چلو ایک دوسرے کی خواہشوں کی دھوپ میں
جلتے ہوئے آنگن کی ویرانی میں
آنکھیں بند کر لیں اور برس جائیں
یہاں تک ٹوٹ کر برسیں کہ پانی
وصل کی مٹی میں خوشبو گوندھ لے
اور پھر سروں سے گذر جائے
زمیں سے آسماں تک ایک ہی منظر سنور جائے
ہمارے راستوں پر آسماں اپنی گواہی بھیج دے
خوشبو بکھر جائے
زمیں پاؤں کو چھو لے
چاندنی دل میں اتر جائے


•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘ ••◘•◘•◘•◘••◘•◘•◘•◘•◘ •◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•◘•• ◘•◘•◘•◘•◘•◘•



chalo aik doosre ki khwahishoN ki dhoop meiN
jalte hoye aaNgan ki weerani meiN
aaNkheN band ker laiN aur baras jayeN
yahaN tak toott ker barseN k paani
wasl ki mitti meiN khushboo goondh le
aur phir saroN se guzar jaaye
zameeN se aasmaaN tak aik he maNzer saNwer jaaye
humaare raastoN per aasmaan apni gawaagi bhej de
khushboo bikher jaaye
zameeN paaoN ko chhu le
chaandni dil meiN utar jaaye

<>