Results 1 to 6 of 6

Thread: حضرت فاطمہ

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default حضرت فاطمہ

    Asalam o Alaikom

    حضرت فاطمہ


    حضرت فاطمہ (رض) صابر قانع اور دیندار خاتون تھیں۔ گھر کا تمام کام کاج خود کرتی تھیں چکی پیستے پیستے ہاتھوں میں چھالے پڑ جاتے تھے۔فقر و فاقہ کی یہ حالت تھی کہ کئ کئ دن فاقوں میں گزر جاتے مگر زبان پر شکایت کا ایک لفظ نا آتا۔ یہ وہ زمانہ تھا جب فتوحات اسلام روز بروز وسعت پذیر ہو رہی تھیں اور مدینہ میں بکثرت مالِ غنیمت آنا شروع ہو گیا تھا۔ ایک دن حضرت علی (رض) کو معلوم ہوا کہ مال غنیمت میں کچھ لونڈیاں آئی ہیں توحضرت فاطمہ سے فرمایا۔ " فاطمہ چکی پیستے پیستے تمہارے ہاتھوں میں آبلے پڑ گئے ہیں چولھا پھونکتے پھونکتے تمہارے چہرے کا رنگ متغیر ہو گیا ہے۔ آج حضور (ص کے پاس مال غنیمت میں بہت سی لونڈیاں آئی ہیں، جاؤ سرکارِ دو عالم (ص) سے ایک لونڈی مانگ لاؤ۔حضرت فاطمہ رض آپ (ص) کی خدمت میں حاضر ہوئیں لیکن شرم و حیا حرفِ مدعا زبان پر لانے میں مانع ہوئی۔پھر دونوں میاں بیوی خدمت میں حاضر ہوئے اپنی تکالیف بیان کیں اور ایک لونڈی کے لیے درخواست کی۔ آپ (ص) نے فرمایا
    " میں تم کو کوئی قیدی خدمت کے لیے نہیں دے سکتاابھی اصحاب صفہ کو خورد و نوش کا تسلی بخش انتظام مجھے کرنا ہے۔ میں ان لوگوں کے کیسے بھول جاؤں جنھوں نے اپنا گھر بار چھوڑ کر خدا اور خدا کے رسول (ص) کی خوشنودی کی خاطر فقر و فاقہ احتیار کیا ہے"

    علامہ شبلی نعمانی نے اس واقعہ کا خوب نقشہ کھینچاہے۔)

    افلاس سے تھا سیدہ پاک کا یہ حال
    گھر میں کوئی کنیز نہ کوئی غلام تھا
    گھس گھس گئی تھیں ہاتھ کی دونوں ہتھیلیاں
    چکی کے پیسنے کا جو دن رات کام تھا
    سینہ پر مشک بھر کے جو لاتی تھیں باربار
    گو نور سے بھرا تھا مگر نیل فام تھا
    اٹ جاتا تھا لباسِ مبارک غبار سے
    جھاڑو کا مشغلہ بھی ہر صبح شام تھا
    آخر گئیں جناب رسول خدا کے پاس
    یہ بھی کچھ اتفاق وہاں اذنَ عام تھا
    محرم نہ تھے جو لوگ تو کچھ کر سکیں نہ عرض
    واپس گئیں کہ پاس حیا کا مقام تھا
    پھر جب گئیں دوبارہ تو پوچھا حضور نے
    کل کس لئے تم آئی تھیں کیا خاص کام تھا
    غیرت یہ تھی کہ اب بھی نہ کچھ منہ سے کہ سکیں
    حیدر نے ان کے منہ سے کہا جو پیام تھا
    ارشاد یہ ہوا کہ غریبانِ وطن
    جن کا کہ صفہ نبوی میں قیام تھا
    میں ان کے بندوبست سے فارغ نہیں ہنوز
    ہر چند اس میں خاص مجھے اہتمام تھا
    جو جو مصیبتیں کہ اب ان پر گزرتی ہیں
    میں اس کا ذمہ دار ہوں میرا یہ کام تھا
    کچھ تم سے زیادہ مقدم تھا ان کا حق
    جن کو کہ بھوک پیاس سے سونا حرام تھا
    خاموش ہو کہ سیدہ پاک رہ گئیں
    جرات نہ کر سکیں کہ ادب کا مقام تھا
    یوں کی بسر ہر اہل بیت مطہر نے زندگی
    یہ ماجرائے دختر خیر الانام تھا

    کتاب :تذکارِ صحابیات' مؤلف: طالب ہاشمی

  2. #2
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Mississauga, Canada
    Posts
    35,213
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default Re: حضرت فاطمہ

    subanALLAH

  3. #3
    Join Date
    May 2010
    Location
    Karachi
    Age
    22
    Posts
    25,472
    Mentioned
    11 Post(s)
    Tagged
    6815 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474869

    Default Re: حضرت فاطمہ

    Walaikum Assalam
    JAZAKALLAh ....

  4. #4
    Join Date
    Jul 2010
    Location
    Karachi....
    Posts
    31,280
    Mentioned
    41 Post(s)
    Tagged
    6917 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474875

    Default Re: حضرت فاطمہ

    JazakALLAH khair

  5. #5
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default Re: حضرت فاطمہ

    Walaikumusalam

    Subhaan ALLAH

  6. #6
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    3,290
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    2597 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    541177

    Default Re: حضرت فاطمہ

    umda sharing
    jazak Allah khair

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •