اسلام آباد (کاروان ڈیسک) تحفظ پاکستان ایکٹ 2014ء کو رکن قومی اسمبلی جمشید دستی نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔

تحفظ پاکستان ایکٹ 2014ء کیخلاف ایم این اے جمشید دستی نے ایڈووکیٹ سعید خورشید کے ذریعے درخواست اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر کی ہے۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ یہ قانون آئین پاکستان کی شق 4، 9 اور 10 سے متصادم ہے جو بنیادی انسانی حقوق سے متعلق ہیں۔ جو کسی شخص کی نظر بندی، بغیر وارنٹ گرفتاری اور کسی الزام میں منصفانہ سماعت کا حق نہ دینے سے روکتی ہیں۔ جمشید دستی نے اس قانون کی شق تین کو بھی چیلنج کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ گریڈ بیس کا افسر کسی ممکنہ بدامنی کو روکنے کے لئے طاقت کے استعمال کی اجازت دے سکتا ہے۔

For more detail visit

Karwan News