Results 1 to 3 of 3

Thread: Kaoun hun Main...!! Kaya Meri Pehchaan Hai ...?

  1. #1
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    ممہ کہ دل میں
    Posts
    40,298
    Mentioned
    32 Post(s)
    Tagged
    4710 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474884

    Default Kaoun hun Main...!! Kaya Meri Pehchaan Hai ...?

    میں جب اپنے ارد گرد غور کرتی ہوں تو گھورتی ہوئی نظروں کا سامنا کرنا بڑا دشوار ہوتا ہے ۔ میں سہم کر ایک قدم بڑھاتی ہوں تو میرے کانوں میں آوازیں آتی ہے ۔ مجھ سے پوچھا جاتا ہے کیا نام ہے میرا ۔۔؟
    اجنبی ہنستے ہوئے چہروں کی آوازوں پر دھیان نا دے کر بھی گر نیچی نظریں کیئں اپنی منزل کی طرف بڑھوں تو پچھا کرتی ہوئی پرچھائی سے ڈر جاتی ہوں ۔ پھر ایک آواز میرے اطراف سے بےغیرتوں کی غیرت کو روند کر نکالی جاتی ہے ۔۔
    کیا عنوان ہے میرا ۔۔؟ مجھ سے پوچھا جاتا ہے کیا یومِ پیدائش ہے میرا ۔۔؟ مجھ سے پوچھا جاتا ہے کیا میری پہچان ہے ۔ ؟میراحزن اورمیری گھبراہت کو بڑھاتی ہوئی خاموشی اور میرا ڈر مجھے اس چہرے کی یاد دلاتا ہے جو میرا امن ہے جس نے مجھے اپنی پہچان دی تھی وہ ہے میری ماں ۔۔
    ایک مسکان میری پیدائش کے دن فخر کا سیراب بنی تھی ۔ اس کی آنکھیں جو ستارہ بن کر میرے ہر درب کو روشن کرتی رہی ۔ اس کی گود میں چاند سے پریاں اتر کر میرے لئے لوری گاتی تھی وہ باتیں اس کی جو میرے لئے حوصلہ بنکر میرے ساتھ چلتی تھی ۔
    ہر موڑ پر قدم سے قدم ملا کر میرے ساتھ چلتی رہی ، وہ بھروسہ جو میرے پیدائشی دن مجھے دیکھ کر اسے ہوا تھا ۔ اور وہی بھروسہ جو میری طاقت اور میری ماں کا گماں بنا رہا ۔وہ دن تھا میری پیدائش کا ۔۔ پوچھنا چاہ رہے تھے سب میری پہچان کا دن اس دن تو آسماں سے بارش ہورہی تھی اور اسی روز علم اور عدل کا خواب میری امی نے میرے چہرےپر پڑھ لیا تھا ۔ میں اس کی گود میں سو رہی تھی اور خواب وہ دیکھ رہی تھی ،میرے معصوم چہرے کو دیکھ کر مجھے اپنے کلیجے سے لگا کر میری ماں نے ہوا کے جھونکے کو دیکھ کر مجھےچھپا لیا ۔ اپنے آنچل میں چھپا کر مجھ پر پیار اور حنان کا ساگر برسا رہی تھی ۔اس کے آنچل میں ٹھنڈی شبنمی ریشمی دف نے مجھے میرے آنے والے کل کا عنوان دیا تھا کے میرا کل وہ اسی پیار سے سجایئں گی اور مجھے اپنے پ پختہ ارادوں سے ایک کامیاب انسان بنائی گی ۔ اور مستقبل میں مجھے میری ایک اعلی پہچان دے گی ۔میری معصومیت کھیل اور شرارت اور میری طفولیٹ کو پروان چڑھاتے ہوئے میرے بالغ ہونے تک کے سفر میں میری زندگی کو وہ ایک مقصد دے گی، اور اس مقصد میں میری حفاظت کے ساتھ مجھے آس پاس کی ارد گرد مراقب نظروں سے بچنے کا درس بھی دے گی ۔ جب بھی کوئی پوچھے گا مجھ سے کیا میرا نام ہے ۔۔؟ کیا میرا عنوان ہے تواور کیا میری پہچان ہے تو میرا دل ہر ماں کے دل کی آرزو سنائے گا۔ ہر ایک لڑکی کی بے بسی کا حال بتائے گا کےلڑکی میرا جنم ہے ۔اور میری معروفیت اور شرافت کو سرے عام جھلسنے کا حق کسی کو نہیں ۔ آج کے دور میں گر کوئی بہن اور کوئی بیٹی کی عزت نہیں کرسکتا تو سمجھ لیجئے اس کی کوئی بہن بیٹی نہیں ہیں ۔کیسے کوئی ایک ماں کے سجائے ہوئے خوابوں کو روندتا ہے ۔ایک پل میں کیسے کوئی بھول جاتا ہے کے یہ حادثہ میری بہن کے ساتھ بھی ہوسکتا ہے، یہ پہچان میرے گھر بھی دستخ دے سکتی ہے ۔ بچپن سے لیکر جوانی تک کے روشن مستقبل کو جھلنے والے بے ظمیر لوگ آج بھی کھلے عام شکار کی تلاش میں ایسے پھرتے اور گھومتے ہیں ۔ جیسے ان کا کوئی مذہب نہیں جو آج ہماری پاکستان کی ہر بیٹی کے ساتھ ہو رہا ہے ۔ اسی دشواریوں سے بہت سی بیٹیاں گزرتی ہے۔جن کا گھر سے نکلنا بھی حرام ہوگیا ہے ۔ ضرورت پر گر وہ نلے بھی تو کچھ بچ جاتی ہے کچھ کچل دی جاتی ہے ۔۔ کیا ایک ماں یہی خواب دیکھتی ہے ایک بیٹی کے یومِ پیدائش پر ۔۔۔؟

    آج سر عام پوچھا جاتا ہے مجھ سے کون ہوں میں ۔۔؟کیا میرا نام ہے ۔۔۔؟ کیاں میرا عنوان ہے میری پہچان کو سننے کے لئے بےتاب لوگوں کو میں آج بتاؤں گی کے واقعی جاننا چاہتے ہوں کون ہوں میں۔۔۔؟ تو آج میں بتاتی ہو میرا نام میرا عنوان بہت دفعہ دہرایا گیا کیا آپ نے نہیں سنا تھا ،زرا غور سے خبریں سنا کریں اور نہیں سنے تو ٹی وی اون کرکے دوبارہ سن لیں ۔ کل کے احداث میں سنائی گئی تھی میں آج کے احداث میں سنائی جاؤں گی میں اور پھر کل کے اخبار میں بھی نئے احداث کے ساتھ لوٹ آؤنگی میں ، میری زندگی کا پورا قصہ ء سنایا جائے گا ۔میرے ہر راز کو بڑی بے رحمی سے اچھالا جائے گا ۔کیسے اور کتنے درندوں نے میری آشنا پر حملہ کیا تھا اور پھے کیسے بڑی وحشت سے مجھے مار کر راستےمیں ہی پھینک دیا گیا تھا ،اور پھران فرار ہونے والوں کا نقاب تو کوئی نا اتار سکا لیکن میری عصمت کا بیان ہزاروں لاکھوں کڑوڑں بلکہ پورے عالم میں بیان کیا جائے گا جنھیں جاننا ہے اور سننا ہے میری پہچان اور عنوان کو کے کون ہوں میں وہ آج رات 9 بجے مشاہدہ کرنے اپنا ٹی وی ضرور اون کریں ، یا اپنا آج کا اخبار ضرور پڑھ لیں پورے اخبار ِعالم میں میری خبر کہی نا کہیں ضرور چھپے گی ہر چینل پر انحاء عالم کی خبروں میں ، تب خود ہی جان جاؤں کے کون ہوں میں ۔۔۔؟

    رائٹر ۔۔۔۔ ریشم

  2. #2
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    k, s, a
    Posts
    14,631
    Mentioned
    215 Post(s)
    Tagged
    10286 Thread(s)
    Thanked
    84
    Rep Power
    1503265

    Default

    Umda threer /up

  3. #3
    Join Date
    Sep 2013
    Location
    Mideast
    Posts
    5,905
    Mentioned
    213 Post(s)
    Tagged
    5074 Thread(s)
    Thanked
    176
    Rep Power
    10

    Default

    Excellent

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •