Results 1 to 3 of 3

Thread: Sambhlne Ke Liye Girna para Hai

  1. #1
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default Sambhlne Ke Liye Girna para Hai

    سنبھلنے کے لئے گرنا پڑا ہے
    ہمیں جینا بہت مہنگا پڑا ہے

    رقم تھیں اپنے چہرے پرخراشیں
    میں سمجھا آئینہ ٹوٹا پڑا ہے

    یہ کیسی روشنی تھی میرے اندر
    کہ مجھ پر دھوپ کا سایہ پڑا ہے

    مری آنکھوں میں تم کیا جھانکتے ہو
    تہوں میں آنسوؤں کے کیا پڑا ہے

    حواس و ہوش ہیں بیدار لیکن
    ضمیر انسان کا سویا پڑا ہے

    بدن شوقین کم پیراہنی کا
    در و دیوار پر پردہ پڑا ہے

    اٹھا تھا زندگی پر ہاتھ میرا
    گریباں پر خود اپنے جا پڑا ہے

    محبت آنسوؤں کے گھاٹ لے چل
    بہت دن سے یہ دل میلا پڑا ہے

    زمیں ناراض ہے کچھ ہم سے شاید
    پڑا ہے پاؤں جب الٹا پڑا ہے

    ڈبو سکتی نہیں دریا کی لہریں
    ابھی پانی میں اک تنکا پڑا ہے

    مظفر رونقوں میلوں کا رسیا
    ہجومِ درد میں تنہا پڑا ہے

    کہاں اتنی سزائیں تھیں بھلا اس زندگانی میں
    ہزاروں گھر ہوئے روشن جو میرا دل جلا محسنؔ


  2. #2
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    9,092
    Mentioned
    95 Post(s)
    Tagged
    8378 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    429513

    Default Re: سنبھلنے کے لئے گرنا پڑا ہے

    nice


  3. #3
    Join Date
    Feb 2009
    Location
    City Of Light
    Posts
    26,767
    Mentioned
    144 Post(s)
    Tagged
    10310 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474871

    Default Re: سنبھلنے کے لئے گرنا پڑا ہے

    buhat khub



    3297731y763i7owcz zps9ed156a3 - Sambhlne Ke Liye Girna para Hai

    MAY OUR COUNTRY PROGRESS IN EVERYWHERE AND IN EVERYTHING SO THAT THE WHOLE WORLD SHOULD HAVE PROUD ON US
    PAKISTAN ZINDABAD











Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •