Results 1 to 2 of 2

Thread: پہاڑ جیسی رات

  1. #1
    Join Date
    May 2012
    Location
    lhr
    Age
    35
    Posts
    227
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    188 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    6

    Default پہاڑ جیسی رات


    نجانے کون خلا کے یہ استعارے ھیں
    تمہارے ہجر کی گلیوں میں گونجتے ھوئے دن

    نہ آپ چلتے ، نہ دیتے ہیں راستہ ہم کو
    تھکی تھکی سی یہ شامیں یہ اونگھتے ھوئے دن

    پھر آج کیسے کٹے گی پہاڑ جیسی رات
    گزر گیا ھے یہی بات سوچتے ھوئے دن

    تمام عمر مرے ساتھ ساتھ چلتے رھے
    تمہی کو ڈھونڈتے تم کو پکارتے ھوئے دن


    ہر ایک رات جو تعمیر پھر سے ھوتی ھے
    کٹے گا پھر وھی دیوار چاٹتے ھوئے دن

    مرے قریب سے گزرے ھیں بار ھا امجد
    کسی کے وصل کے وعدے کو دیکھتے ھوئے دن
    Merey jaisi aankhon walay jab Sahil per aatay hain
    lehrain shor machati hain, lo aaj samandar doob gaya

  2. #2
    taqwimulhaq's Avatar
    taqwimulhaq is offline ابتِ يوسف و محمود
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    Peshawar
    Age
    37
    Posts
    1,040
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    1903 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    9

    Default Re: پہاڑ جیسی رات

    خوب

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •