Results 1 to 2 of 2

Thread: غضب کا خوف ہے تنہائیوں میں

  1. #1
    Join Date
    May 2012
    Location
    lhr
    Age
    35
    Posts
    227
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    188 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    6

    Default غضب کا خوف ہے تنہائیوں میں

    کن لوگوں میں ہوں کیا لکھ رہی ہُوں
    سُخن کرنے سے پہلے سوچتی ہُوں



    اُداسی مُشتہر ہونے لگی ہے
    بھرے گھر میں تماشا ہو گئی ہُوں



    کبھی یہ خواب میرا راستہ تھے
    مگر اب تو اذاں تک جاگتی ہُوں



    بس اِک حرفِ یقین کی آرزو میں
    مَیں کتنے لفظ لکھتی جارہی ہُوں



    مَیں اپنی عمر کی قیمت پہ تیرے
    ہر ایک دُکھ کا ازالہ ہو رہی ہُوں



    غضب کا خوف ہے تنہائیوں میں
    اب اپنے آپ سے ڈرنے لگی ہُوں
    Merey jaisi aankhon walay jab Sahil per aatay hain
    lehrain shor machati hain, lo aaj samandar doob gaya

  2. #2
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    *In The Stars*
    Posts
    18,093
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1271 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474862

    Default Re: غضب کا خوف ہے تنہائیوں میں

    nice sharing




    Yahi Dastoor-E-ulfat Hai,Nammi Ankhon,
    Mein Le Kar Bhi,

    Sabhi Se Kehna Parta Hai,K Mera Haal,
    Behter Hai...!!


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •