Results 1 to 2 of 2

Thread: Ajeeb log

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default Ajeeb log

    عیدالاضٰحی کے دن قریب ہی تھے ۔گاؤں کے کافی لوگوں نے بیھڑ بکریاں اور گائے خرید لی تھی یعنی جس کے پاس جتنی گنجائش تھی ُاس نے ُاتنا ہی کام کیا ۔ مگر اکرم صاحب نے ابھی تک کچھ نہیں خریدا تھا ،گاؤں کے لوگ اکرم صاحب سے سے سوال پوچھتے کے اکرم صاحب کیا بات ہے
    اس بار قربانی کا کوئی ارادہ نہیں ہیں کیا۔مگر اکرم صاحب ہر کسی کوایک ہی جواب دیتے کے ابھی تو عید میں ایک ہفتہ ہے ،اتنی جلدی چیز لے کر کیا کرنی ہے ۔اور ویسے بھی میری بیگم کہتی ہے کے گھر میں پہلے ہی بہت گند ہوتا ہے اور پھر گائے یا بکری آنے سے اور بڑھ جائے گا ۔عید سے دو دن پہلے لے لو گا ۔اکرم صاحب کا یہ جواب ُسن کر کچھ تو مطمئن ہوجاتے اور کچھ سوچ میں پڑ جاتے۔
    خیر اگلے دن گاؤں کا ایک بہت ہی غریب آدمی رحیم چاچا اکرم صاحب کے پاس آیا ۔اور ُاس نے درخواست کی کہ میں نے اپنی بڑی بیٹی کی شادی کرنی ہے پیسوں کی کچھ کمی تھی اس لئے آپ سے دس ہزار روپے قرض چاہئے فصل کے کٹتے ہی سب سے پہلے آپ کو آپ کا قرض واپس کرونگا- اگر آپ مجھے اس مشکل گھڑی میں قرض دے دیں گے تو میں آپ کا عمر بھر شکر گزار رھوں گا
    اکرم صاحب نے ُاس کی بات سنی اور کہا کہ پیسے ہوتے تو میں گھر والوں کے لئے عید کی خریداری کرتا اور قربانی کا جانور لے لیتا۔ ابھی تک میں نے عید کے لیے کچھ نہیں لیا تو تمیہں کہاں سے قرض دوں۔
    رحیم چاچا نے یہ جواب ُسنا مذید کچھ نہ کہہ سکا اور چپ چاپ واپس چلا گیا ،دو دن کے بعد اکرم صاحب اپنے دوستوں کے ہمراہ بکرا لینے چلے گئے ،ُادھر جا کر کوئی بکرا پسند نا آیا تو بیس ہزار کی ایک گائے لے آئے ۔اور جب گائے لے کر گاؤں مں داخل ہوئے تو،ہر بندہ اکرم صاحب کی تعریف کر رہا تھا ،اکرم صاحب اپنی تعریف سُن کر بہت خوش ہوتے ۔
    رحیم چاچا نے بھی یہ منظر دیکھا۔ اور خاموشی سے سر جھکا کر روانہ ہو گیا۔
    کاش
    ہم قربانی کا مقصد سمجھ پائیں۔ اور زندگی میں اپنے مالک حقیقی کی رضا کو سامنے رکھتے ہوئے دوسرے انسانوں کے لئے بھی قربانی دینے کا جذبہ رکھ سکیں۔ کسی کے کام آنا بھی تو قربانی ہے چاہے وہ پیسے کی ہو یا وقت کی۔ جس معاشرے میں نمود و نمائش بڑھ جائے وہ لوگ رفتہ رفتہ سچ سے دور ہوتے جاتے ہیں۔ اور ایک دن ان کا جھوٹ معاشرے کا ناسور بن جاتا ہے۔

  2. #2
    Join Date
    May 2012
    Location
    UK
    Age
    27
    Posts
    82
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    109 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default re: Ajeeb log

    Thanks for sharing

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •