پانی کے بارے میں 5حیران کن حقائق جو آپ کو معلوم نہیں زندگی کو رواں دواں رکھنے کیلئے پانی بنیادی ترین اہمیت کا حامل ہے اور اگرچہ دنیا کی زیادہ تر آبادی کو یہ نعمت باآسانی دستیاب ہے لیکن اس کے باوجود پانی کی افادیت کا احساس نہ ہونے کی وجہ سے اس کا استتعمال مناسب طور پر نہیں کیا جاتا، ہمیں روانہ کتنا پانی پینا چاہیے؟ اس کا کوئی طے شدہ جواب نہیں ہے کیونکہ ہر شخص کی ضرورت مختلف ہے لیکن کم از کم 30 ملی لیٹر فی کلو گرام وزن کے حساب سے پانی کا روزانہ استعمال ایک مناسب مقدار سمجھی جاتی ہے۔

پانی کئی طرح سے جسم کی ضروریات پوری کرتا ہے، یہ پیاس بجھاتا ہے، جسم کا درجہ حرارت کنٹرول کرتا ہے، گردوں سے فاضل مادوں کو خارج کرتا ہے، میوکس کی جھیلوں کو نم رکھتا ہے، انہضام میں مدد دیتا ہے، جوڑوں کو رواں رکھتا ہے، خون کے گاڑھے پن کو کنٹرول کرتا ہے اور جلد کو نرم رکھتا ہے۔

پانی کی وجہ سے فاضل مادوں کا جسم سے باآسانی اخراج ممکن ہوتا ہے، انفیکشن اور الرجی سے بچاؤ ممکن ہوتا ہے اور پانی جلد کو نم کرکھ کر جھریوں سے بچاتا ہے۔ ہم پانی کو براہ راست استعمال کرنے کے علاوہ مختلف مشروبات کی صورت میں استعمال کرسکتے ہیں مثلاً لسی، سکنجبیں، فروٹ جوس اور دودھ وغیرہ کی صورت میں۔
کھیرا، تربوز اور ٹماٹر جیسے پھل اور سبزیاں بھی پانی کی بھاری مقدار کی وجہ سے جسم کو نم اور تروتازہ رکھتے ہیں۔ پانی ہمیں وزن کنٹرول کرنے میں بھی مدد دے سکتا ہے۔ اگر کھانا کھانے سے پہلے پانی پی لیں تو بھوک قدرے کم ہوجاتی ہے جس کی وجہ سے ضرورت سے زیادہ کھانے کی طلب نہیں ہوتی۔