Results 1 to 9 of 9

Thread: Normal Insan

  1. #1
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    cute Normal Insan

    نارمل انسان

    وہ ہر لحاظ سے ایک نارمل لڑکاتھا۔ذہین،صحت مند،خوبصورت اور پر امید۔لیکن وہ نارمل نہیں تھا۔مگر اس سے پہلے کہ میں آپ کو اس لڑکے کی کہانی سناؤں میں اپنے پیشے کا ایک چھوٹا سا راز بتانا چاہتا ہوں۔

    حقیقی معنوں میں یہ لفظ نارمل ایک دھوکا ہی ہے۔نارمل کوئی نہیں ہوتا۔دنیا میں ارب ہا لوگ گھومتے ہیں اور ہزاروں لوگوں کا احوال تاریخ کی کتابوں میں درج ہے پر یقین کریں کہ ان میں سے ایک شخص بھی نارمل نہیں تھا۔یہ لفظ درحقیقت ایک فسانہ ہے جو ہم نے کم علمی کو چھپانے کیلئے گھڑ رکھا ہے۔آپ بھی سوچ رہے ہونگے کہ ایسی توجیہہ گھڑنے سے بھلا کوئی کیسے مطمئن ہو سکتا ہے؟

    آپ ایسا سوچ سکتے ہیں کیونکہ آپ ایک معالج نہیں ہیں۔اور یہاں معالج سے مراد میری طرح ماہرِ نفسیات ہونا ضروری نہیں ہے۔آپ کسی بھی شعبے سے تعلق رکھتے ہو۔ایلو پیتھک،ہومیو پیتھک،روحانی طریقہ علاج،حکمت تو آپ میری بات سمجھ سکتے ہو کہ ایک فرضی بیماری کس طرح مریضوں کو مطمئن کرنے کی طاقت رکھتی ہے۔

    یہ مریض جب آپ کے پاس آتے ہیں تو انکی آنکھوں میں ایک امید ہوتی ہے۔انکے کان منتظر ہوتے ہیں کہ ہم معائنے کے بعدانہیں کسی بیماری کا مژدہ سنا سکیں۔اگر یہاں آپ مریض کو جانچنے کے بعد کہتے ہو کہ نہیں میاں تم تو بھلے چنگے ہو تو یقین کیجئے کہ انکے اندر بہت اداسی پھیل جائے گی۔گرچہ بہت ممکن ہے کہ بظاہر وہ بہت خوشی کا اظہار بھی کریں مگر میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ وہ خوشی بڑی کھوکھلی ہوتی ہے۔وہ بس مروت کا اظہار کر رہے ہوتے ہیں۔وہ ظاہرا خوشی دکھاتے ہیں مگر دل کے اندر ہماری نالائقی پر تین حرف بھیج رہے ہوتے ہیں۔

    اور وجہ یہی ہے کہ لوگ ڈاکٹروں کے پاس اسلئے نہیں جاتے کہ انہیں سجے سجائے دفاتر کو دیکھنے کی آرزو ہوتی ہے یا پھر وہ عمدہ سوٹ پہنے کسی پروقار سے شخص سے ملنا چاہتے ہیں۔نہیں جناب! وہ لوگ اپنا قیمتی وقت نکال کر یہاں آئے ہیں۔انہوں نے بہت دیر تک ویٹنگ روم میں انتظار کیا ہے۔۔۔۔۔۔اور یہ سب اسلئے کہ انہیں کوئی مسئلہ درپیش ہے۔کچھ ایسا جسے وہ سمجھ نہیں سکتے بس چند نشانیاں ان پرظاہر ہوتی ہیں۔کسی کو سر کے پچھلے حصے میں درد ہے،کسی کے بازو سن ہوئے جاتے ہیں،کوئی پیٹ میں کنکھجورے رینگتے محسوس کرتا ہے۔وہ سب بہت گھبرائے ہوئے ہوتے ہیں کیونکہ ان کی سمجھ میں کچھ نہیں آ رہا ہوتا۔تو وہ سمجھتے نہیں ہیں مگر یہ جو کچھ بھی ہے ان کا اپنا ہے۔وہ اپنے ان دیکھے دشمن کے ساتھ گویا ایک توازن میں رہ رہے ہوتے ہیں۔یہ تو وہ بھی جانتے ہیں کہ جو وہ محسوس کرتے ہیں ویسا ہے نہیں۔ انہیں مکمل یقین ہے کہ ان کے پیٹ میں کوئی کنکھجورا نہیں ہے مگر کچھ ہے۔ اور ایسے میں ایک توجیہہ کہ یہ سب کوئی بیماری ہے اور اسے دور کیا جا سکتا ہے خاصی طمانیت خیز چیز ہوتی ہے۔اب ایسے میں اگر ڈاکٹر انہیں بتائے کہ وہ بھلے چنگے ہیں انہیں کوئی بیماری نہیں ہے تو وہ اندر سے لرز جاتے ہیں۔ایک بہت بڑا سوال ان کی روح میں در آتا ہے۔

    ’’تو میں بالکل ٹھیک ہوں۔ڈاکٹر یہی کہتا ہے۔پر اسکا یہ مطلب تو نہیں کہ میں تکلیف میں نہیں ہوں۔اسکا تو صرف یہ مطلب ہے کہ میرے مرض کا علاج اسکے پاس نہیں ہے۔‘‘ تکلیف ایک حقیقت ہے اور اب بدلا صرف یہ ہے کہ اسے علاج کیلئے کوئی اور در کھٹکھٹانا پڑے گا۔مختلف مہاتریوں اور عطایوں کے ہتھے چڑھنا پڑے گا۔کتنا اچھا ہوتا کہ کوئی بیماری نکل آتی اور چند دنوں کی کڑوی کسیلی دواؤں کے بعد وہ صحت یاب ہو جاتا۔

    ایسے لوگوں کی امید نہ ٹوٹے اسی لئے معالجین نے چند اہم اصطلاحات وضع کر لیں۔انہوں نے فرضی بیماریوں اور بے ضرر دواؤں سے علاج کا ایک ingeniousطریقہ نکالا ہے۔اب آپ کو کوئی بھی ڈاکٹر یہ کہتا نہ ملے گا کہ آپ کو کوئی بیماری نہیں ہے۔نہیں جناب یہ جملہ اب متروکات میں شامل ہے۔آپ کسی بھی معالج کے پاس چلے جائیں تو وہ تھوڑی ہی دیر میں آپ کے مرض کی تشخیص کر ڈالے گا۔یا پھر ٹیسٹ پر ٹیسٹ تجویز کرتا رہے گا تاکہ امید کا دامن نہ چھوٹے۔

    لیکن درحقیقت یہ ایک دھوکہ ہے۔حقیقت یہی کہ ہم سب بہت مختلف ہیں۔ایک اندھا شخص بھی اتنا ہی مکمل ہے جتنے ہم سب آنکھوں والے۔ہم بیمار ہیں تو صرفrelative term میں۔۔۔۔۔۔۔ایک بیمار معاشرے میں اپنی فعالیت کے لحاظ سے۔وگرنہ ایک صحت مند معاشرہ تو وہی ہوتا ہے جو ہر ایک سے انکی اہلیت کے مطابق حاصل کر سکے۔

    پر ہم یوٹوپیا میں نہیں رہتے۔یہاں حساب مختلف ہے۔یہاں سب کو ایک ہی سانچے میں ڈھالنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ایسے میں نارمل انسان جیسا فکشن سامنے لایا جا تا ہے اور سب کو ضروری کانٹ چھانٹ یا مناسب اضافوں کے ساتھ اس میں ڈھالنے کی کوشش کی جاتی ہے۔

    سید اسد علی کی کتاب "جونک اور تتلیاں" سے ایک اقتباس
    Last edited by Hidden words; 05-08-2012 at 12:00 AM.

  2. #2
    Join Date
    May 2010
    Location
    IN UR DREAMS
    Age
    25
    Posts
    9,438
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    323 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474853

    Default re: Normal Insan

    very nice shearing.


    DREAMS BOY...

  3. #3
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    tanhao main
    Posts
    6,644
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    1009 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    21474849

    Default re: Normal Insan

    /up
    Bgxof - Normal Insan


  4. #4
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default re: Normal Insan

    bohat khoob

    eq2hdk - Normal Insan

  5. #5
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Kallar Syedan
    Age
    29
    Posts
    1,928
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    3
    Rep Power
    0

    Default re: Normal Insan

    so nice sharing ha g

  6. #6
    Join Date
    May 2010
    Location
    Karachi
    Age
    22
    Posts
    25,472
    Mentioned
    11 Post(s)
    Tagged
    6815 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474869

    Default re: Normal Insan

    superb........
    tumblr na75iuW2tl1rkm3u0o1 500 - Normal Insan

    Hum kya hain

    Hmari Muhabatayn kya hain
    kya chahtay hain
    kya patay hain..

    -Umera Ahmad (Peer-e-Kamil)


  7. #7
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Lost...
    Posts
    17,151
    Mentioned
    135 Post(s)
    Tagged
    11596 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    3865501

    Default re: Normal Insan

    /up
    Teri ankhon uworiginal - Normal Insan

  8. #8
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default re: Normal Insan

    umdaa





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  9. #9
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    SomeOne H3@rT
    Age
    31
    Posts
    2,331
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    825 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    429507

    Default re: Normal Insan

    psnd krny ka bht bht shukriya

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •