Results 1 to 3 of 3

Thread: ہے دعا یاد مگر حرفِ دعا یاد نہیں

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default ہے دعا یاد مگر حرفِ دعا یاد نہیں

    ہے دعا یاد مگر حرفِ دعا یاد نہیں
    میرے نغمات کو اندازِ نوا یاد نہیں
    ہم نے جن کے لئے راہوں میں بچھایا تھا لہو
    ہم سے کہتے ہیں وہی عہدِ وفا یاد نہیں
    زندگی جبر مسلسل کی طرح کاٹی ہے
    جانے کس جرم کی پائی ہے سزا یاد نہیں
    میں نے پلکوں پہ درِ یار سے دستک دی ہے
    میں وہ سائل ہوں جسے کوئی صدا یاد نہیں
    کیسے بھر آئیں سرِ شام کسی کی آنکھیں
    کسے تھرائی چراغوں کی ضیا یاد نہیں
    صرف دھندلائے ستاروں کی چمک دیکھی ہے
    کب ہوا، کون ہوا، مجھ سے خفا، یاد نہیں
    آؤ اک سجدہ کریں عالم مدہوشی میں
    لوگ کہتے ہیں کہ ساغر کو خدا یاد نہیں
    (ساغر صدیقی)

    1 - ہے دعا یاد مگر حرفِ دعا یاد نہیں

  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    Very nice..!


  3. #3
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    USA
    Posts
    3,162
    Mentioned
    324 Post(s)
    Tagged
    1751 Thread(s)
    Thanked
    554
    Rep Power
    8

    Default

    log kehtey hain ke saghar ko khuda yaad nahin..

    Waah Boht achi. keep posting more!..

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •