Page 1 of 2 12 LastLast
Results 1 to 10 of 13

Thread: Ek Muhabbat Ki Kahani

  1. #1
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    cute Ek Muhabbat Ki Kahani

    ایک محبت کی کہانی

    وہ شہر بہت خوبصورت تھا۔سرسبز پہاڑوں کے بیچ ایک سمندر سا دریا بہتا تھا اور دریا کے کنارے درختوں میں گھرا تھا یہ چھوٹا سا شہر۔جنگل میں سائیں سائیں کرتی تنہائیوں اور ایک بڑے شہر کے بے پناہ ہجوم کے بیچ یہ چھوٹا سا قصبہ گویا دیوانگی وفرزانگی کے بیچ حد فاصل تھا۔بڑا شہر نیویارک تھا،دریا ہڈسن اور قصبہ مونٹروس۔یہاں کے لوگ خواب اور حقیقت کی کہیں بیچ کی دنیا میں رہتے تھے۔کام کے لئے لوگوں کی اکثریت صبح سویرے نیویارک کو چل پڑتی اور جب شام کو یہ لوگ گھر لوٹتے تو انہیں جا بجا ہرن،خرگوش اور ریکون جیسے جانور ہوا خوری کرتے نظر آتے۔یہاں فضا میں ایک عجیب پاگل کر دینے والی خوشبو تھی۔پر کسی نے اس خوشبو کو کبھی کھوجنے کی کوشش نہ کی۔سب جانتے تھے کہ ہر صحن میں لہلہاتے خوشرنگ پھول،خزاں میں دھنک رنگ ہو جانے وا لے درخت،ہرن،ہر رنگ و نسل کے لوگ ۔۔یہ سب اس خوشبو کا منبع تھے۔

    یہ شہر کسی مصور کا خواب ہو سکتا تھا مگر آج جب اسے سوچنے بیٹھا تو ایک لڑکی کے سواکچھ یاد نہیں آتا۔وہ لڑکی جس کی رنگت اتنی گوری تھی جیسے راج ہنس، اسکی آنکھیں اتنی نیلی تھیں جیسے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کہاں سے لاؤں وہ استعارے جو اس حسن کو بیان کر سکیں جسے شاید میں نے کبھی نظر بھر کر دیکھا بھی نہ تھا۔ہاں میں نہیں جانتا کہ اسکی آنکھوں کا رنگ کیا تھا؟مجھے یاد نہیں کہ وہ کیسے بال بناتی تھی؟میں بھول گیا ہوں کہ اسکے ہونٹ کیسے تھے؟بس یاد ہیں تو چھوٹی چھوٹی غیر اہم باتیں۔

    جب میں پہلی بار نیویارک گھومنے نکلا تو اس شہر کے بارے میں کچھ بھی نہ جانتا تھا۔سب وے میں ایک آدمی سے پوچھا کہ شہر دیکھنے کا ارادہ ہے ۔کہاں اتروں؟وہ مسکرایا اور بولا

    ’’کولمبس سرکل اتر جانا‘‘

    یہ جگہ کوئی بہت مشہور نہیں ہے۔یہاں سے نہ ایمپائر اسٹیٹ نظر آتی ہے اورنہ ورلڈ ٹریڈ سنٹر،نہ مجسمہ آزادی کی جھلک دیکھنے کو ملتی ہے اور نہ ہی ٹائم اسکوئیر کی رنگا رنگی۔کوئی اہتمام،کوئی پرجلال مناظر،کوئی بوکھلا دینے والی رفعتیں کچھ نہیں۔بس بڑے خاموش انداز میں شہر آپ کے سامنے بہنا شروع ہو جاتا ہے۔انسان اپنے آپ کو اجنبی نہیں سمجھتا۔اسکے ایک طرف وسیع سنٹرل پارک ہے،چوک میں ہزار ہا مختلف اشیا بیچنے والے لوگ ہیں اور پھر بلند وبالا عمارات کا ایک وسیع سلسلہ ہے۔چلتے جایئے اور ہر قدم آتش شوق کو بڑھاتا چلا جائے گا۔یہاں سے ہر راستہ ایک ہی جیسا لگتا ہے۔میں نے بھی کسی بے پرواہ ملاح کی مانندجیسے اپنی کشتی کو ہواؤں کے سپرد کر دیا۔میرے قدم مجھے چلاتے ہوئے شہر کے باہردریائے ہڈسن کے کنارے لے گئے۔جی ہاں وہی ہڈسن جو اس وادی سے آتا ہے جہاں وہ لڑکی رہتی ہے۔جس کی رنگت۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔مگر خیر اسکے خدوخال کی وضاحت کیلئے ہی تو مجھے اتنی تمہید باندھنی پڑ رہی ہے۔اسلئے کچھ انتظار اور سہی۔

