اسلام آباد… دفترخارجہ اور وزارت دفاع نے پاک امريکا تعلقات کي بحالي کيلئے جاري رابطوں پر قومي سلامتي کي پارليماني کميٹي کو بريفنگ دي ہے، وزيرخارجہ حنارباني کھر نے کہاہے کہ نئے پاک امريکا رابطوں کو ابھي ناکام کہنا درست نہيں ہے . قومي سلامتي کي پارليماني کا اجلاس ، اسلام آباد ميں سينيٹر رضا رباني کي زير صدارت ہوا، اس ميں وزيرخارجہ اور قائمقام سيکريٹري دفاع نے بھي شرکت کي ، کميٹي کو پاک امريکا روابط کي بحالي کيلئے جاري اقدامات پر بريفنگ دي گئي، بعد ميں ميڈيا کو بريفنگ ميں حنارباني کھر نے کہاکہ ايمن الظواہري کے پاکستان ميں ہونے کے بارے ميں ہمارے پاس معلومات نہيں ہيں اور اگر کسي کے پاس ايسي معلومات ہيں تو وہ شيئر کرے ، انہوں نے کہاکہ ہارليماني سفارشات کي روشني ميں امريکا سے بات چيت جاري ہے، اسکا ابھي آغاز ہوا ہے اور اسے ناکام کہنا درست نہيں، انہوں نے کہاکہ امريکي حکام کو بتادياہے کہ ڈرون ، ہماري خودمختاري کيخلاف ہيں اور ان کے منفي نتائج سامنے آرہے ہيں،القاعدہ، پاکستان اور امريکا کي مشترکا دشمن ہے، پاک امريکا تعلقات پر پارٹنرشپ اپروچ ہوني چاہيئے ، ميڈيا سے گفت گو ميں چيئرمين کميٹي رضا رباني نے کہاکہ قومي سلامتي پر کوئي سمجھوتہ نہيں ہوگا ،امريکا کو ہماري پارلے ماني سفارشات کا احترام کرنا چاہيئے، ليون پينيٹا نے ڈرون حملوں پر جو بيان ديا وہ حالات کو مزيد خراب کرے گا ، ڈورن حملے ناقابل برداشت اور عالمي قوانين کيخلاف ہيں، حکومت اسکے خلاف تمام سفارتي ذرائع استعمال کررہي ہے