Results 1 to 3 of 3

Thread: ام المومنین کاحسن ادب

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default ام المومنین کاحسن ادب



    ام المومنین کاحسن ادب

    ام المومنین سیدہ صفیہ بنت حی بن اخطب بہت بڑے باپ کی بیٹی اور اونچے خاندان سے تعلق رکھتی تھیں۔ غزوہ خیبر کے دوران میں جب قلعہ قموص فتح ہواتو یہ بھی قیدیوں میں شامل تھیں۔پہلے یہ سیدنا دحیہ کلبی رضی اللہ عنہ کو عطا ہوئیں۔
    ایک شخص اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں حاضر ہوا، عرض کی کہ آپ نے بنو نضیر کے سردار کی بیٹی دحیہ کو دے دی ہے، حالانکہ کہ وہ آپ کے سوا کسی کے لائق نہیں ، چنانچہ دحیہ کلبی کو ایک اور لونڈی دے دی گئی۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے سیدہ کو آزاد کردیا اوران کی آزادی کو حق مہر قرار دے کر ان سے نکاح کرلیا۔
    اس سے پہلے سیدہ صفیہ رضی اللہ عنہا مسلمان ہو چکی تھیں۔
    اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے سیدہ صفیہ رضی اللہ عنہا کی آنکھ پر نیل پڑا ہوا دیکھا تو دریافت فرمایا : ‘‘ صفیہ! یہ نیل کانشان کیسا ؟’’ وہ کہنے لگیں : میں اپنے سابقہ شوہر ابن الحقیق کی گود مین سر رکھے سوئی ہوئی تھی کہ میں نے ایک خواب دیکھا کہ میری گود میں چاند اترا ہے۔ میں نے اپنے شوہر کو خواب سنایا تو اس نے میرے چہرے پر زور سے تھپڑ مارتے ہوئے کہا: تو یثرب کے حکمران سے شادی کرنا چاہتی ہے؟ یہ اسی تھپڑ کا نشان ہے۔
    قارئین کرام ! آپ نے یہودی سردار کی بد اخلاقی ملاحظہ کرلی کہ ایک خواب کی وجہ سے تھپر مار دیا ۔ مگر اللہ نے سیدہ صفیہ رضی اللہ عنہا کا خواب سچا کر دیا اور ان کا نکاح اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے ہو گیا۔ انہیں جہنم سے چھٹکارا مل گیا اور مومنوں کی ماں بننے کا اعزاز حاصل ہوانیز جنت میں بھی خاتم الانبیاء و المرسلین کی زوجہ محترمہ ہونے کا شرف مل گیا۔
    آیئے اب ذرا اپنے پیارے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے اخلاق کی ایک جھلک ملاحظہ کیجیے:
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم خیبر سے مدینہ واپس آتے ہوئے سیدہ صفیہ کے اونٹ پر ہی سوار تھے۔ آپ نے ان کی اس طرح عزت افزائی کی کہ جب سیدہ اونٹ پر سواری کا ارادہ کرتیں تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم اونٹ کے پاس جاتے ، اپنا گھٹنا آگے کر دیتے تا کہ صفیہ رضی اللہ عنہا اپنا قدم سید الانبیاء کے زانو پر رکھ کر سوار ہوں۔
    ادھر سیدہ صفیہ کا حسن ادب دیکھیے کہ وہ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا اس قدر احترام کرتی تھیں کہ اپنا پاؤں کبھی بھی اس مبارک گھٹنے پر نہ رکھتیں بلکہ اپنا گھٹنا اس پر رکھ کر سوار ہو جاتیں۔
    اب آیئے دیکھیے سیدہ صفیہ رضی اللہ عنہا اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے اخلاق کے بارے میں کیا گواہی دیتی ہیں،
    سیدہ فرماتی ہیں: میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے بہتر اخلاق والا انسان نہیں دیکھا ۔ میں خیبر میں رات کو انکی اونٹنی پر سوار تھی ۔ مجھے اونگھ آتی تو میرا سر کجاوے سے لگ جاتا ۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم مجھے ہاتھ سے جگاتے ہوئے فرماتے: ‘‘ اری ذرا سنبھل کر، اے حی کی بیٹی صفیہ ! ذرا دھیان سے۔’’
    ایک مرتبہ سیدہ عائشہ اور سیدہ حفصہ رضی اللہ عنھما نے یہ بات کہہ دی کہ ہم رسول اللہ صلی علیہ وسلم کے ہاں صفیہ رضی اللہ عنھا سے زیادہ قدرو منزلت والی ہیں کہ ہم رسول کی زوجات بھی ہیں اور آپ کی چچا زاد بھی ہیں۔ سدکہ صفیہ رضی اللہ عنہا نے یہ بات اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں عرض کر دی تو رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے اس طرح ان کی تالیف قلبی فرمائی کہ صفیہ تم نے ان سے اس طرح کیوں نہ کہا:
    ‘‘ تم مجھ سے کیسے بہتر ہو سکتی ہو جبکہ میرے شوہر محمد صلی اللہ علیہ وسلم میرے باپ ہارون علیہ السلام اور میرے چچا موسی علیہ السلام ہیں۔’’
    قارئین کرام ! یہ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا اعلی اخلاق تھا کہ آپ نے اپنی بیوی کو ان الفاظ کے ساتھ تسلی دی ۔ ان کو بتایا کہ ان کی اہمیت بھی کوئی کم نہیں ہے۔سیدہ صفیہ رضی اللہ عنہا آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے اخلاق سے بے حدمتاثر ہوئیں۔اسی چیز کا نتیجہ تھا کہ وہ آپ کے ساتھ بے حد محبت کرتی تھیں۔ وہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو اپنی جان سے بھی زیادہ عزیز اور محبوب تر سمجھتی تھیں۔اگر کبھی آپ بیمار پڑتے تو وہ آرزو کرتیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم صحت و عافیت میں رہیں اور اس کے بدلے یہ مرض مجھے لا حق ہو جائے۔

    اخلاق نبوی صلی اللہ علیہ وسلم کے سنہرے واقعات

  2. #2
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default

    Jazak Allah

  3. #3
    Join Date
    Sep 2013
    Location
    Karachi, Pakistan
    Posts
    7,416
    Mentioned
    504 Post(s)
    Tagged
    5438 Thread(s)
    Thanked
    359
    Rep Power
    874041

    Default

    Bohat hi khoobsurat sharing, jazak ALLAH khair.

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •