Results 1 to 2 of 2

Thread: (Muhammad Yahya Khan_Kajal Kotha_Safah Number 212)

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default (Muhammad Yahya Khan_Kajal Kotha_Safah Number 212)


    اِس جہانِ آب و گِل میں کچھ منظر، نظارے ایسے بھی ہوتے ہیں جو دونوں آنکھوں سے دیکھنے پہ بھی واضح نہیں ہوتے۔ انہیں کماحقہ طور پہ جاننے سمجھنے کے لئے کسی تیسری آنکھ کی ضرورت پڑتی ہے۔۔اس سے آگے بڑھو تو جانو کہ کئی حقیقتیں تو تب بھی اپنی گیرائی کی گِرہیں نہیں کھولتیں۔ اس مقام پہ ظاہری بصارت ماند پڑ جاتی ہے۔ عقل کی گواہیاں ختم۔۔۔علم و اِدراک کی کھڑکیاں جھروکے بند۔۔۔ اَب جہاں سے کشف، مراقبہ، دھیان اور جذب وغیرہ کی منزلیں شروع ہو جاتی ہیں۔ تم دونوں بچّے بھی دوسرے لوگوں کی طرح دین و دنُیا کو دیکھنے کے لیے اپنی ظاہری آنکھ استعمال کرتے ہو۔۔۔جو صرف مدِمقابل کا دھندلا سا عکس دکھاتی ہے۔ اس کے باطن بھِیتر تک پہنچانا اس کے بس کی بات نہیں۔

    (مُحمد یحیٰی خان۔ کاجل کوٹھا۔صفحہ نمبر۲۱۲)





    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  2. #2
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default re: (Muhammad Yahya Khan_Kajal Kotha_Safah Number 212)

    bohat umda

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •