Results 1 to 3 of 3

Thread: دنیا سے شکایت ہے، نہ تجھ ہی سے خفا ہوں

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default دنیا سے شکایت ہے، نہ تجھ ہی سے خفا ہوں

    دنیا سے شکایت ہے، نہ تجھ ہی سے خفا ہوں
    قسمت کی عنایت ہے جو تنہا میں کھڑا ہوں

    پلکوں پہ جگہ پائی، نہ دامن میں بسا ہوں
    اک اشکِ ندامت تھا، سرِ خاک گرا ہوں

    دل پر تو تری یاد کے بادل کا ہے سایہ
    سر پر ہے کڑی دھوپ جسے جھیل رہا ہوں

    مشروط رہی تیری نگاہوں سے مری زیست
    اک پل میں جیا ہوں تو، میں اک پل میں مرا ہوں

    حالات کی دلدل میں کہاں اتنا مجھے ہوش
    محفل ہے تری یا کہ سرِ راہ پڑا ہوں

    لمحۂ مسرت کی طلب میری خطا تھی
    اب غم کے بیابان میں زنجیر بپا ہوں

    صیاد کر اغماض، ہوا محوِ فغاں جو
    ناواقفِ آدابِ قفس تھا، کہ نیا ہوں

    اک عمر سے ہے اپنی حقیقت کی مجھے کھوج
    اب کون بتائے میں بھلا کون ہوں، کیا ہوں

    منزل تو نہیں زین، یہ دنیا ہے سرائے
    میں ایک مسافر ہوں، گھڑی بھر کو رکا ہوں



  2. #2
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    9,092
    Mentioned
    95 Post(s)
    Tagged
    8378 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    429513

    Default Re: دنیا سے شکایت ہے، نہ تجھ ہی سے خفا ہوں

    umda


  3. #3
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    12,040
    Mentioned
    300 Post(s)
    Tagged
    207 Thread(s)
    Thanked
    219
    Rep Power
    18

    Default

    Bohat Khhoob :-)
    Great Sharing .....
    Aabaad Rahai'n ;-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •