Results 1 to 3 of 3

Thread: جن پہ تکیہ تھا وہی پتے ہوا دینے لگے

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default جن پہ تکیہ تھا وہی پتے ہوا دینے لگے

    ہجر کی شب نالۂ دل وہ صدا دینے لگے
    سننے والے رات کٹنے کی دعا دینے لگے
    کس نظر سے آپ نے دیکھا دلِ مجروح کو
    زخم جو کچھ بھر چلے تھے پھر ہوا دینے لگے
    جُز زمینِ کوئے جاناں کچھ نہیں پیشِ نگاہ
    جس کا دروازہ نظر آیا صدا دینے لگے
    باغباں نے آگ دی جب آشیانے کو مرے
    جن پہ تکیہ تھا وہی پتے ہوا دینے لگے
    مٹھیوں میں خاک لے کر دوست آئے وقتِ دفن
    زندگی بھر کی محبت کا صلہ دینے لگے
    آئینہ ہوجائے میرا عشق ان کے حسن کا
    کیا مزا ہو درد اگر خود ہی دوا دینے لگے
    (ثاقب لکھنوی)

    1 - جن پہ تکیہ تھا وہی پتے ہوا دینے لگے

  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    zabrdast...............


  3. #3
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    USA
    Posts
    3,162
    Mentioned
    327 Post(s)
    Tagged
    1751 Thread(s)
    Thanked
    554
    Rep Power
    8

    Default

    Boht hi achi!

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •