Results 1 to 3 of 3

Thread: شق صدر کا واقعہ

  1. #1
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default شق صدر کا واقعہ



    شق صدر کا واقعہ

    ابو یعلی ، ابو نعیم اور ابن عساکر، شداد بن اوس (رض) سے روایت کرتے ہیں کہ رسول خدا صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ ایک روز میں بنی

    لیث بن بکر میں اپنے رضاعی بھائیوں کے ساتھ وادی میں تھا کی یکایک میری نظر تین شخصوں پر بڑی ان میں سے ایک کے ہاتھ میں سونے کا

    طشت تھا جو برف سے بھرا ہوا تھا اور ایک روایت میں ہے کہ ایک کے ہاتھ میں چاندی کا آفتابہ تھا۔ اور دوسرے کے ہاتھ میں سبرزمرد کی لگن

    تھی جو برف سے لبریز تھی پھر مجھے اپنے ساتھیوں کےدرمیان سے پکڑا میرے سب ساتھی اپنے محلے کی جانب بھاگ گئے۔
    اسکے بعد ان تینوں میں سے ایک نے مجھے زمین پر نرمی سے لٹا یا اور ایک نے میرے سینہ کو جوڑوں کے پاس سے ناف تک چیرا اور مجھے

    کسی قسم کا درد وغیرہ محسوس نہ ہوا۔ اسکے بعد پیٹ کی رگوں کو نکالا اور اس برف سے اسے خوب غسل دیا، پھر اسے اپنی جگہ رکھ کر کھڑا

    ہو گیا۔ دوسرے شخص نے اس سے کہا اب تم ہٹ جاؤ اس کے بعد اس نے اپنے ہاتھ کو میرے جوف میں ڈال کر میرا دل نکالا۔ میں اسے دیکھ رہا

    ہوں پھر اسے چیرا اور اس سے سیا لوتھڑا نکالا۔ اہر ایک روایت میں سیاہ نکتہ کو نکالا اور اسے پھینک دیا اس نے کہا یہ شیطان کا حصہ ہے،

    پھر اسے اس چیز سےبھرا جو انکے پاس تھی۔
    ایک روایت میں اسے شکبہ سے تعبیر کیا گیا ہے ۔ اس کے بعد اپنے داہنے اور بائیں کچھ اشارہ کیا گویا وہ کسی چیز کو مانگ رہا ہے۔ تو انہوں

    نے ایک انگشتری نور کی دی جس کی نورانیت سے آنکھیں خیرہ ہوتی تھیں اس کے بعد میرے دل پر مہر لگائی۔ اور میرا دل نور سے لبریز ہو گیا

    اور وہ نور نبوت و حکمت کا تھا پھر دل کو اپنی جگہ رکھ دیا۔ تو میں اس مہر کی سردی و خوشی عرصہ دراز تک محسوس کرتا ہرا۔ ایک روایت میں

    ہے کہ کہ جب میرے احشاء کو پانی سے غسل دینےلگے تو دوسرے نے کہا کہ اولے کے پانی سے غسل دو۔ تو پانی اور اولے دونوں سے

    غسل دیا۔ پھر انہوں نے سینہ کے جوڑ سے ناف تک ہاتھ پھرا اور وہ شگاف مل گیا۔ اسکے بعد مجھے آہستگی سے اٹھایا اور مجھے اپنے سینے

    سے لگا لیا اور میری دونوں آنکھوں کے درمیان بوسہ دیا۔ اور کہنے لگے اے خدا کے حبیب کچھ نہ پوچھو اگر آپ جانتے کہ آپ کیلئے کیا کچھ

    خیرو خوبی ہے تو آپ کی آنکھیں روشن ہو جاتیں اور آپ خوش ہوتے
    اسکے بعد وہ مجھے وہیں چھوڑ کر آسمان کی جانب پر واز کر گئے ۔ اور میں انکو دیکھتا رہا ۔
    حلیہ شریف کے بیان میں حضرت انس (رض) کی حدیث میں ہے کہ ہم رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے سینہ و شکم پر اس جوڑ کے نقش و

    نشان کو سیدھی لکیر کی مانند دیکھا کرتے تھے۔
    کتاب: مدارج النبوت
    تصنیف: حضرت علامہ شیخ محمد عبد الحق محدث دہلوی رح
    صفحہ:37
    Last edited by sarfraz_qamar; 14-03-2014 at 11:51 PM.

  2. #2
    Hidden words's Avatar
    Hidden words is offline "-•(-• sтαү мιηε •-)•-"
    Join Date
    Nov 2011
    Location
    Kisi ki Ankhon Aur Dil Mein .......:P
    Posts
    56,915
    Mentioned
    322 Post(s)
    Tagged
    10949 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474899

    Default

    bohaat kamal ka waqeya,

  3. #3
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    Dream Land
    Age
    21
    Posts
    3,220
    Mentioned
    97 Post(s)
    Tagged
    2597 Thread(s)
    Thanked
    3
    Rep Power
    429507

    Default

    hmmm...../up

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •