نمک کو ھاتھ میں لے کر سِتمگر سوچتے کیا ھو

ہزاروں زخم ہیں دِل پر جہاں چاہو چِھڑک ڈالو