Results 1 to 3 of 3

Thread: Hzrat Anas R.A

  1. #1
    Join Date
    Oct 2013
    Location
    Limits
    Posts
    5,976
    Mentioned
    670 Post(s)
    Tagged
    5699 Thread(s)
    Thanked
    544
    Rep Power
    1509699

    Default Hzrat Anas R.A



    حضرت انس رحمۃاللہ بن خضرايک صحابی تھے جو بدر کی لڑائی ميں شريک نہيں ہو سکے تھے ، ان کو اس چيز کا صدمہ تھا اوراس پر اپنے نفس کو ملامت کرتے تھے کہ اسلام کی پہلی عظيم الشان لڑائی ميں شريک نہ ہو سکا۔ ان کی تمنا تھی کہ کوئی دوسری لڑائی ہو تواپنی خوائش پوری کروں۔
    اتفاق سے احد کی لڑائی پيش آ گئ جس ميں يہ بڑی بہادری اور دليری سے شريک ہوۓ ۔ احد کی لڑائی ميں اول اول تو مسلمانوں کو فتح ہوئی آخر ميں ايک غلطی کی وجہ سے مسلمانوں کو شکست ہوئی ۔وہ غلطی يہ تھی کہ حضور اکرم صلی اللہ عليہ وسلم نے کچھ آدميوں کو ايک خاص جگہ مقرر فرمايا تھا کہ تم لوگ اس جگہ سے اسوقت تک نہ ہٹنا جب تک ميں نہ کہوں کيونکہ وہاں سے دشمن کے حملے کا خطرہ تھا۔

    جب مسلمانوں کو شروع ميں فتح ہوئی تو کافروں کو بھاگتا ديکھ کر يہ لوگ بھی اپنی جگہ سے يہ سمجھ کر ہٹ گئے کہ اب جنگ ختم ہو چکی ہے اس ليے بھاگتے ہوۓ کافروں کا پيچھا کيا جاۓ اور غنيمت کا مال حاصل کيا جاۓ ۔ اس جماعت کے سردار نے منع بھی کيا کہ حضور اکرم صلی اللہ عليہ وسلم کی ممانعت تھی کہ تم يہاں سے نہ ہٹنا۔ مگر وہ لوگ يہ سمجھ کر وہاں سے ہٹ گئ
    ے کہ حضور اکرم صلی اللہ عليہ وسلم کا ارشاد صرف لڑائی کے وقت تک تھا۔

    بھاگتے ہوۓ کافروں نے اس جگہ کو خالی ديکھ کر اس طرف سے آ کر حملہ کر ديا۔ مسلمان بےفکر تھے اور اس اچانک بے خبری کے حملے سے مغلوب ہو گئے اور دونوں طرف سے کافروں کے بيچ ميں آ گئے ۔ جس کی وجہ سے ادھر ادھر پريشان ہو کر بھاگے ۔

    حضرت انس رحمۃاللہ نے ديکھا کہ سامنے سے ايک دوسرے صحابی حضرت سعد رحمۃاللہ بن معاذ آ رہے ہيں ۔ ان سے کہا کہ کہاں جا رہے ہو ، خدا کی قسم جنت کی خوشبو احد کے پہاڑ سے آ رہی ہے ، يہ کہہ کر تلوار جو ہاتھ ميں تو تھی ہی ، کافروں کے ہجوم ميں گھس گئے اور تب تک لڑے جب تک شہيد نہيں ہو گئے ۔

    شہادت کے بعد ان کے بدن کو ديکھا گيا تو چھلنی ہو گياتھا ۔ تير اور تلوار کےاسی (80) سے زيادہ زخم ان کے بدن پر تھے۔ ان کی بہن نے انگليوں کے پوروں سے ان کو پہچانا۔

    جو لوگ اخلاص اور سچی طلب کے ساتھ االلہ کے کام ميں لگ جاتے ہيں ان کو دنيا ہی ميں جنت کا مزہ آنے لگتا ہے۔ جيسےحضرت انس رحمۃاللہ زندگی ہی ميں جنت کی خوشبو سونگھ رہے تھے۔ اگر اخلاص آدمی ميں ہو جائے تو دنيا ميں جنت کا مزہ آنے لگتا ہے ۔

    فضائل اعماال ۔ حکايات صحابہ ۔ صفحہ 29،30 ۔

    مولانا محمد زکريا کاندھلوی عليہ رحمتہ اللہ علیہ

    ===========================


    animals1 - Hzrat Anas R.A

  2. #2
    Join Date
    Apr 2012
    Location
    Behti Zameen
    Posts
    3,853
    Mentioned
    5 Post(s)
    Tagged
    4937 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    429506

    Default Re: Hzrat Anas R.A

    JazakAllah


  3. #3
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default Re: Hzrat Anas R.A

    کہاں اتنی سزائیں تھیں بھلا اس زندگانی میں
    ہزاروں گھر ہوئے روشن جو میرا دل جلا محسنؔ


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •