Results 1 to 1 of 1

Thread: خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت


    110692 - خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت

    خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت
    امیرالمومنین حضرت فاروق اعظم رضی اللہ عنہ کے دور میں مثنی ابن حارثہ شیبانی رضی اللہ عنہ قادسیہ کی طرف روانہ ہوئے تو لشکر میں سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا بھی اپنے چار بیٹوں کے ساتھ شریک تھیں۔میدان جنگ میں لڑائی شروع ہونے سے ذرا پہلے سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا نے اپنے چاروں بیٹوں کو بلایا اور ان کو جہادوقتال کے لیے تیار کرنا شروع کیا۔انہوں نے اللہ کی راہ میں شہادت کا مقام و مرتبہ بیان کیا۔آئیے اس عظیم عورت نے اس نازک اور مشکل وقت میں اپنے بیٹوں سے جو خطاب کیا ،اور انہیں جو ایمان افروز نصیحت کی،اس کے ایک حصے کا مطالعہ کرتے ہیں۔انہوں نے کہا:
    "میرے پیارے بیٹو!تم مسلمان ہو اور اپنے پیارے رب کے اطاعت گزار ہو۔تم اپنی مرضی سے یہاں آئے ہو،زبردستی نہیں لائے گئے۔اس ذات کی قسم جس کے سوا کوئی معبود برحق نہیں! تم سب جس طرح ایک ماں کی اولاد ہو ویسے ہی ایک باپ کے بیٹے ہو۔میں نے تمہارے باپ کی خیانت نہیں کی،نہ اپنے بھائیوں کو رسوا کیا۔میں نے تمہارے حسب و نسب کو عیب دار نہیں ہونے دیا،اور نہ اس میں کوئی تبدیلی کی ہے۔تمہیں خوب معلوم ہے کہ اللہ رب العزت نے کافروں کے ساتھ لڑائی کرنے میں کتنا اجروثواب رکھا ہے۔سنو اور اچھی طرح سنو کہ آخرت کا گھر جو ہمیشہ رہنے کے لیے ہے اس فانی دنیا سے کہیں بہتر ہے۔اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں:
    يَٰٓأَيُّهَا ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ ٱصْبِرُوا۟ وَصَابِرُوا۟ وَرَابِطُوا۟ وَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ لَعَلَّكُمْ تُفْلِحُونَ
    ترجمہ: اے اہل ایمان (کفار کے مقابلے میں) ثابت قدم رہو اور استقامت رکھو اور مورچوں پر جمے رہو اور اللہ سے ڈرو تاکہ تم فلاح پاؤ۔(سورۃ آل عمران،آیت 200)۔

    کل جب صبح کا سورج طلوع ہو تو تم دشمن کے ساتھ لڑائی کے لیے کمربستہ ہو جاؤ اور دشمنان اسلام پر غلبہ حاصل کرواور ان پر فتح پاؤ۔اور جب تم دیکھو کہ لڑائی میں خوب گرمی اور تیزی آ گئی ہے اور جنگ کے شعلے بھڑک اٹھے ہیں تو پھر اس میں کود پڑو۔"
    پھر سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا کے چاروں بیٹے نہایت عزت و وقار اور ثابت قدمی کے ساتھ میدان جنگ میں کود پڑے اور تمام کے تمام شہید ہو گئے۔جب سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا کو ان کی شہادت کی خبر ملی تو فرمایا:
    الحمدللہ الذی شرفنی باستشھادھم وارجو من ربی ان یجمعنی بھم فی مستقر رحمته۔
    "اللہ ہی کا شکر ہے جس نے مجھے شہیدوں کی ماں بنایا اور ان کو شہادت کا شرف حاصل ہوا ۔میں اپنے رب سے یہ اُمید رکھتی ہوں کہ وہ مجھے جنت میں ان کے ساتھ اکھٹا کرے گا۔"
    (سنہری کرنیں ازعبدالمالک مجاہد)
    Last edited by *jamshed*; 08-10-2012 at 07:32 PM.

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •