Results 1 to 3 of 3

Thread: وہ خط کے پرزے اُڑا رہا تھا

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default وہ خط کے پرزے اُڑا رہا تھا

    وہ خط کے پرزے اُڑا رہا تھا
    ہواؤں کا رخ دِکھا رہا تھا

    بتاؤں کیسے وہ بہتا دریا
    جب آ رہا تھا تو جا رہا تھا

    کہیں مرا ہی خیال ہو گا
    جو آنکھ سے گرتا جا رہا تھا

    کچھ اور بھی ہو گیا نمایاں
    میں اپنا لکھا مٹا رہا تھا

    وہ جسم جیسے چراغ کی لَو
    مگر دھواں دِل پہ چھا رہا تھا

    منڈیر سے جھک کے چاند کل بھی
    پڑوسیوں کو جگا رہا تھا

    اسی کا ایماں بدل گیا ہے
    کبھی جو میرا خدا رہا تھا

    وہ ایک دن ایک اجنبی کو
    مری کہانی سنا رہا تھا

    وہ عمر کم کر رہا تھا میری
    میں سال اپنا بڑھا رہا تھا

    خدا کی شاید رضا ہو اس میں
    تمہارا جو فیصلہ رہا تھا​


  2. #2
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    9,092
    Mentioned
    95 Post(s)
    Tagged
    8378 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    429513

    Default Re: وہ خط کے پرزے اُڑا رہا تھا

    umda


  3. #3
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    12,045
    Mentioned
    303 Post(s)
    Tagged
    207 Thread(s)
    Thanked
    219
    Rep Power
    18

    Default

    Bohat Khhoob :-)
    Khush Rahai'n :-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •