بیماری کا نام
زندگی ہے مختلف جذبوں کی ہمواری کا نام
آدمی ہے شلجم اور گاجر کی ترکاری کا نام
عِلم الماری کا ، مکتب چار دیواری کا نام
مِلٹن اِک لٹھا ہے ، مومن خان ، پنساری کا نام
صاف کالر کے تلے ، معقول اک اُجلی سی قمیض
ہے بہت ہی مختصر سا میری دُشواری کا نام
اُس نے کی پہلے پہل پیمائشِ صحرائے نجد
قیس ہے دراصل اِک مشہور پٹواری کا نام
عشق ہر جائی بھی ہو تو درد کم ہوتا نہیں
اک ذرا تبدیل ہو جاتا ہے بیماری کا نام
کوئی نصب العین ، کوئی عشق کوئی چاندنی ؟
زندگی ہے ورنہ اک مصرُوف بیکاری کا نام
مدتوں دُزدیدہ ، دُزدیدہ نظر سے دیکھنا
عشق بھی ہے اک طرح کی چور بازاری کا نام
مَیں نے تو اپنے لئے آوارگی تجویز کی
تم نے کیا رکھا ہے اپنی خود گرفتاری کا نام
بات تو جب ہے بدل جائے سرشت انسان کی
یُوں تو لکھ دینے کو لکھ دو اُونٹ پر لاری کا نام
دل ہو یا دلیہ ہو ، دانائی کہ بالائی ضمیر
زندگی ہے بعض اشیاء کی خریداری کا نام