    اس دریا کے کنارے پھولوں کی نمائش ہو رہی تھی۔جیسی بہار میں اکثر شہروں میں ہوا کرتی ہے۔مگر مجھے کچھ یوں لگا جیسے شہر نے اپنا دل نکال کر میرے سامنے رکھ دیا ہو۔مجھے اپنے گرد ان دیکھی خوشبوں سے بنی زنجیریں لپٹتی محسوس ہوئیں۔ایسا لگا جیسے میں کبھی چل نہ سکوں گا،جیسے سمندروں میں بھٹکتے جا ں بلب مسافر کو کنارہ نظر آ جائے یا جیسے مجھے اس شہر سے محبت ہو گئی ہو۔۔۔۔۔۔میں اس نمائش سے نکل کر شہر میں بہت گھوما۔مہینوں میری اکثر شامیں ،متعدد راتیں اور بہت سے دن انہی سڑکوں پر گھومتے گذرے۔میرے کمرے میں شہر سے خریدی چیزوں کا ڈھیر لگتا گیا۔پرفیومز،اسکیچیز،پوسٹ کارڈ،مرجھائے ہوئے پھول،رنگا رنگ ٹوپیاں اور نجانے کیا کیا؟رات بارہ بجے کوئی پکارتا کہ ففتھ اسٹریٹ سے مزیدار کافی پی جائے اور میں گھنٹوں واک کر کر وہاں پہنچ جاتا،چائینا ٹاؤن میں سی فوڈ کی کسی دکان کا سنتا تو سب وے پکڑ کر ادھر چل پڑتا۔میرا دوست تو اس پیدل شہر کھوجنے کو ابن بطوطہ کے سفر سے بھی دشوار اور بیکار قرار دیتا تھا۔پر وہ کیا سمجھتا ان محبت کی رمزوں کو۔

    آج برسوں کے بعد سوچنے بیٹھا ہوں تو نیو یارک کا نام آتے ہی ہونٹوں پہ ایک مسکراہٹ سی پھیل جاتی ہے اور بس۔۔۔۔۔۔مسکراہٹ جیسے بچپن کی کسی نادانی کا خیال آ جائے۔یہ اندازمحبت کا تو نہیں ہو سکتا۔پر یہ اس وقت کی بات ہے جب میں اپنے تئیں محبت کو سمجھتا تھا۔اوراب۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میں اس دن کے بعد اب کچھ بھی صحیح طور سے نہیں جانتا۔ وہ دن جب میں ایک لمبے سے سفر کے دوران بس یونہی چند لمحے کو ایک ویران کھائی کے کنارے رکا۔محض وقت گذارنے کو میں چلتا ہوا اس تک پہنچا۔شاید پاؤں کی ٹھوکر سے ایک چھوٹا سا پتھر بھی پھینک دیا۔پھر اسکی آواز سننے کی کوشش کرنے لگا۔اتنی بڑی کھائی میں ایک ننھے سے پتھر کی آواز بھلا کیا آتی۔مگر دھیان لگایا تو ہواؤں کی سائیں سائیں گہری ہونے لگی۔میں نے سرجھٹک کر واپسی کا ارادہ کیا۔اورپھر جیسے کسی نے میرے قدموں کو روکا ہو۔یہ بندھن نیویارک کی طرح نہیں تھا۔یہ تو جیسے کسی نے انمٹ سیاہی سے میرے پیروں پرا یک زنجیر بنا دی ہو۔میں نے چلناچاہا تو کوئی چیز مانع نہ ہوئی،مڑ کر دیکھا تو کوئی بلند و بالا عمارت،کوئی حسین چہرہ،کوئی شعبدہ بازی کچھ نظر نہ آیا۔بس پتھر تھے،نوکیلے پتھر اور بہت گہرائی میں کچھ اور پتھر۔اور شاید سرگوشیاں کرتی ہوئی آوارہ ہوا تھی۔اس میں ایسا تو کچھ نہ تھا جو مجھے ایک لمحے کو بھی روک سکتا۔سو میں چلدیا۔

    اس رات میں سونہیں سکا۔ایک عجیب سا احساس جیسے کچھ کھو رہا ہوں میں۔آنکھیں بند کرنے کی کوشش کی تو کچھ نظر نہ آیا۔بس کچھ پتھر تھے اور گہرائی میں کچھ اور پتھر۔کان لگا کر سننے کی کوشش کی تو کچھ سنائی نہ دیا۔بس شاید ہواؤں کی کچھ سرگوشیاں سی تھیں۔پر اتنی مدھم کہ کچھ بھی نہ سمجھ سکا۔یہ کھائی نیویارک نہیں تھی۔ان دونوں میں وہ فرق تھا جو ایک بے لباس مغربی ماڈل اور اور دوپٹے کے پلو میں منہ چھپائے اندرون لاہور کی لڑکی میں ہو۔میں غلطی پر تھا۔مجھے کبھی بھی نیویارک سے عشق نہیں ہوا۔بس ایک طالب علم تھا جو ایک خیرہ کر دینے والی رنگا رنگی کے بارے میں معلومات اکھٹی کر رہا تھا۔عشق تو مجھے اس کھائی سے ہوا تھا۔

    زندگی میں بہت بار ایسا ہوا جب میں نے وہاں لوٹنا چاہا۔کئی راتیں ایسی گذریں جب اس احساس نے مجھے سونے نہ دیا۔وہ لڑکی بھی اس کھائی کی طرح تھی۔جب میں اسے دیکھتا تھا تو وہ مجھے بہت معمولی،بڑی غیر اہم نظر آتی تھی۔اتنی کہ میں نے کبھی اسکی آنکھوں کا رنگ جاننے کی بھی کوشش نہیں کی اور اب جیسے جیسے وقت گزر رہا ہے ایک انمٹ زنجیر میرے جسم اور روح کے گرد لپٹتی چلی جا رہی ہے۔اس سے جدائی کے چاہ ماہ بعد مجھے اس سے محبت ہو گئی۔

    سید اسد علی کی کتاب " شہر حقیقت میں کہانی لکھنا" سے ایک اقتباس
    Last edited by Hidden words; 05-08-2012 at 12:15 AM.

  2. #2
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    karachi
    Posts
    845
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    142 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    Nice

  3. #3
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Kallar Syedan
    Age
    29
    Posts
    1,928
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    3
    Rep Power
    0

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    zaberdast sharing ha......... zaberdast... keep it up

  4. #4
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    *In The Stars*
    Posts
    18,093
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1271 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474862

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    very nice sharinG...




    Yahi Dastoor-E-ulfat Hai,Nammi Ankhon,
    Mein Le Kar Bhi,

    Sabhi Se Kehna Parta Hai,K Mera Haal,
    Behter Hai...!!


  5. #5
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    karachi
    Age
    28
    Posts
    997
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    45 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474844

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    Zabardast
    idamg0 - Ek Muhabbat Ki Kahani

  6. #6
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    psnd krny ka bht bht shukriya

  7. #7
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    tanhao main
    Posts
    6,644
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    1009 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    21474849

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    /up
    Bgxof - Ek Muhabbat Ki Kahani


  8. #8
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Lost...
    Posts
    17,151
    Mentioned
    135 Post(s)
    Tagged
    11596 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    3865501

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    nice
    Teri ankhon uworiginal - Ek Muhabbat Ki Kahani

  9. #9
    Join Date
    May 2010
    Location
    Karachi
    Age
    22
    Posts
    25,472
    Mentioned
    11 Post(s)
    Tagged
    6815 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474869

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    umdah ......
    tumblr na75iuW2tl1rkm3u0o1 500 - Ek Muhabbat Ki Kahani

    Hum kya hain

    Hmari Muhabatayn kya hain
    kya chahtay hain
    kya patay hain..

    -Umera Ahmad (Peer-e-Kamil)


  10. #10
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default re: Ek Muhabbat Ki Kahani

    bohat achi sharing

    eq2hdk - Ek Muhabbat Ki Kahani

Page 1 of 2 12 LastLast

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •