Results 1 to 4 of 4

Thread: روٹھا تو شہر خواب کو غارت بھی کرگیا

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default روٹھا تو شہر خواب کو غارت بھی کرگیا

    روٹھا تو شہرِ خواب کو غارت بھی کرگیا پھر مسکرا کے تازہ شرارت بھی کرگیا شاید اسے عزیز تھیں آنکھیں میری بہت وہ میرے نام اپنی بصارت بھی کرگیا منہ زور آندھیوں کی ہتھیلی پہ اک چراغ پیدا میرے لہو میں حرارت بھی کرگیا بوسیدہ بادبان کا ٹکڑا ہوا کے ساتھ طوفاں میں کشتیوں کی سفارش بھی کرگیا دل کا نگر اجاڑنے والا ہنر شناس تعمیر حوصلوں کی عمارت بھی کرگیا سب اہلِ شہر جس پہ اٹھاتے تھے انگلیاں وہ شہر بھر کو وجہ زیارت بھی کرگیا محسن یہ دل کہ اس سے بچھڑتا نہ تھا کبھی آج اس کو بھولنے کی جسارت بھی کرگیا (محسن نقوی)

    1 - روٹھا تو شہر خواب کو غارت بھی کرگیا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    USA
    Posts
    3,162
    Mentioned
    327 Post(s)
    Tagged
    1751 Thread(s)
    Thanked
    554
    Rep Power
    8

    Default

    waah.

    Mohsin yeh dil ke us sey bicharhta na tha kabhi
    Aaj usko bhoolney ki jasarat bhi kar gaya..

    Beautiful..

    keep posting more..

  3. #3
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    USA
    Posts
    3,162
    Mentioned
    327 Post(s)
    Tagged
    1751 Thread(s)
    Thanked
    554
    Rep Power
    8

    Default

    Dil ka nagar ujarhney wala.. yeh do lines roman main koi likhega?

    Second line ka first word samajh nahin aa raha mujhey..
    Ta'mir ? hoslon ki Imarat bhi kar gaya ?

    Thanks.

  4. #4
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    zabrdast...............


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •