Results 1 to 6 of 6

Thread: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66


    آرٹ بک والڈ کی موت اس کی زندگی سے زیادہ دلچسپ تھی ۔ فروری 2006 میں اس کے دونوں گردے فیل ہو گئے اور وہ ہفتے میں تین دن ڈایالیسس کرانے لگا، وہ ڈایا لیسس سے بور ہو گیا ، لہذٰا اس نے مرنے کا فیصلہ کیا ۔

    امریکہ میں دو قسم کے طبی مراکز ہوتے ہیں، پہلی قسم کے مرکز کو ہاسپٹل کہتے ہیں جبکہ دوسری قسم ہوسپس کہلاتی ہے-

    ہوسپس میں علاج سے مایوس مریض داخل ہوتے ہیں ۔ ہوسپس میں داخل مریضوں کا علاج نہیں کیا جاتا -

    ڈاکٹر مریض کو ایک شاندار کمرے میں لٹاتے ہیں اور اس پر خواہشوں کے دروازے کھول دیتے ہیں ، وہ جو چاہتا ہے کھاتا ہے ، جس سے چاہتا ہے ملتا ہے، کوئی شخص اسے منع نہیں کرتا- یوں مریض ساری خواہشیں پوری کر کے فوت ہو جاتا ہے-

    آرٹ بک والڈ نے فروری میں ڈایالیسس بند کرایا اور ہوسپس چلا گیا - اس کے اس اقدام نے اس کی شہرت میں اضافہ کر دیا - امریکہ کے تقریباَ تمام اخبارات، رسائل اور ٹیلی ویژن چینلز نے اسے خصوصی جگہ دی-

    ڈاکٹروں کا خیال تھا وہ دو تین ہفتوں میں انتقال کر جائے گا لیکن قدرت کا کمال دیکھئے وہ نہ صرف زندہ رہا بلکہ اس کے گردوں نے بھی کام کرنا شروع کر دیا -

    وہ دو تین ماہ بعد ہوسپس سے نکلا اور معمول کے مطابق کالم لکھنے لگا ، امریکہ کے ڈاکٹر اس معجزے پر حیران تھے-

    لیکن میرا خیال تھا آرٹ بک والڈ کو اس کی "عبادت " نے زندہ رکھا تھا - وہ ان غریبوں، ناداروں اور مریضوں کی وجہ سے زندہ رہا جن کی خدمت کو وہ عبادت سمجھتا تھا -

    یہ آرٹ بک والڈ 18 جنو ری 2007 کو فوت ہو گیا ، اس کے انتقال کے وقت اس کا بیٹا جیول اور اس کی بہو اس کے پاس تھے-

    جیول بک والڈ نے میڈیا کو بتایا ، میرے والد نے مرنے سے پہلے اپنے چاہنے والوں کو پیغام دیا " ہمیشہ عاجز اور دستیاب رہو"

    میں نے آرٹ بک والڈ کا یہ پیغام پڑھا تو میں بے اختیار ہنس پڑا - یہ فقرہ میرے بابے نے آرٹ بک والڈ کو دیا تھا ،

    میں نے 2001 میں آرٹ بک والڈ کو بتایا تھا، ہمارے ایک سپرچیول سکالر ہیں ، بابا جی ، آپ اور بابا جی کے خیالات بہت ملتے ہیں ، وہ کہا کرتے تھے- " اللہ کی عبادت انسانوں کی خدمت سے شروع ہوتی ہے۔"

    آرت بک والڈ نے قہقہہ لگایا اور ہاتھ رگڑ کر بولا " بابا جی اور کیا کہتے ہیں؟"

    میں نے مسکرا کر جواب دیا " وہ کہتے ہیں صوفی کی دو نشانیاں ہوتی ہیں ، وہ زمین کی طرح عاجز اور ہوا کی طرح دستیاب ہوتا ہے ۔"

    آرٹ بک والڈ یہ سن کر خاموش ہوا اور تھوڑی دیر سوچ کر بولا " ہاں انسان کو ہمیشہ عاجز اور دستیاب ہونا چاہئے ۔"

    جاوید چودھری، زیرو پوائنٹ 3 ، صفحہ 66





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  2. #2
    Join Date
    Dec 2010
    Location
    Sky
    Age
    25
    Posts
    10,789
    Mentioned
    28 Post(s)
    Tagged
    4384 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474853

    Default re: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66

    bilkul nice shairing


  3. #3
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    k, s, a
    Posts
    14,631
    Mentioned
    215 Post(s)
    Tagged
    10286 Thread(s)
    Thanked
    84
    Rep Power
    1503265

    Default re: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66


  4. #4
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    China
    Posts
    4,833
    Mentioned
    29 Post(s)
    Tagged
    9237 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    21474847

    Default re: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66

    bht nice sharing
    Zindagi tu apnay he qadmun pe chalti hay Faraz
    Auron k Sahary tu Janazy utha kartay hain

  5. #5
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default re: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66

    nice shairing

  6. #6
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default re: Javed Chaudhary,Zero Point 3,Safah 66

    aapp sabb kaa shukriuyaa





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •