Results 1 to 2 of 2

Thread: دیا اس نے محبت کا جواب، آہستہ آہستہ

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default دیا اس نے محبت کا جواب، آہستہ آہستہ



    دیا اس نے محبت کا جواب، آہستہ آہستہ
    کھلے ہونٹوں کی ٹہنی پر گلاب، آہستہ آہستہ

    بڑھا مہتاب کی جانب سحاب، آہستہ آہستہ
    عدیم اس نے بھی ڈھلکایا نقاب، آہستہ آہستہ

    سبق پڑھنا نہیں صاحب سبق محسوس کرنا ہے
    سمجھ میں ائے گی دل کی کتاب، آہستہ آہستہ

    کہیں تیری طرف عجلت میں کچھ شامیں نہ رہ جائیں
    چُکا دینا محبت کا حساب ، آہستہ آہستہ

    وہ سارے لمس چاہت کے، ضرورت میں جو مانگے تھے
    وہ واپس بھی تو کرنے ہیں جناب، آہستہ آہستہ

    ابھی کچھ دن لگیں گے دید کی تکمیل ہونے میں
    بنے گا چاند پورا ماہتاب، آہستہ آہستہ

    وہی پھولوں کی لڑیاں، نیلگوں سی نیم تاریکی
    سنایا مجھ کو پھر اس نے وہ خواب، آہستہ آہستہ

    وہ چہرہ صحن کی دیوار کے پیچھے سے یوں ابھرا
    سحر کے وقت جیسے آفتاب، آہستہ آہستہ

    عدیم آہستہ آہستہ جوانی سب پر آتی ہے
    مگر جاتا نہیں عہدِ شباب، آہستہ آہستہ



  2. #2
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    12,045
    Mentioned
    303 Post(s)
    Tagged
    207 Thread(s)
    Thanked
    219
    Rep Power
    18

    Default

    Vaah :-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •