Results 1 to 4 of 4

Thread: سب قتل ہوکے تیرے مقابل سے آئے ہیں

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default سب قتل ہوکے تیرے مقابل سے آئے ہیں

    سب قتل ہوکے تیرے مقابل سے آئے ہیں
    ہم لوگ سرخرو ہیں کہ منزل سے آئے ہیں
    شمعِ نظر، خیال کے انجم، جگر کے داغ
    جتنے چراغ ہیں، تری محفل سے آئے ہیں
    اٹھ کر تو آگئے ہیں تیری بزم سے مگر
    کچھ دل ہی جانتا ہے کہ کس دل سے آئے ہیں
    ہر اک قدم اجل تھا، ہر اک گام زندگی
    ہم گھوم پھر کے کوچۂ قاتل سے آئے ہیں
    بادِ خزاں کا شکر کرو، فیض جس کے ہاتھ
    نامے کسی بہار شمائل سے آئے ہیں
    (فیض احمد فیض)

    1 - سب قتل ہوکے تیرے مقابل سے آئے ہیں

  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    zabardast


  3. #3
    Join Date
    Sep 2013
    Location
    Mideast
    Posts
    5,905
    Mentioned
    210 Post(s)
    Tagged
    5074 Thread(s)
    Thanked
    176
    Rep Power
    10

    Default

    Great

  4. #4
    Join Date
    Feb 2010
    Location
    dubai
    Posts
    7,667
    Mentioned
    566 Post(s)
    Tagged
    8128 Thread(s)
    Thanked
    1273
    Rep Power
    214764

    Default

    v nice sharing keep it upp....
    be happy alwayz....
    thnx 4 sharing
    mera siggy mujhe nazarnahi aa raha...

    30abdx0 - سب قتل ہوکے تیرے مقابل سے آئے ہیں

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •