Results 1 to 3 of 3

Thread: غم کی تشہیر نہ کر، خود کو تماشا نہ بنا

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default غم کی تشہیر نہ کر، خود کو تماشا نہ بنا

    غم کی تشہیر نہ کر، خود کو تماشا نہ بنا
    دیکھ، اس دردِ محبت کو فسانہ نہ بنا

    بے ثمر ہی سہی، شادابیء جاں کا ہیں سبب
    خواہشیں مار کے یوں ذات کو صحرا نہ بنا

    وقت بدلے گا، بدلتا ہے، کہاں رکتا ہے؟
    حوصلے ہار کے یوں زیست کو ایذا نہ بنا

    توڑ سکتا ہوں جسے نہ ہی نبھا سکتا ہوں
    مجھ سے اس درجہ انوکھا بھی تو رشتہ نہ بنا

    موجِ پُر شور حوادث کا پتا دیتی ہے
    دیکھ ناداں! لبِ ساحل تُو گھروندا نہ بنا

    شوخ نظروں سے تکلم تو ہے عادت اُس کی
    ایسی عادت کو محبت کا حوالہ نہ بنا

    جس کے انجام پہ منزل ہے نہ منزل کا نشاں
    ایسی بے کار مسافت کو تمنا نہ بنا

    پھونک ڈالے نہ کہیں زین نشیمن تیرا
    خواہشِ لطفِ محبت کو تُو شعلہ نہ بنا



  2. #2
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    9,092
    Mentioned
    95 Post(s)
    Tagged
    8378 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    429513

    Default Re: غم کی تشہیر نہ کر، خود کو تماشا نہ بنا

    umda


  3. #3
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    12,045
    Mentioned
    303 Post(s)
    Tagged
    208 Thread(s)
    Thanked
    219
    Rep Power
    18

    Default

    Bohat Khhoob :-)
    Great Sharing .....
    Aabaad Rahai'n ;-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •