لاہور… سيشن کورٹ ميں وکلا کے ہاتھوں پوليس اہلکاروں پر تشدد کے واقعات معمول بن گئے.سيشن کورٹ ميں وکلا نے سب انسپکٹرکي وردي اورسرپھاڑديا.گزشتہ روز بھي وکلا نے اے ايس آئي کوبھي مارمارکربھرکس نکال دياتھا. تھانہ انڈسٹريل اسٹيٹ کاسب انسپکٹرامتياز واہلہ سيشن کورٹ ميں وکلا گردي کاشکار ہواہے. وہ چوري کے ايک مقدمے ميں سيشن جج مظفراقبال کي عدالت ميں پيش ہونے آياتھا. قمر شاہد ايڈووکيٹ اوراس کے ساتھي وکلا نے اس پر تشددکرکے سرپھاڑديا.تھانہ اسلام پورہ ميں سب انسپکٹرکوتشددکانشانہ بنانے وردي پھاڑنے اوردھمکياں دينے کے الزام ميں قمر شاہد ايڈووکيٹ اور35نامعلوم وکلا کے خلاف مقدمہ درج کرلياگياہے. مقدمہ نمبر 653 زيردفعہ 365، 342، 147، 149، 353، 186، 506کے تحت درج کيا گيا جس ميں سرکار کار ميں مداخلت،قتل کي دھمکياں،اغوا،تشدد اورحبس بے جاء ميں رکھنے کي دفعات درج ہيں. واضح رہے کہ گذشتہ روزبھي سيشن کورٹ کي راہداري اس وقت ميدان جنگ بن گئي جب سفيد شرٹس اورکالي ٹائياں پہنے نوجوان وکلا نے تھانہ گرين ٹاو?ن کے اے ايس آئي زوہيب پرہاتھ سيدھے کئے،زوہيب کي مزاحمت بھي کام نہ آئي .