Results 1 to 4 of 4

Thread: کرامات سیدنا غوث پاک رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ

  1. #1
    Join Date
    Feb 2011
    Location
    Is Duniya me
    Posts
    1,576
    Mentioned
    15 Post(s)
    Tagged
    1284 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    21474844

    snow کرامات سیدنا غوث پاک رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ

    جنات کا بادشاہ

    ابو سعد عبداﷲ بن احمد کا بیان ہے ‘ ایک بار میری لڑکی فاطمہ گھر کی چھت پر سے یکایک غائب ہوگئی۔ میں نے پریشان ہوکر سرکار بغداد حضور سیدنا غوث پاک رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ کی خدمت بابرکت میں حاضر ہوکر فریاد کی۔ آپ رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ نے ارشاد فرمایا ’’کرخ جاکر وہاں کے ویرانے میں رات کے وقت ایک ٹیلے پر اپنے اردگرد حصار (یعنی دائرہ) باندھ کر بیٹھ جائو۔ وہاں میرا تصور باندھ لینا اور بسم اﷲ کہہ لینا۔ رات کے اندھیرے میں تمہارے اردگرد جنات کے لشکر گزریں گے‘ ان کی شکلیں عجیب و غریب ہوں گی‘ انہیں دیکھ کر ڈرنا نہیں‘ سحری کے وقت جنات کا بادشاہ تمہارے پاس حاضر ہوگا اور تم سے تمہاری حاجت دریافت کرے گا۔ اس سے کہنا ’’مجھے شیخ عبدالقادر جیلانی قدس سرہ الربانی نے بغداد سے بھیجا ہے تم میری لڑکی کو تلاش کرو‘‘ چنانچہ کرخ کے ویرانے میں جاکر میں نے حضور غوث اعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ کے بتائے ہوئے طریقے پر عمل کیا۔ رات کے سناٹے میں خوفناک جنات میرے حصار کے باہر گزرتے رہے۔ جنات کی شکلیں اس قدر ہیبت ناک تھیں کہ مجھ سے دیکھی نہ جاتی تھیں۔ سحری کے وقت جنات کا بادشاہ گھوڑے پر سوار آیا۔ اس کے اردگرد بھی جنات کا ہجوم تھا۔ حصار کے باہر ہی سے اس نے میری حاجت دریافت کی۔ میں نے بتایا کہ مجھے حضور غوث الاعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ نے تمہارے پاس بھیجا ہے۔ اتنا سننا تھا کہ ایک دم گھوڑے سے اتر آیا اور زمین پر بیٹھ گیا۔ دوسرے سارے جن بھی دائرے کے باہر بیٹھ گئیٍ میں نے اپنی لڑکی کی گمشدگی کا واقعہ سنایا۔ اس نے تمام جنات میں اعلان کیا کہ لڑکی کو کون لے گیا ہے؟ چند ہی لمحوں میں جنات نے ایک چینی جن کو پکڑ کر بطور مجرم حاضر کردیا۔ جنات کے بادشاہ نے اس سے پوچھا‘ قطب وقت حضرت غوث الاعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ کے شہر سے تم نے لڑکی کیوں اٹھائی؟ وہ کانپتے ہوئے بولا‘عالی جاہ! میں دیکھتے ہی اس پر عاشق ہوگیا تھا۔ بادشاہ نے اس چینی جن کی گردن اڑانے کا حکم صادر کیا اور میری پیاری بیٹی میرے سپرد کردی۔ میں نے جنات کے بادشاہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ ماشاء اﷲ عزوجل آپ سیدنا غوث الاعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ کے بے حد چاہنے والے ہیںٍ اس پر وہ بولا خدا کی قسم! جب حضورغوث الاعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ ہماری طرف نظر فرماتے ہیں تو تمام جنات تھر تھر کانپنے لگتے ہیںٍ جب اﷲ تبارک و تعالیٰ کسی قطب وقت کا تعین فرماتا ہے تو تمام جن و انس اس کے تابع کردیئے جاتے ہیں (بہجتہ الاسرار و معدن الانوار ص ۱۴۰ دارالکتب العلمیہ بیرون)


    عذاب قبر سے رہائی


    ایک غمگین نوجوان نے آکر بارگاہ غوثیت مآب علیہ الرحمہ التواب میں فریاد کی‘ یاسیدی! میں نے اپنے والد مرحوم کو رات خواب میں دیکھا۔ وہ کہہ رہے تھے ’’بیٹا! میں عذاب قبر میں مبتلا ہوں‘ تو سیدنا شیخ عبدالقادر جیلانی قدس سرہ الربانی کی بارگاہ میںحاضر ہوکر میرے لئے دعا کی درخواست کر‘‘ یہ سن کر سرکار بغداد حضور غوث اعظم رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ نے استفسار فرمایا‘ کیا تمہارے ابا جان میرے مدرسے سے کبھی گزرے ہیں؟ اس نے عرض کی‘ جی ہاں‘ بس آپ رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ خاموش ہوگئیٍ وہ نوجوان چلا گیا۔ دوسرے روز خوش خوش حاضر خدمت ہوا اور کہنے لگا ’’یامرشد! آج رات والد مرحوم سبز حلہ (یعنی سبز لباس) زیب تن کئے خواب میں تشریف لائے‘ وہ بے حد خوش تھے‘ کہہ رہے تھے ’’بیٹا! سیدنا شیخ عبدالقادر جیلانی قدس سرہ الربانی کی برکت سے مجھ سے عذاب دور کردیا گیا ہے اور یہ سبز حلہ بھی ملا ہے۔ میرے پیارے بیٹے! تو ان کی خدمت میں رہا کر‘‘ یہ سن کر آپ رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ نے فرمایا


    ’’میرے رب عزوجل نے مجھ سے وعدہ فرمایا ہے کہ جو مسلمان تیرے مدرسے سے بھی گزرے گا اس کے عذاب میں تخفیف (یعنی کمی) کی جائے گی (ایضا ۱۹۴)


    نزع میں‘ گور میں‘ میزاں پہ سر پل پہ کہیں
    نہ چھٹے ہاتھ سے دامان معلی تیرا


    المدد یا غوث اعظم


    حضرت بشر قرظی رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ کا بیان ہے کہ میں شکر سے لدے ہوئے 14 اونٹوں سمیت ایک تجارتی قافلے کے ساتھ تھا۔ ہم نے رات ایک خوفناک جنگل میں پڑائو کیا۔ شب کے ابتدائی حصے میں میرے چار لدے ہوئے اونٹ لاپتا ہوگئے جو تلاش بسیار کے باوجود نہ ملیٍ قافلہ بھی کوچ کرگیا۔ شتربان میرے ساتھ رک گیا۔ صبح کے وقت مجھے اچانک یاد آیا کہ میرے پیرومرشد سرکار بغداد حضور غوث پاک رحمتہ اﷲ تعالیٰ علیہ نے مجھ سے فرمایا تھا ’’جب بھی تو کسی مصیبت میں مبتلا ہوجائے تو مجھے پکار‘ انشاء اﷲ عزوجل وہ مصیبت جاتی رہے گی‘‘ چنانچہ میں نے یوں فریاد کی ’’یاشیخ عبدالقادر! میرے اونٹ گم ہوگئے ہیں‘‘ یکایک جانب مشرق ٹیلے پر مجھے سفید لباس میں ملبوس ایک بزرگ نظر آئے جو اشارے سے مجھے اپنی جانب بلا رہے تھے۔ میں اپنے شتربان کو لے کر جوں ہی وہاں پہنچا کہ یکایک وہ بزرگ نگاہوں سے اوجھل ہوگئیٍ ہم ادھر ادھر حیرت سے دیکھ ہی رہے تھے کہ اچانک وہ چاروں گمشدہ اونٹ ٹیلے کے نیچے بیٹھے ہوئے نظر آئے۔ پھر کیا تھا ہم نے فورا انہیں پکڑ لیا اور اپنے قافلے سے جاملے۔
    Last edited by shaikh_samee; 26-02-2014 at 01:07 PM.

  2. #2
    Join Date
    Sep 2010
    Location
    Mystic falls
    Age
    29
    Posts
    52,044
    Mentioned
    326 Post(s)
    Tagged
    10829 Thread(s)
    Thanked
    5
    Rep Power
    21474896

    Default

    Subhan ALLAH

  3. #3
    Cute PaRi's Avatar
    Cute PaRi is offline ♥Häppïnëss ïs Süċċëss♥
    Join Date
    Sep 2012
    Location
    ♥ündër möthër's fëët♥
    Posts
    9,560
    Mentioned
    132 Post(s)
    Tagged
    9855 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    1533321

    Default

    subhan ALLAH
    Last edited by Cute PaRi; 26-02-2014 at 10:03 PM.

  4. #4
    *jamshed*'s Avatar
    *jamshed* is offline کچھ یادیں ،کچھ باتیں
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    every heart
    Posts
    14,586
    Mentioned
    138 Post(s)
    Tagged
    8346 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474858

    Default

    Jazak Allah

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •