Results 1 to 4 of 4

Thread: حضرت نظام الدین اولیا

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default حضرت نظام الدین اولیا




    مختصر حالاتِ زندگی:

    حضرت نظام الدین اولیاکی ولادت شہر بدایوں میں ماہ صفر ۶۳۱؁ ھ میں ہوئی۔آپ کا نام محمد بن احمد بن علی بخاری ہے۔ا؂ آپ کی کم سِنی ہی میں والد ماجد وصال فرماگئے۔تعلیم و تربیت کے لیے والدہ ماجدہ نے مدرسہ میں داخل کیاجہاں ابتدائی تعلیم حاصل کی۔مزید تحصیلِ علم کے لیے دہلی میں شمس الملک خواجہ شمس الدین خوارزمی کے سامنے زانوے تلمذ تہہ کیا۔علوم ظاہری میں مہارتِ تامہ حاصل کی اور علمی استعدادکی بنا پر ’’نظام الدین منطقی‘‘تو کبھی ’’نظام الدین اصولی‘‘اور کبھی ’’مقررِ محفل شکن‘‘ کے القاب سے پکارے جاتے۔ابتدائی زمانۂ طالبِ علمی ہی میں حریق المحبت برہان العاشقین فریدالحق و الدین سیدنا خواجہ فریدالدین مسعود گنج شکر علیہ الرحمہ کے روحانی فضائل وکمالات نے کشورِ دل کو فتح کرلیا تھا چناں چہ دہلی میں حصولِ تعلیم سے فراغت کے بعد تقریباً۲۰سال کی عمر میں اجودھن(پاک پٹن شریف)میں فریدِ وقت کی بارگاہ میں حاضر ہوئے۔اور اسی محفل میں شیخ فریدالدین نے یہ شعر پڑھا ؂
    اے آتش فراقت دلہا کباب کردہ
    سیلاب اشتیاقت جانہا خراب کردہ
    (تیری فرقت اور جدائی کی آگ نے کئی دلوں کو کباب کردیا اور تیرے شوق کی آگ نے کئی جانیں خراب کردیں)۲ ؂

    اپنی حاضری کا ذکر خود حضور محبوب الٰہی نے کیا ہے، لکھتے ہیں:
    ’’۶۵۵؁ھ رجب کی پندرہ تاریخ چہار شنبے کے دن مسلمانوں کے دعاگو اور سلطان الطریقت (حضرت فریدالدین گنج شکر)کے ایک مرید بندہ نظام الدین احمد بدایونی(یعنی حضرت سلطان المشایخ خواجہ نظام الدین اولیا)کو دولت پاے بوسی حضرت سیدالعابدین(بابافرید)حاصل ہوئی۔حضرت بابافرید نے کلاہ چار ترکی جو اس وقت ان کے سرِ مبارک پر تھی اتار کر اپنے ہاتھ میں لی اور دعاگو(حضرت نظام الدین )کے سر پر رکھ دی اور خرقہ خاص اور چوبی نعلین(یعنی کھڑاویں)عطا فرمائیں۔الحمدﷲ علیٰ ذالک!

    نیز ارشاد فرمایا کہ مَیں ہندستان کی ولایت کسی دوسرے کو دینی چاہتا تھا مگر تم راستے میں تھے اور دل میں ندا ہوئی کہ صبر سے کام لیا جائے نظام الدین احمد بدایونی پہنچتا ہے، یہ ولایت اس کی ہے۔اس کو دینا۔یہ دعاگو یہ کلمات سن کر کھڑا ہوگیا اور اشتیاق زیارت کی بابت کچھ کہنا چاہتا تھا ، مگر حضور شیخ الاسلام کی اتنی دہشت طاری ہوئی کہ کچھ کہہ نہ سکا۔حضرت شیخ الاسلام نے حالت معلوم کر لی اور فوراً یہ الفاظ ان کی زبانِ مبارک پر آئے کہ بے شک تمہارے دل میں اشتیاق تھا اور یہ بھی فرمایاکہ ’’ہر داخل ہونے والے کے لیے دہشت ہوتی ہے۔‘

  2. #2
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Jadoo Nagri
    Posts
    19,713
    Mentioned
    198 Post(s)
    Tagged
    8340 Thread(s)
    Thanked
    10
    Rep Power
    21474862

    Default Re: حضرت نظام الدین اولیا


  3. #3
    Cute PaRi's Avatar
    Cute PaRi is offline ♥Häppïnëss ïs Süċċëss♥
    Join Date
    Sep 2012
    Location
    ♥ündër möthër's fëët♥
    Posts
    9,560
    Mentioned
    132 Post(s)
    Tagged
    9855 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    1533321

    Default Re: حضرت نظام الدین اولیا

    jazak ALLAH khair

  4. #4
    Join Date
    Apr 2012
    Location
    Karachi/Lahore Pakistan
    Posts
    12,439
    Mentioned
    34 Post(s)
    Tagged
    9180 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    249126

    Default Re: حضرت نظام الدین اولیا

    jazak ALLAH khair

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •