Results 1 to 3 of 3

Thread: فریبِ جبہ و دستار ختم ہونے کو ہے

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default فریبِ جبہ و دستار ختم ہونے کو ہے

    فریبِ جبہ و دستار ختم ہونے کو ہے
    لگا ہواہے جو دربار، ختم ہونے کو ہے


    کہانی کار نے اپنے لیے لکھا ہے جسے
    کہانی میں وہی کِردار ختم ہونے کو ہے


    سمجھ رہے ہوکہ تم سے ہے گرمئ بازار
    سو اب یہ گرمئ بازار ختم ہونے کو ہے


    مسیحا، کیسا تجھے لگ رہا ہے، کچھ تو بتا
    کہ تیرے سامنے بیمار ختم ہونے کو ہے


    برہنہ ہوتی چلی جا رہی ہے یہ دُنیا
    کہیں گلی، کہیں دیوار ختم ہونے کو ہے



    یہ کیا ہوا تجھے تسلیم کرنے والوں میں
    سُنا ہے، جراتِ اظہار ختم ہونے کو ہے


    جو مجھ پہ بیت گئی وہ خبر نہیں مِلتی
    کہ اب تو سارا ہی اخبار ختم ہونے کو ہے


    اب اس کے بعد نئی زندگی کا ہے آغاز
    یہ زندگی تو مرے یار ختم ہونے کو ہے


    سلیم کثرتِ اشیا کی گرد میں آخر
    غرُورِ درہم و دینار ختم ہونے کو ہے


  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    super - فریبِ جبہ و دستار ختم ہونے کو ہے


  3. #3
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    12,040
    Mentioned
    300 Post(s)
    Tagged
    207 Thread(s)
    Thanked
    219
    Rep Power
    18

    Default

    Bohat Khoob :-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •