یروشلم، غزہ ( کاروان ڈیسک) حماس کی جانب سے جنگ بندی کی پیشکش مسترد کئے جانے اور اسرائیل پر مبینہ حملوں کے بعد صہیونی افواج نے ایک بار پھر غزہ میں فضائی بمباری کا آغاز کردیا ہے۔ اسرائیل کے وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے حماس کے خلاف بھرپور فوجی کارروائی شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے ہمارے لئے بھرپور جوابی کارروائی کے سوا کوئی راستہ نہیں چھوڑا۔ حماس نے لڑائی جاری رکھنے کا راستہ اپنایا اور اب انہیں اس فیصلے کی قیمت چکانی پڑے گی۔نیتن یاہو نے کہا کہ یہ معاملہ سفارتی بنیادوں پر زیادہ بہتر طریقے سے حل کیا جا سکتا تھا اور ہم نے آج مصر کی جانب سے جنگ بندی کی پیشکش منظور کر کے ایسا کرنے کی کوشش بھی کی لیکن حماس نے ہمارے لئے بھرپور انداز میں جارحانہ حملے کرنے کے سوا کوئی راستہ نہ چھوڑا۔ اس سے قبل اسرائیلی کابینہ نے مصر کی جانب سے پیش کی گئی جنگ بندی کی تجویز کو تسلیم کرلیا تھا لیکن حماس نے مصری تجویز مسترد کردی تھی۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اسرائیلی کابینہ نے منگل کو ایک اجلاس میں اسرائیلی فوج اور حماس کے درمیان غزہ کی پٹی پر جاری جنگ کے خاتمے کے حوالے سے دی گئی مصر کی تجویز کو قبول کرلیا تھا۔
for more detail visit
Karwan News