Results 1 to 9 of 9

Thread: Noshi Gillani

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default Noshi Gillani


    نوشی گیلانی

    نوشی گیلانی پاکستانی کی اردو زبان کی ایک معروف شاعرہ ھیں آج 14 مارچ ان کی سالگرہ کا دن ھے ۔

    تاریخ پیدائش : 14 مارچ 1964

    نوشی گیلانی پاکستان کی اردو زبان کی ایک معروف شاعرہ ھیں ان کی شاعری کی پانچ کتب منظر عام پر آ چکی ھیں جن کو ادبی حلقوں میں بیحد سراھا گیا ھے ۔
    نوشی گیلانی 14 مارچ 1964 کو بہاولپور میں پیدا ھوئیں ۔آپ نے بہاولپور یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی ۔ آپ 1985 سے سان فرانسسکو (امریکہ) میں مقیم تھیں 2008 میں اسٹریلیا میں مقیم اردو زبان کے شاعر سعید خان سے شادی کے بعد اسٹریلیا منتقل ھو گئیں ۔ اور سڈنی میں رھائش اختیار کر لی ۔
    نوشی گیلانی کی پاکستان کی نوجوان نسل اور خواتین کی ایک نمائندہ شاعرہ کے طور پر پاکستان اور بیرون ممالک میں ایک معروف پہچان ھے ۔ 2008 مین ان کی شاعری کے انگلش میں تراجم کئیے گئیے ۔اور یوکے کے عالمی ترجمہ سنٹر جہاں دنیا بھر کے مختلف شاعروں کے شاعری تراجم کا مرکز ھے میں ان کی شاعری کو پڑھا گیا ۔ نوشی گیلانی نے اسٹریلیا کے عظیم شاعر لیس مرے کی شاعری کا اردو زبان میں ترجمہ بھی کیا ھے ان کا یہ کام اسلام آباد سے شائع ھونے والے ایک ادبی میگزین کے 2011 کے ایڈیشن میں شائع ھو چکا ھے ۔ انہیں لوک گلوکار پٹھانے خان کے اعزاز میں منعقدہ ایک تقریب کی میزبانی کا بھی شرف حاصل ھے جو کہ پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس نے سپانسر کی تھی ۔2009 میں سڈنی اسٹریلیا میں انہوں نے اردو اکیڈمی کی بنیاد رکھی ۔ جہاں اردو شاعری اور ادب کے فروغ کیلئیے ماھانہ نشستیں منعقد ھوتی ھیں ۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کتابیات
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    محبتیں جب شمار کرنا ۔ شاعری 1993
    اداس ھونے کے دن نہیں ۔ 1997
    پہلا لفظ محبت لکھا ۔ 2003
    منتخب نظمیں
    ھم ترا انتظار کرتے رھے ۔ 2003
    نوشی گیلانی کی نظمیں ۔ 2008
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    منتخب کلام
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    گریز شب سے سحر سے کلام رکھتے تھے
    کبھی وہ دن تھے کہ زلفوں میں شام رکھتے تھے

    تمھارے ہاتھ لگے ہیں تو جو کرو سو کرو
    وگرنہ تم سے تو ہم سو غلام رکھتے تھے

    ہمیں بھی گھیر لیا گھر کے زعم نے تو کھلا
    کچھ اور لوگ بھی اس میں کلام رکھتے تھے

    یہ اور بات ہے ہمیں دوستی نہ راس آئی
    ہوا تھی ساتھ تو خوشبو مقام رکھتے تھے

    نجانے کون سی رت میں بچھڑ گئے وہ لوگ
    جو اپنے دل میں بہت احترام رکھتے تھے

    وہ آتو جاتا کبھی ہم تو اس کے رستوں پر
    دیئے تو جلائے ہوئے صبح و شام رکھتے تھے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کوئی موسم ہو وصل و ہجر کا
    ہم یاد رکھتے ہیں
    تری باتوں سے اس دل کو
    بہت آباد رکھتے ہیں

    کبھی دل کے صحیفے پر
    تجھے تصویر کرتے ہیں
    کبھی پلکوں کی چھاؤں میں
    تجھے زنجیر کرتے ہیں
    کبھی خوابیدہ شاموں میں
    کبھی بارش کی راتوں میں

    کوئی موسم ہو وصل و ہجر کا
    ہم یاد رکھتے ہیں

    تری باتوں سے اس دل کو
    بہت آباد رکھتے ہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کبھی ہم بھیگتے ہیں چاہتوں کی تیز بارش میں
    کبھی برسوں نہیں ملتے کسی ہلکی سی رنجش میں

    تمہی میں دیوتاؤں کی کوئی خُو بُو نہ تھی ورنہ

    کمی کوئی نہیں تھی میرے اندازِ پرستش میں

    یہ سوچ لو پھر اور بھی تنہا نہ ہو جانا
    اُسے چھونے کی خواہش میں اُسے پانے کی خواہش میں
    بہت سے زخم ہیں دل میں مگر اِک زخم ایسا ہے
    جو جل اُٹھتا ہے راتوں میں جو لَو دیتا ہے بارش میں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    محبت کی اسیری سے رہائی مانگتے رہنا
    بہت آساں نہیں ہوتا جدائی مانگتے رہنا

    ذرا سا عشق کر لینا،ذرا سی آنکھ بھر لینا
    عوض اِس کے مگر ساری خدائی مانگتے رہنا

    کبھی محروم ہونٹوں پر دعا کا حرف رکھ دینا
    کبھی وحشت میں اس کی نا رسائی مانگتے رہنا

    وفاؤں کے تسلسل سے محبت روٹھ جاتی ہے

    کہانی میں ذرا سی بے وفائی مانگتے رہنا

    عجب ہے وحشت ِ جاں بھی کہ عادت ہو گئی دل کی
    سکوتِ شام ِ غم سے ہم نوائی مانگتے رہنا
    کبھی بچے کا ننھے ہاتھ پر تتلی کے پر رکھنا
    کبھی پھر اُس کے رنگوں سے رہائی مانگتے رہنا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    سبھی جذبے بدلتے جا رہے ہیں
    کہ جیسے خواب مرتے جا رہے ہیں

    کوئی دن کے لیئے دل کے مکیں کو
    نظر انداز کرتے جا رہے ہیں


    جو دل کا حال ہے دل جانتا ہے

    بظاہر تو سنبھلتے جا رہے ہیں

    چلے تو ہیں تمہارے شہر سے ہم
    کفِ افسوس مَلتے جا رہے ہیں
    کبھی جن میں غرور ِ تازگی تھا
    وہ خد و خال ڈھلتے جا رہے ہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ہجر کی بد دعا نہ ہو جانا
    دیکھ لینا،سزا نہ ہو جانا

    موڑ تو بے شُمار آئیں گے
    تھک نہ جانا،جُدا نہ ہو جانا


    عشق کی انتہا نہیں ہوتی

    عشق کی انتہا نہ ہو جانا

    آخر شب اُداس چاند کے ساتھ
    ایک بُجھتا دِیا نہ ہو جانا

    بے ارادہ سفر پہ نکلے ہو
    راستوں کی ہَوا نہ ہو جانا


    زندگی درد سے عبارت ہے
    زندگی سے خفا نہ ہو جانا
    اِک تمہی کو خدا سے مانگا ہے
    تم کہیں بے وفا نہ ہو جانا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔



    اِک پشیماں سی حسرت سے مجھے سوچتا ہے
    اب وہی شہرِ محبت سے مجھے سوچتا ہے

    میں تو محدود سے لمحوں میں ملی تھی اُس سے
    پھر بھی وہ کتنی وضاحت سے مجھے سوچتا ہے


    جس نے سوچا ہی نہ تھا ہجر کا مُمکن ہونا
    دُکھ میں ڈوبی ہوئی حیرت سے مجھے سوچتا ہے

    میں تو مر جاؤں اگر سوچنے لگ جاؤں اُسے
    اور وہ کتنی سُہولت سے مجھے سوچتا ہے

    گرچہ اب ترکِ مراسم کو بہت دیر ہوئی
    اب بھی وہ میری اجازت سے مجھے سوچتا ہے

    کتنا خوش فہم ہے وہ شخص کہ ہر موسم میں
    اِک نئے رُخ، نئی صورت سے مجھے سوچتا ہے





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  2. #2
    Join Date
    Dec 2010
    Location
    Sky
    Age
    25
    Posts
    10,789
    Mentioned
    28 Post(s)
    Tagged
    4384 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474853

    Default Re: نوشی گیلانی

    ahan,,,,
    اِک تمہی کو خدا سے مانگا ہے
    تم کہیں بے وفا نہ ہو جانا
    wah..........


  3. #3
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default Re: نوشی گیلانی

    Happy Birthday Noshi Gilani ji

    eq2hdk - Noshi Gillani

  4. #4
    Join Date
    Feb 2009
    Location
    City Of Light
    Posts
    26,767
    Mentioned
    144 Post(s)
    Tagged
    10310 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474871

    Default Re: نوشی گیلانی

    vry nice



    3297731y763i7owcz zps9ed156a3 - Noshi Gillani

    MAY OUR COUNTRY PROGRESS IN EVERYWHERE AND IN EVERYTHING SO THAT THE WHOLE WORLD SHOULD HAVE PROUD ON US
    PAKISTAN ZINDABAD











  5. #5
    Join Date
    Jul 2010
    Location
    Karachi....
    Posts
    31,280
    Mentioned
    41 Post(s)
    Tagged
    6917 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474875

    Default Re: نوشی گیلانی

    bht hi zbrdast shayri hoti in ki


    Ik Muhabbat ko amar karna tha.....

    to ye socha k ..... ab bichar jaye..!!!!


  6. #6
    Join Date
    Sep 2012
    Location
    Bermuda Triangles
    Posts
    3,039
    Mentioned
    3 Post(s)
    Tagged
    3495 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    9

    Default Re: نوشی گیلانی

    thanks for info

    noshi ji ne itna late shadi ki?
    viper siggi - Noshi Gillani

  7. #7
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    pakistan
    Age
    27
    Posts
    212
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    3723 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    7

    Default Re: نوشی گیلانی

    thanks for info
    2q15s06 - Noshi Gillani

  8. #8
    Join Date
    Apr 2012
    Location
    Karachi/Lahore Pakistan
    Posts
    12,439
    Mentioned
    34 Post(s)
    Tagged
    9180 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    249126

    Default Re: نوشی گیلانی

    very nice

  9. #9
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default Re: نوشی گیلانی

    Thanks 4 Sharing
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •