Results 1 to 9 of 9

Thread: SOS Competition May 2015

  1. #1
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    126,283
    Mentioned
    887 Post(s)
    Tagged
    9274 Thread(s)
    Thanked
    1574
    Rep Power
    21474973

    cute SOS Competition May 2015

    salam1 - SOS Competition May 2015

    Is Maah App Ko

    "
    Samina Raja"

    Ki Shairi Share Karni Hai...

    Yaha Se APp Ink Barey Main Parh Saktey Hain...

    Samina Raja - Wikipedia, the free encyclopedia

    or Yeh Inki website...

    http://saminaraja.yolasite.com


    orangeabli - SOS Competition May 2015

    Rules:

    Ek member ek hi baar share karay ga
    Same aur edit sharing accept nahi hogi
    Last date
    28/5/2015 hai
    Winner Admins decide karen gy.
    Main un sheesha garahon se pochta hon
    K toota dil bhi jorra hai kisi ney



  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,930
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    25
    Rep Power
    21474856

    Default

    uljha hai 145 - SOS Competition May 2015


  3. #3
    °Têhrêêr°'s Avatar
    °Têhrêêr° is offline .·★ ƒяɨ€ɲď ๏ƒ ɲąţµя€ ★.·´
    Join Date
    May 2014
    Location
    ●♥forest♥●
    Age
    25
    Posts
    3,439
    Mentioned
    15 Post(s)
    Tagged
    1546 Thread(s)
    Thanked
    2
    Rep Power
    8

    Default

    walaikum slam
    hairani mein 298 - SOS Competition May 2015
    I aM sTrOnG bEaCaUsE I DePeNdS oN AllAh

  4. #4
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    k, s, a
    Posts
    14,630
    Mentioned
    215 Post(s)
    Tagged
    10287 Thread(s)
    Thanked
    90
    Rep Power
    1503266

    Default





    GHAZAL
    Yarabb! labb-e-khamosh ko aisa kamal day
    Jo guftgoo kay saray hi lehjay ujal day

    Soaz-e-duroon-e-qalb ko itna jamal day
    Jo mujh ko aik shamma kay qalib mein dhal day

    Woh khwab marhamat ho ke aankhein chmak uthein
    Woh sarr khushi ata ho ke dunya misal day

    Woh harf likh sakoon ke banay harf-e-purr asar
    Ik kaam karr sakoon too mujhay garr majal day

    Main apni sha'eyri kay li'ay aa'eina banoon
    Rahat nahin,too mujh ko baqa'ay malal day

    Teray hi aastan pe jhuki ho jabeen-e-dill
    Apnay hi darr kay wastay khoo'ay sawal day



    Last edited by attiaahsan; 03-05-2015 at 10:10 PM.

  5. #5
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    126,283
    Mentioned
    887 Post(s)
    Tagged
    9274 Thread(s)
    Thanked
    1574
    Rep Power
    21474973

    Default





    پوری طرح یاد نہیں کہ وہ کون سا موسم تھا












    جب پہلی بار اس نے مجھے دیکھا اور مجھ پر مہربان ہوئی ۔





    بس اتنا یاد ہے، میں بہت تنہا تھی ۔



    انسانوں سے بھری ہوئی دنیا میں





    رشتوں ناتوں سے بھرے ہوئے گھر میں، میں تنہا تھی ۔



    اور میں سوال کرتی تھی ۔ بہت سوال، اپنے آپ سے ۔







    اور میں زندگی کو عجب شے خیال کرتی تھی ۔



    ایک بے چین تلاش تھی میرے اندر، معلوم نہیں کس کی ۔








    ایک کھَولتا ہوا عشق تھا، پتہ نہیں کس سے ۔



    ایک جاں لیوا فراق تھا، خبر نہیں کس کا ۔



    اس عالم ِ وحشت میں آدمی یا تارک الدنیا ہو جاتا ہے









    یا شاعر ہو جاتا ہے ۔



    سو میرے نصیب کہ خواب کے یا بیداری کے

    کسی الوہی لمحے میں


    اس نے مجھے اپنے لیے چن لیا ۔





    شاعری نے






    اس نے میرے تپکتے ہوئے دل پر




    اپنا ٹھنڈک سے بھرا شبنمیں ہاتھ رکھا ۔

    اس نے مجھے بتایا کہ ہر جاگتا ہوا ذہن، سوال کرتا ہے ۔


    ہر دھڑکتا ہوا دل، محبت کرتا ہے ۔



    اس نے مجھے بتایا کہ ہر آدمی کی ایک تلاش ہوتی ہے ۔










    ایک عشق ہوتا ہے ۔ ایک فراق ہوتا ہے ۔





    ہر آدمی کا ایک شہرِسبا ہوتا ہے ۔





    پھر اس نے میرا ہاتھ پکڑا












    اور مجھے میرے

    شہرِسبا کی طرف لے گئی ۔
















    ثمینہ راجہ


    Main un sheesha garahon se pochta hon
    K toota dil bhi jorra hai kisi ney



  6. #6
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    pakistan
    Posts
    3,290
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    2597 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    541178

    Default


    gBW9fxt - SOS Competition May 2015

  7. #7
    Join Date
    Mar 2011
    Location
    UAE
    Posts
    10,357
    Mentioned
    373 Post(s)
    Tagged
    945 Thread(s)
    Thanked
    1083
    Rep Power
    429515

    Default

    Tanha, sar-e-anjuman khari thi




    Tanha, sar-e-anjuman khari thiMain, apnay wisaal say bari thi
    Haan phool thi, aur hawa ki zad parPhir meri har aik pankhari thi
    Ik umr talak safar kya thaManzil pay pohanch kay gir pari thi
    Talib koi meri naffi ka thaAur shart yeh mot say kari thi
    Woh aik hawa-e-taaza mein thaMain, khwab-e-qadeem mein gari thi
    Woh, khud ko Khuda samajh raha thaMain, apnay huzoor mein khari thi

  8. #8
    Join Date
    Nov 2008
    Location
    اسلامی جمہوریہ پاکستان
    Posts
    3,530
    Mentioned
    308 Post(s)
    Tagged
    8185 Thread(s)
    Thanked
    130
    Rep Power
    1073759

    glass Photobucket

    2b71b9 - SOS Competition May 2015
    2v1u8md - SOS Competition May 2015

  9. #9
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Islamabad, UK
    Posts
    88,569
    Mentioned
    1073 Post(s)
    Tagged
    9710 Thread(s)
    Thanked
    664
    Rep Power
    21474935

    Default


    کوئی شخص تھا ۔


    اُس نے ایک عمرجس تنگ و تاریک حجرے میں گزار دی

    اُس کے پچھواڑے کھلنے والی کھڑکی کبھی نہیں کھولی ۔

    حالانکہ وہ کھڑکی ایک خوب صورت باغ میں کھلتی تھی ۔



    کیونکہ اس شخص، اس بے نیاز، اس درویش کے اپنے باطن میں

    ایک باغ کِھلا تھا ۔ کیونکہ وہ شخص ' میر' تھا ۔ شاعر۔


    شاعر بھی سب آدمیوں جیسا ایک آدمی ہی ہوتا ہے ۔

    لیکن شاید اُس کا خمیر تھوڑا سا مختلف ہوتا ہے ۔

    شاید اس کے اجزائے ترکیبی میں ایک عنصر کم ہوتا ہے

    یا ایک عنصر زیادہ ۔

    کیونکہ اس کے اندر کبھی کبھی ایک لہر سی اٹھتی ہے



    ایک ہوا سی چلتی ہے، ایک باغ سا کھلتا ہے ۔


    راتوں کو جب ساری دنیا گہری نیند میں ہوتی ہے



    وہ چونک کر جاگ اٹھتا ہے ۔


    اسے زمین اور آسمان کے درمیان پھیلی ہوئی خاموشی میں


    ایک دھمک سنائی دینے لگتی ہے ۔

    جیسے دل کے ساتھ ساتھ پوری کائنات دھڑک رہی ہو ۔

    اور اس کے اندر ایک عجیب سرسراہٹ ہونے لگتی ہے ۔

    پھیلنے لگتی ہے، آہستہ آہستہ، نس نس میں، پور پور میں ۔

    پھر آسمان کے پوشیدہ منّور گوشوں سے



    شاعری اس کے دل پر اترتی ہے ۔


    اور اس کے باطن میں ایک باغ کھل اٹھتا ہے ۔

    خوابوں کا، یادوں کا، زخموں کا، شاعری کا باغ ۔



    جیسے میں رہتی ہوں

    خوابوں کے ساتھ، یادوں کے ساتھ، زخموں کے ساتھ


    شاعری کے ساتھ، باغ ِ شب میں ۔


    ہر شاعر کی طرح، مغموم، سرشار۔

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •