Results 1 to 7 of 7

Thread: Writer Club Competition September 2013

  1. #1
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    836 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    candel Writer Club Competition September 2013



    Bhot Ursey Bad aj main yaha ka comp lagane lagi hon..or main tu jab bhi comp lagaon..mera dil chahta hai Mohabbat ki he baat ki jaye..Mohabbat ko he parha jaye...Mohabbat ko he likha jaye..tu aj bhi mere lafzon main,,meri rooh main Mohabbat he hai...or hamesha rahey gi jab tak main hon...tu app ko Mohabbat per he apney dil ka hal biyan karna hia...apney lafzon main...app ki khoubsurat tehreron ka intizar rahe ga..

    Rules:


    Ek member ek hi baar share karay ga
    Same aur edit sharing accept nhi hogi
    Last date 20/09/13 hai
    Winner 50% poll aur 50% admins decide karen gy
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  2. #2
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    836 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default Re: Writer Club Competition September 2013

    Mohabbat1SD zps74eea3b4 - Writer Club Competition September 2013
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  3. #3
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    k, s, a
    Posts
    14,631
    Mentioned
    215 Post(s)
    Tagged
    10286 Thread(s)
    Thanked
    84
    Rep Power
    1503265

    Default Re: Writer Club Competition September 2013

    Pre44 zps4b318b5d - Writer Club Competition September 2013
    Pre44b zps97b2cc52 - Writer Club Competition September 2013

  4. #4
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    836 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default Re: Writer Club Competition September 2013

    v nice attaia .. bhot acha laga parh ker...mohabbat ko aise he nazr se sub dekhny lag jaye tu kiya he baat hojaye..
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  5. #5
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    ممہ کہ دل میں
    Posts
    40,298
    Mentioned
    32 Post(s)
    Tagged
    4710 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474884

    Default Photobucket


    محبت

    نا جانے کیوں محبت کے نام سے ہی دل غم سے چور چور ہوجاتا ہے ۔ ہونی ان ہونی کے فلسفے سمجھ نہیں پاتا ۔ سنا تھا محبت مقدر
    سے ملتی ہے۔ اور خوش نصیب لوگوں کو ہی تو میں اپنی بدقسمتی کا شکوہ آنسوؤں سے کرتے ہوئے ماضی کی تلخ یادوں میں محبت کی حامی بھرتے ہوئے یہی کہتی ہو، آہ ! اس عذاب کا نام کیا واقعی محبت ہے ۔۔۔؟ دل ماننے سے کتراتا ہے نہیں نہیں محبت کا چہرہ اتنا بھیانک نہیں ہوتا ۔۔۔جو میں نے دیکھا تھا ! پتہ نہیں کیوں اس ایک لفظ نے میری طرح کئی لوگوں کی زندگی میں درد کے رنگ بھر دئے ۔ نام نا لیں کوئی اس بے وفا محبت کا ۔نفرت سی ہونے لگی ہے مجھے اس کہ نام سے میری اس کیفیت کی ذمہ دارا محبت ہی تو ہے ۔کسی کو آبا د کرنا اس محبت نے سیکھا ہی نہیں بڑی عجیب شئے ہے یہ محبت آہ اے کاش اس کا مفہوم مجھے سمجھ میں آجائے ۔ میرے لئے تو یہ صرف عذاب ہے عذاب ۔۔۔ جس صاف اور پاک مخلص دل سے میں نے اسے بسایا تھا شاید ہی کوئی اس کی طاہرت کو سمجھتا ۔ نفرت سے محبت کا ذکر کرتے ہوئے میں سرخ آنکھوں سے ماضی کے صفحوں کو اپنی پلکوں سے پلٹ پلٹ کر محبت کوسارا لوم دے رہی تھی ،کہ مححبت ایک عذاب کے سوا کچھ نہیں ہے سب سے پہلے تو مجھے اسے ہی مار دینا ہے نا دل سے ، نااس کا اوجود رہے گا نا یہ احساس ۔۔ سارے رشتوں کو موت دینے کے لئے ہی شاید ملی تھی مجھے محبت
    یا اللہ تعالی کتنا دکھ دیتی یہ محبت تیری اس دنیا کے لوگوں نے تو اسے کھیل تماشا بنا دیا سینہ تان کر ہر بے وفا محبت کی دہایئ دیتا ہے اسے حاصل کرنا ضد بن جاتی ہے اور اس سے بے وفائی کرنا شوق ب گیا ہے ۔ محبت کی دہائی دینے والوں نے کیوں اس کی توہین کی آج محبت لبا س کی طرح بدلنے والا یہ انسان کتنوں سے محبت کرتا ہے ۔۔۔؟ دل روتے ہوئے آج تجھ سے یہی مانگتا ہے یا اللہ تعالی مجھے اس محبت کا مفہوم سمجھنا ہے کیا واقعی محبت نام جیسی شئے تیری اس دنیا میں ملتی ہے کیاچیز ہے یہ محبت مجھے بتا دے میرے رب تاکہ میں اس عذاب سے نجات پا سکوں ۔


    کئی دفعہ امی کی مسلسل آواز سن کر میں چونک گئی اس کیفیت میں امی کھانا کے لئے بلا رہی تھی کے بیٹا کھانا کھانے آجا ۔۔ اس کیفیت میں میرے لئے ایک لقمہ بھی زہر کی مانند تھا کیسے کھاتی ۔؟ بڑی مشکل سے یہ کہہ پائی آپ کھا لے مجھے ابھی بھوک نہیں میں بعد میں کھا لوں گی ۔۔ امی کچھ دیر بعد آککر کہتی ہے میں کچھ دیر آرام کرلوں تیرے حصے کا یہ رہا کھانا تو کھا لینا۔

    میں کچھ دیر کھانے کی طرف ضد سے گھورتی رہی ۔۔ اففف یہ کھانا پلیٹ کی طرف گھور گھور کر دیکھتے ہوئے ایک لقمہ نہیں کھانا مجھے۔ بھوک سے بھلے مر کیوں نا جاؤ بے تکی بک بک سے اب سارا غصہ کھانے کو دیکھتے ہوئے بولی جارہی تھی ، یہ زندگی بھی کوئی زندگی ہے ۔۔؟ کھائے ہئے سوئے بغیر مکمل ہی نہیں ہوتی ۔ پلیٹ کو پچھے کرتے ہوئے سنا تونے مجھے نہیں کھانا تجھے روز روز کھا کھا کر اُکتا گئی ہوں ، میں روز روز تجھے پکاؤ اور کھاؤ اففف پڑا رہ اے کھانا تو یہی میں چلی اور بھی کام ہےدنیا میں کھانے کے سوا۔ اتنے میں پھر سے امی کی آواز سنائی دیتی ہے بیٹا جلدی کھانا کھا کر دادی کو چائے بنا دینا رزق کو اتنی دیر نہیں روکتے جلدی کھا لے ۔۔
    اففف آج تو امی نے میرا پچھا ہی نہیں چھوڑنا کچھ دیر کھانا میری طرف اور میں اس کی طرف دیکھتے ہوئے غصہ سے لال پیلی بیٹھی رہی پھر خالی پیٹ سے آوازیں آنے لگی تو مجبوراً کھانے کی طرف بڑھی ایک لقمہ ہی بنائی تھی کہ باہر سے کسی فقیر کی درد بھری آواز سنائی دی کل سے بھوکا ہو ، ہے کوئی اس فقیر کو کھانا کھلانے والا ، ہے کوئی اس غریب کو دو نوالہ کھلانے والا ۔مجھے لگا جیسے واقعی اس کھانے کی ضرورت اس فقیر بابا کو شدت سے ہے میں نے فوراً پلیٹ اٹھا کے انھیں آواز دی اور کہا اے لو بابا آپ کھالو ۔ میں دیکھتے ہی رہ گئی کہ کس طرح اس غریب نے کھانے کی طرف جھنپٹ کر نوالے لینا شروع کیا کہ واقعی بہت بھوکا تھا وہ میرے دل سے ایک دم سے آہ نکلی اور میں نے کہا اور بھی غم ہے زمانے میں محبت کے سوا ۔اتنے میں ایک پڑوس کا بچہ بھاگتے ہوئے آیا اور مجھ سے لپٹ گیا آپا مجھے بچاؤ وہ کتا میرا پچھا کر رہا ہے ، یہ زخمی پرندہ ہے میں اسے وہاں سے اٹھا لیا ۔۔ تب سے یہ میرے مچھے ہے ، آپا اسے یہا ں سے بھگاؤ مجھے ڈر لگ رہا ہے اس سے ،اور میرے اس پرندہ کے لئے جلدی سے مرہم لاؤ۔ میں اسے حوصلہ دیتے ہوئے ارے ڈر مت میں ہونا چل اندر اسے مرہم لگاتے ہے اور اسے میں بچی ہوئی ہڈیاں دے دیتی ہو شاید بھوکا ہو ، میں نے ہڈیاں اسے دے کر پرندہ پر ہلدی لگا کر پٹی باندھ دی اور اس بچہ کو کہا آرام سے میرے کمرے میں بیٹھے ۔ بابا نے کھانا کھانے کی بعد مجھے دعایئں دی اور میرے سر پر ہاتھ رکھ کر کہا واقعی ہم جیسے غریبوں کہ لئے بھوک سے بڑا کوئی غم نہیں تیرا لقمہ میں نے دیکھا تونے اپنے حصے کا کھانا اس غریب کو کھلا دیا ایسی محبت تو سخی لوگوں کو ہی ملتی ہے پھر کیوں مایوس اور اداس ہے تو بیٹا ۔۔ ؟ بابا میں محبت کی سخی کیسے ہوسکتی ہو ۔۔ ؟ میرا تو دامن ہی خالی ہے اس محبت سے ، بابا محبت آج کی دنیا میں سب کو نصیب نہیں ہوتی بابا اسے حاصل کرنے کی امید بھی نہیں رہی میرے پاس اب ۔ بیٹا محبت کو نفس پرستی میں لیکر تو جو کہہ رہی ہے وہ خواہشات کی پیروی کرنے والی خود غرض محبت ہے جو صرف تجھے اپنی نفس کا آیئنہ دیکھا رہی ہے ۔ بیٹا تو اپنے ظاہر سے نکل کر اپنے باطن کی طرف دیکھ تو سچی محبت کا ساگر بسا ہے تجھ میں محبت وہ نہیں جو تو چاہتی ہے محبت وہ ہے جو تو سب سے کرتی ہے ۔اپنے لئے جئے تو کیا جئے جینا تو اسی کا نام ہے جو دوسروں کے لئے جی سکے اور جو انسان دوسروں کے لئے جیتا ہے اور اس کی ضرورتوں کو اور درد کو سمجھتا ہے اس کا دامن محبت سے خالی کیسے ہو سکتا ہے ۔۔؟ بس محبت کو نفس پرستی سے ہٹا کر دیکھ تو محبت تیرے ارد گرد ملے گی جو تیرے اپنے ہے اس محبت کےمستحق ہیں ۔ کسی ایک انسان کی وجہ سے اتنے ساروں کا حق کیا تو مار سکے گی ؟ بیٹا جب تو نفس پرستی سے نکل کر اس عظیم محبت کی طرف دیکھے گی جس کی ضرورت اس بچہ کو اس جانور کو مجھ فقیر کو ہے تیری محبت ہی تو تھی جو تونے گرے ہوئے زخمی پرندہ کو مرہم لگایا مجھے اپنا کھانا کھلایا اور اس بچہ کہ آنسو پونچھ کر گلے لگایا ۔ بیتا بہت کم لوگ ہوتے ہے جو ایسا جذبہ ء رکھتے ہیں ۔ تو اپنی محبت کو اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کا خیال رکھ کر درد سمجھ کر بانٹ دے یہی اصل محبت کا مفہوم ہے جو اپنی خوشی کے لئے نہیں دوسروں کی خوشی کے لئے کی جائے ایسی عظیم محبت گر انسان کرنے والی پگلی کو ہی محبت کا مفہوم نہیں پتہ حیریت ہے دعایئں دیتے ہوئے وہ بابا چلے گئے ۔

    اور جب میں نے نفس پرستی کہ سائے ہٹا کر میرے اپنوں کی طرد دیکھا جنھیں میری ضرورت ہیں ۔ تو محبت کی عظمت سمجھ آئی واقعی انسان گر دوسروں کی خوشی میں خوش رہے اور اپنے لئے نہیں دوسروں کے لئے جئے تو کیا ہی محبت اپنی مثال کہلاتی ہے ۔ بہت ضرورت ہے ایسی محبت کی انسانیت کو ہر مظلوم کو ہر غریب کو ہر زخمی لاچار کو ہر ضرورت مندوں کو اے اللہ تعالی تیری لاکھ لاکھ شکر گزار ہو تونے مجھے محبت کاصیحیح مفہوم بتا دیا ۔ دوسرے دن میں نے امی کے لئے کھانا پروسا اور ضد کرکے انھیں ایک ایک لقمہ اپنے ہاتھوں سے کھلایا تو میری محبت میری ماں کی مسکراہٹ بن گئی اور وہ مسکراتے ہوئے وہ کہنے لگی بیٹا ہمیں تیری اسی محبت کی ضرورت تھی ۔ہمیشہ یونہی سب کو لیکر سب کا سوچ کر چلنا محبت اسی کا نام ہے محبت بہت نایاب شئے ہے اسے انسان نفس پرستی میں ڈھونڈے تو بھٹک جاتا ہے ، اور خواہشوں کہ تناؤ میں دب کر ہمیشہ مایوس ہی رہتا ہے ۔ محبت وہ نہیں جو انسان خود کے لئے حاصل کرنے کی ضد کرے محبت وہ ہے جو انسان دوسروں کے لئے جئے ان سے کریں ان کی ہر چھوٹی چھوٹی اور بڑی سی بڑی خوشیوں کو سمیٹ کر انھیں دیں دے اے اللہ مجھے محبت کی صیحیح پہچان عطا کرنے کے لئے تیرا شکریہ اے میرے رب مجھے اتنا حوصلہ دے کے میں خود کو بھولا کر میرے اپنوں کی خوشی کے لئے اپنی زندگی کی ہر خوشی وار دوں اور نفس پرستی کو بھولا کر اس پاکیزہ محبت سے پوری وفا کروں ۔۔۔ آمین ۔۔

    رایئٹر ۔۔۔ ریشم


  6. #6
    Join Date
    Jul 2011
    Location
    Karachi Pakistan
    Posts
    13,592
    Mentioned
    62 Post(s)
    Tagged
    7109 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    21474856

    Default Re: Photobucket

    Quote Originally Posted by *resham* View Post

    محبت

    نا جانے کیوں محبت کے نام سے ہی دل غم سے چور چور ہوجاتا ہے ۔ ہونی ان ہونی کے فلسفے سمجھ نہیں پاتا ۔ سنا تھا محبت مقدر
    سے ملتی ہے۔ اور خوش نصیب لوگوں کو ہی تو میں اپنی بدقسمتی کا شکوہ آنسوؤں سے کرتے ہوئے ماضی کی تلخ یادوں میں محبت کی حامی بھرتے ہوئے یہی کہتی ہو، آہ ! اس عذاب کا نام کیا واقعی محبت ہے ۔۔۔؟ دل ماننے سے کتراتا ہے نہیں نہیں محبت کا چہرہ اتنا بھیانک نہیں ہوتا ۔۔۔جو میں نے دیکھا تھا ! پتہ نہیں کیوں اس ایک لفظ نے میری طرح کئی لوگوں کی زندگی میں درد کے رنگ بھر دئے ۔ نام نا لیں کوئی اس بے وفا محبت کا ۔نفرت سی ہونے لگی ہے مجھے اس کہ نام سے میری اس کیفیت کی ذمہ دارا محبت ہی تو ہے ۔کسی کو آبا د کرنا اس محبت نے سیکھا ہی نہیں بڑی عجیب شئے ہے یہ محبت آہ اے کاش اس کا مفہوم مجھے سمجھ میں آجائے ۔ میرے لئے تو یہ صرف عذاب ہے عذاب ۔۔۔ جس صاف اور پاک مخلص دل سے میں نے اسے بسایا تھا شاید ہی کوئی اس کی طاہرت کو سمجھتا ۔ نفرت سے محبت کا ذکر کرتے ہوئے میں سرخ آنکھوں سے ماضی کے صفحوں کو اپنی پلکوں سے پلٹ پلٹ کر محبت کوسارا لوم دے رہی تھی ،کہ مححبت ایک عذاب کے سوا کچھ نہیں ہے سب سے پہلے تو مجھے اسے ہی مار دینا ہے نا دل سے ، نااس کا اوجود رہے گا نا یہ احساس ۔۔ سارے رشتوں کو موت دینے کے لئے ہی شاید ملی تھی مجھے محبت
    یا اللہ تعالی کتنا دکھ دیتی یہ محبت تیری اس دنیا کے لوگوں نے تو اسے کھیل تماشا بنا دیا سینہ تان کر ہر بے وفا محبت کی دہایئ دیتا ہے اسے حاصل کرنا ضد بن جاتی ہے اور اس سے بے وفائی کرنا شوق ب گیا ہے ۔ محبت کی دہائی دینے والوں نے کیوں اس کی توہین کی آج محبت لبا س کی طرح بدلنے والا یہ انسان کتنوں سے محبت کرتا ہے ۔۔۔؟ دل روتے ہوئے آج تجھ سے یہی مانگتا ہے یا اللہ تعالی مجھے اس محبت کا مفہوم سمجھنا ہے کیا واقعی محبت نام جیسی شئے تیری اس دنیا میں ملتی ہے کیاچیز ہے یہ محبت مجھے بتا دے میرے رب تاکہ میں اس عذاب سے نجات پا سکوں ۔


    کئی دفعہ امی کی مسلسل آواز سن کر میں چونک گئی اس کیفیت میں امی کھانا کے لئے بلا رہی تھی کے بیٹا کھانا کھانے آجا ۔۔ اس کیفیت میں میرے لئے ایک لقمہ بھی زہر کی مانند تھا کیسے کھاتی ۔؟ بڑی مشکل سے یہ کہہ پائی آپ کھا لے مجھے ابھی بھوک نہیں میں بعد میں کھا لوں گی ۔۔ امی کچھ دیر بعد آککر کہتی ہے میں کچھ دیر آرام کرلوں تیرے حصے کا یہ رہا کھانا تو کھا لینا۔

    میں کچھ دیر کھانے کی طرف ضد سے گھورتی رہی ۔۔ اففف یہ کھانا پلیٹ کی طرف گھور گھور کر دیکھتے ہوئے ایک لقمہ نہیں کھانا مجھے۔ بھوک سے بھلے مر کیوں نا جاؤ بے تکی بک بک سے اب سارا غصہ کھانے کو دیکھتے ہوئے بولی جارہی تھی ، یہ زندگی بھی کوئی زندگی ہے ۔۔؟ کھائے ہئے سوئے بغیر مکمل ہی نہیں ہوتی ۔ پلیٹ کو پچھے کرتے ہوئے سنا تونے مجھے نہیں کھانا تجھے روز روز کھا کھا کر اُکتا گئی ہوں ، میں روز روز تجھے پکاؤ اور کھاؤ اففف پڑا رہ اے کھانا تو یہی میں چلی اور بھی کام ہےدنیا میں کھانے کے سوا۔ اتنے میں پھر سے امی کی آواز سنائی دیتی ہے بیٹا جلدی کھانا کھا کر دادی کو چائے بنا دینا رزق کو اتنی دیر نہیں روکتے جلدی کھا لے ۔۔
    اففف آج تو امی نے میرا پچھا ہی نہیں چھوڑنا کچھ دیر کھانا میری طرف اور میں اس کی طرف دیکھتے ہوئے غصہ سے لال پیلی بیٹھی رہی پھر خالی پیٹ سے آوازیں آنے لگی تو مجبوراً کھانے کی طرف بڑھی ایک لقمہ ہی بنائی تھی کہ باہر سے کسی فقیر کی درد بھری آواز سنائی دی کل سے بھوکا ہو ، ہے کوئی اس فقیر کو کھانا کھلانے والا ، ہے کوئی اس غریب کو دو نوالہ کھلانے والا ۔مجھے لگا جیسے واقعی اس کھانے کی ضرورت اس فقیر بابا کو شدت سے ہے میں نے فوراً پلیٹ اٹھا کے انھیں آواز دی اور کہا اے لو بابا آپ کھالو ۔ میں دیکھتے ہی رہ گئی کہ کس طرح اس غریب نے کھانے کی طرف جھنپٹ کر نوالے لینا شروع کیا کہ واقعی بہت بھوکا تھا وہ میرے دل سے ایک دم سے آہ نکلی اور میں نے کہا اور بھی غم ہے زمانے میں محبت کے سوا ۔اتنے میں ایک پڑوس کا بچہ بھاگتے ہوئے آیا اور مجھ سے لپٹ گیا آپا مجھے بچاؤ وہ کتا میرا پچھا کر رہا ہے ، یہ زخمی پرندہ ہے میں اسے وہاں سے اٹھا لیا ۔۔ تب سے یہ میرے مچھے ہے ، آپا اسے یہا ں سے بھگاؤ مجھے ڈر لگ رہا ہے اس سے ،اور میرے اس پرندہ کے لئے جلدی سے مرہم لاؤ۔ میں اسے حوصلہ دیتے ہوئے ارے ڈر مت میں ہونا چل اندر اسے مرہم لگاتے ہے اور اسے میں بچی ہوئی ہڈیاں دے دیتی ہو شاید بھوکا ہو ، میں نے ہڈیاں اسے دے کر پرندہ پر ہلدی لگا کر پٹی باندھ دی اور اس بچہ کو کہا آرام سے میرے کمرے میں بیٹھے ۔ بابا نے کھانا کھانے کی بعد مجھے دعایئں دی اور میرے سر پر ہاتھ رکھ کر کہا واقعی ہم جیسے غریبوں کہ لئے بھوک سے بڑا کوئی غم نہیں تیرا لقمہ میں نے دیکھا تونے اپنے حصے کا کھانا اس غریب کو کھلا دیا ایسی محبت تو سخی لوگوں کو ہی ملتی ہے پھر کیوں مایوس اور اداس ہے تو بیٹا ۔۔ ؟ بابا میں محبت کی سخی کیسے ہوسکتی ہو ۔۔ ؟ میرا تو دامن ہی خالی ہے اس محبت سے ، بابا محبت آج کی دنیا میں سب کو نصیب نہیں ہوتی بابا اسے حاصل کرنے کی امید بھی نہیں رہی میرے پاس اب ۔ بیٹا محبت کو نفس پرستی میں لیکر تو جو کہہ رہی ہے وہ خواہشات کی پیروی کرنے والی خود غرض محبت ہے جو صرف تجھے اپنی نفس کا آیئنہ دیکھا رہی ہے ۔ بیٹا تو اپنے ظاہر سے نکل کر اپنے باطن کی طرف دیکھ تو سچی محبت کا ساگر بسا ہے تجھ میں محبت وہ نہیں جو تو چاہتی ہے محبت وہ ہے جو تو سب سے کرتی ہے ۔اپنے لئے جئے تو کیا جئے جینا تو اسی کا نام ہے جو دوسروں کے لئے جی سکے اور جو انسان دوسروں کے لئے جیتا ہے اور اس کی ضرورتوں کو اور درد کو سمجھتا ہے اس کا دامن محبت سے خالی کیسے ہو سکتا ہے ۔۔؟ بس محبت کو نفس پرستی سے ہٹا کر دیکھ تو محبت تیرے ارد گرد ملے گی جو تیرے اپنے ہے اس محبت کےمستحق ہیں ۔ کسی ایک انسان کی وجہ سے اتنے ساروں کا حق کیا تو مار سکے گی ؟ بیٹا جب تو نفس پرستی سے نکل کر اس عظیم محبت کی طرف دیکھے گی جس کی ضرورت اس بچہ کو اس جانور کو مجھ فقیر کو ہے تیری محبت ہی تو تھی جو تونے گرے ہوئے زخمی پرندہ کو مرہم لگایا مجھے اپنا کھانا کھلایا اور اس بچہ کہ آنسو پونچھ کر گلے لگایا ۔ بیتا بہت کم لوگ ہوتے ہے جو ایسا جذبہ ء رکھتے ہیں ۔ تو اپنی محبت کو اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کا خیال رکھ کر درد سمجھ کر بانٹ دے یہی اصل محبت کا مفہوم ہے جو اپنی خوشی کے لئے نہیں دوسروں کی خوشی کے لئے کی جائے ایسی عظیم محبت گر انسان کرنے والی پگلی کو ہی محبت کا مفہوم نہیں پتہ حیریت ہے دعایئں دیتے ہوئے وہ بابا چلے گئے ۔

    اور جب میں نے نفس پرستی کہ سائے ہٹا کر میرے اپنوں کی طرد دیکھا جنھیں میری ضرورت ہیں ۔ تو محبت کی عظمت سمجھ آئی واقعی انسان گر دوسروں کی خوشی میں خوش رہے اور اپنے لئے نہیں دوسروں کے لئے جئے تو کیا ہی محبت اپنی مثال کہلاتی ہے ۔ بہت ضرورت ہے ایسی محبت کی انسانیت کو ہر مظلوم کو ہر غریب کو ہر زخمی لاچار کو ہر ضرورت مندوں کو اے اللہ تعالی تیری لاکھ لاکھ شکر گزار ہو تونے مجھے محبت کاصیحیح مفہوم بتا دیا ۔ دوسرے دن میں نے امی کے لئے کھانا پروسا اور ضد کرکے انھیں ایک ایک لقمہ اپنے ہاتھوں سے کھلایا تو میری محبت میری ماں کی مسکراہٹ بن گئی اور وہ مسکراتے ہوئے وہ کہنے لگی بیٹا ہمیں تیری اسی محبت کی ضرورت تھی ۔ہمیشہ یونہی سب کو لیکر سب کا سوچ کر چلنا محبت اسی کا نام ہے محبت بہت نایاب شئے ہے اسے انسان نفس پرستی میں ڈھونڈے تو بھٹک جاتا ہے ، اور خواہشوں کہ تناؤ میں دب کر ہمیشہ مایوس ہی رہتا ہے ۔ محبت وہ نہیں جو انسان خود کے لئے حاصل کرنے کی ضد کرے محبت وہ ہے جو انسان دوسروں کے لئے جئے ان سے کریں ان کی ہر چھوٹی چھوٹی اور بڑی سی بڑی خوشیوں کو سمیٹ کر انھیں دیں دے اے اللہ مجھے محبت کی صیحیح پہچان عطا کرنے کے لئے تیرا شکریہ اے میرے رب مجھے اتنا حوصلہ دے کے میں خود کو بھولا کر میرے اپنوں کی خوشی کے لئے اپنی زندگی کی ہر خوشی وار دوں اور نفس پرستی کو بھولا کر اس پاکیزہ محبت سے پوری وفا کروں ۔۔۔ آمین ۔۔

    رایئٹر ۔۔۔ ریشم

    subparbbbbbbbbbbbbbbbbbbbb

  7. #7
    Join Date
    May 2013
    Location
    pakistan
    Posts
    5,720
    Mentioned
    128 Post(s)
    Tagged
    7184 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    644255

    Default Re: Writer Club Competition September 2013

    closed...
    badakhuwar2 zps199b7191 - Writer Club Competition September 2013

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •