںآ پ کاکردارتاريخ سازہے لہ?ذا آپ تنظيمي نظم وضبط کے تحت اپنے تنظيمي کام کومزيد فعال کريں اور تحريکي فلسفہ کوپنجاب کے قريہ قريہ ميں پہنچائيں. اجلاس سے رابطہ کميٹي کے رکن سيف يارنے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ملک انتہائي نازک دور سے گزررہاہے لہ?ذبحيثيت تحريکي کارکن ہماري يہ ذمہ داري ہے کہ چوکنارہتے ہوئے حالات پرنظررکھيں اورتحريکي کاموں ميں دلجمعي کامظاہرہ کريں. قبل ازيں پنجابي سرائيکي آرگنائزنگ کميٹي کے انچارج خالدمحموداعوان اورجوائنٹ انچارج شريف علي رعنانے بھي اجلاس کے شرکاء سے گفتگوکي.علاو ہ ازيں ايم کيو ايم کي رابطہ کميٹي نے کراچي پريس کلب کے باہر احتجاجي مظاہرہ کرنے والي ايک سياسي جماعت کے کارکنوں کے ہاتھوں نجي ٹي وي کے کيمرہ مين دانش پر بدترين تشدد کا نشانہ بنانے کي سخت ترين الفاظ ميں مذمت کرتے ہوئے اسے آزادي صحافت پر حملہ قرار ديا ہے. ايک بيان ميں رابطہ کميٹي نے کہا کہ کيمرہ مين اپنے فرائض منصبي انجام دے رہے تھے اس دوران ايک سياسي جماعت کے کارکنان نے بلااشتعال نجي ٹي وي کے کيمرہ مين پر حملہ کرکے انہيں بہيمانہ تشدد کا نشانہ بنايا جسکے نتيجے ميں انکے ہاتھ کي ہڈي تين جگہوں سے ٹوٹ گئي ، سياسي جماعت کے مشتعل مظاہرين نے انکے کيمرے اور ديگر سامان چھين کر انکے کيمرے کو توڑ ديا جو قابل مذمت ہے . انہوں نے واقعہ ميں زخمي ہونے والے کيمرہ مين سے دلي ہمدردي کا اظہار کرتے ہوئے انکي جلد و مکمل صحتيابي کيلئے دعا بھي کي. رابطہ کميٹي نے گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد، وزيراعلي سندھ قائم علي شاہ اور صوبائي وزير داخلہ سندھ سے مطالبہ کيا کہ ايک سياسي جماعت کے کارکنوں کي جانب سے نجي ٹي وي کے کيمرہ مين کو تشدد کا نشانہ بنانے کے واقعہ کا فوري نوٹس ليا جائے اورواقعہ ميں ملوث تشدد پسند عناصر کو گرفتار کرکے عبرت ناک سزا دي جائے اور ساتھ ہي صحافيوں کے جان و مال کے تحفظ کو يقيني بنانے کيلئے ٹھوس و مثبت اقدامات بروئے کار لائے جائيں.