Results 1 to 2 of 2

Thread: ہر قدم مرحلۂ دار و صلیب آج بھی ہے

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default ہر قدم مرحلۂ دار و صلیب آج بھی ہے


    ہر قدم مرحلۂ دار و صلیب آج بھی ہے

    جو کبھی تھا وہی انساں کا نصیب آج بھی ہے

    جگمگاتے ہیں افق پر یہ ستارے لیکن

    راستہ منزل ہستی کا مہیب آج بھی ہے

    سر مقتل جنہیں جانا تھا وہ جا بھی پہنچے

    سر منبر کوئی محتاط خطیب آج بھی ہے

    اہل دانش نے جسے امرِ مسلم مانا

    اہلِ دل کے لیے وہ بات عجیب آج بھی ہے

    یہ تری یاد ہے یا میری اذیت کوشی

    ایک نشتر سا رگِ جاں کے قریب آج بھی ہے

    کون جانے یہ تیرا شاعرِ آشفتہ مزاج

    کتنے مغرور خداؤں کا رقیب آج بھی ہے





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  2. #2
    Join Date
    May 2010
    Location
    Karachi
    Age
    22
    Posts
    25,472
    Mentioned
    11 Post(s)
    Tagged
    6815 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474869

    Default Re: ہر قدم مرحلۂ دار و صلیب آج بھی ہے

    wah wah..
    tumblr na75iuW2tl1rkm3u0o1 500 - ہر قدم مرحلۂ دار و صلیب آج بھی ہے

    Hum kya hain

    Hmari Muhabatayn kya hain
    kya chahtay hain
    kya patay hain..

    -Umera Ahmad (Peer-e-Kamil)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •