Results 1 to 2 of 2

Thread: میں پا سکا نہ کبھی اس خلش سے چھٹکارا

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default میں پا سکا نہ کبھی اس خلش سے چھٹکارا

    میں پا سکا نہ کبھی اس خلش سے چھٹکارا
    وہ مجھ سے جیت بھی سکتا تھا جانے کیوں ہارا
    برس کے کھُل گئے آنسو، نتھر گئی ہے فضا
    چمک رہا ہے سرِ شام درد کا تارا
    کسی کی آنکھ سے ٹپکا تھا، اک امانت ہے
    مری ہتھیلی پہ رکھا ہوا یہ انگارا
    جو پر سمیٹے تو اک شاخ بھی نہیں پائی
    کُھلے تھے پر تو مرا آسمان تھا سارا
    وہ سانپ چھوڑ دے ڈسنا یہ میں بھی کہتا ہوں
    مگر نہ چھوڑیں گے لوگ اُس کو گر نہ پھنکارا
    (جاوید اختر)

    1 - میں پا سکا نہ کبھی اس خلش سے چھٹکارا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2013
    Location
    USA
    Posts
    3,162
    Mentioned
    327 Post(s)
    Tagged
    1751 Thread(s)
    Thanked
    554
    Rep Power
    8

    Default

    Nice!

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •